உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ٹھمک ٹھمک کر ناچی گوری ناگوری، ہریانوی ڈانسر کا ایک اور ویڈیو ہوا وائرل

     مشہور ہریانوی ڈانسر گوری ناگوری۔

    مشہور ہریانوی ڈانسر گوری ناگوری۔

    دیکھتے ہی دیکھتے گوری کے اس گانے کو 7 ملین سے بھی زیادہ مرتبہ دیکھا جاچکا ہے۔ 36 ہزار سے بھی زیادہ شائقین نے گوری ناگوری کے اس ویڈیو پر لائیک کا بٹن دباتے ہوئے اپنی پسندیدگی کا اظہار کیا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      ہریانوی انڈسٹری کا ایک اور مشہور چہرہ گوری ناگوری ان دنوں ٹی وی انڈسٹری کے سب سے مشہور شو بگ باس 16 میں انٹری مار چکا ہے۔ گوری ناگوری بگ باس کے اسٹیج پر اپنی اداوں کا جادو بکھیر کر شائقین کے دلوں پر راج کرتی نظر آرہی ہیں۔ جس طرح سپنا چودھری نے اپنے دیسی انداز سے شائقین کو اپنے اشاروں پر نچایا تھا، ٹھیک اسی طرح گوری ناگوری بھی بگ باس کے گھر میں اپنی موجودگی سے محفل جماتی ہوئی نظر آرہی ہیں۔ ان دنوں ہر طرف صرف گوری ناگوری کے ہی چرچے ہیں۔

      سوشل میڈیا پر لگاتار گوری ناگوری کے پرانے گانے تیزی سے وائرل ہورہے ہیں۔ وائرل ہو رہے گانوں کی فہرست میں ایک گانا چھم چھم بھی ہے۔ اس گانے میں گوری ناگوری جم کر ٹھمکے لگاتی نظر آرہی ہیں۔ جس جس نے گوری ناگوری کی یہ ویڈیو دیکھی ہے وہ کمنٹ باکس میں گوری کی تعریف کرتا نظر آرہا ہے۔

      وائرل ہورہا گوری ناگوری کا یہ گانا آج بھی شائقین کی زباں پر رٹا ہوا نظر آرہا ہے۔ گوری ناگوری کا یہ گانا ٹی ایم زیڈ ہریانوی نامی یوٹیوب چینل پر ریلیز کیا گیا تھا۔ اس گانے کو ریلیز ہوئے ایک سال کا وقت گزر چکا ہے، لیکن پھر بھی اس گانے نے خوب دھوم مچائی ہوئی ہے۔ گوری ناگوری کے گانے کو روچیکا نے اپنی سریلی آواز میں گایا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      اس دن اپنے ساجن کے لئے تیار ہوں گی انجلی اروڑہ، سوشل میڈیا پر پوسٹ شیئر کرکے دی جانکاری

      یہ بھی پڑھیں:
      فریڈم فائٹربن کرOTTپرسارہ علی خان مچائیں گی دھمال،ورون دھون نے انوکھے انداز میں کیا اعلان

      دیکھتے ہی دیکھتے گوری کے اس گانے کو 7 ملین سے بھی زیادہ مرتبہ دیکھا جاچکا ہے۔ 36 ہزار سے بھی زیادہ شائقین نے گوری ناگوری کے اس ویڈیو پر لائیک کا بٹن دباتے ہوئے اپنی پسندیدگی کا اظہار کیا ہے۔ کالے لباس میں ٹھمکے لگاتی گوری ناگوری پر یہ رنگ خوب کھل رہا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: