உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مشہور اداکارہ کو گھونسا مار کرحملہ آور نے کیا زخمی کرگیا، لڑکھڑائی اداکارہ تو موبائل چھین کر ہوا فرار

    مشہور اداکارہ کو گھونسا مار کرحملہ آور نے کیا زخمی کرگیا، لڑکھڑائی اداکارہ تو موبائل چھین کر ہوا فرار

    مشہور اداکارہ کو گھونسا مار کرحملہ آور نے کیا زخمی کرگیا، لڑکھڑائی اداکارہ تو موبائل چھین کر ہوا فرار

    حیدرآباد کی ٹانی بنجارا ہلس میں کے بی آر پارٹ کے پاس ایک نامعلوم شخص نے شالو (Shalu Chaurasia) پر حملہ کیا ہے اور اس درمیان نہ صرف انہیں چوٹ آئی بلکہ ان کا موبائل بھی چھین لیا ہے ۔

    • Share this:
      حیدرآباد : ٹالی ووڈ اداکارہ شالو چورسیا کے ساتھ ایک بڑا حادثہ پیش آگیا ہے ۔ حیدرآباد کی ٹانی بنجارا ہلس میں کے بی آر پارٹ کے پاس ایک نامعلوم شخص نے شالو پر حملہ کیا ہے اور اس درمیان نہ صرف انہیں چوٹ آئی بلکہ ان کا موبائل بھی چھین لیا ہے ۔ نامعلوم شخص نے اتوار کو رات تقریبا ساڑھے آٹھ بجے پارک میں چہل قدمی کر رہی اداکارہ پر اچانک سے حملہ کردیا اور ان کا فون چھین کر فرار ہوگیا ۔

      حادثہ کے بعد ‘O Pilla Nee Valla’ مشہور اداکارہ نے پولیس میں شکایت درج کرائی ۔ انہوں نے پولیس کو دئے بیان میں بتایا کہ ایک شخص نے پہلے ان سے ان کے پیسے اور قیمتی سامان سونپنے کیلئے کہا تھا ۔ جب انہوں نے انکار کیا تو اچانک سے اسنیچر نے ان کے چہرے پر گھونسا مارا اور پتھر سے حملہ کرنے کی بھی کوشش کی ۔ اس کے بعد وہ لڑکھڑا گئیں تو حملہ آور نے ان کا موبائل چھین لیا اور فرار ہوگیا ۔ اس واقعہ میں اداکارہ کے سر اور آنکھ کے پاس چوٹیں آئیں اور انہیں ایک پرائیویٹ اسپتال لے جایا گیا ۔

      اداکارہ کی شکایت پر بنجارا ہلس پولیس نے معاملہ درج کرکے جانچ شروع کردی ہے ۔ پولیس حملہ آور کی شناخت کرنے کیلئے علاقہ میں لگے سی سی ٹی وی کیمروں کی فوٹیج کھنگال رہی ہے ۔ پولیس کی ٹیم فون کے آئی ایم ای آئی یا ٹاور لوکیشن کے ذریعہ حملہ آور کا ٹھکانہ پتہ کرنے کی کوشش میں بھی لگی ہے ، لیکن اب بھی تک کسی سراغ کے بارے میں کوئی جانکاری نہیں ملی ہے ۔

      خیال رہے کہ شہر کے اس بڑے کے بی آر پارک میں صبح یا شام کی سیر کیلئے مشہور ہستیوں ، کاروباریوں اور سیاسی لیڈروں کا آنا جانا لگا رہتا ہے ۔ پارک کے آس پاس پہلے بھی چین اسنیچنگ کی واردات ہوچکی ہیں ۔

      2014 میں ایک شخص نے اربندو فارما کے ایگزیکٹیو کے نتیا نند ریڈی پر اے کے 47 کے ساتھ گولیاں چلائی تھیں ۔ اس درمیان وہ صبح کی سیر کے بعد اپنی کار میں بیٹھے تھے ۔ حالانکہ اس حادثہ میں ریڈی کی جان بال بال بچ گئی تھی ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: