உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Shilpa Shirodkar:آخر کیا وجہ تھی کہ90-80کی دہائی کی مشہور اداکارہ نے راتوں رات فلموں سے کرلیا تھا کنارہ!

    شلپا شیروڈکر۔ Shipa Shirodkar

    شلپا شیروڈکر۔ Shipa Shirodkar

    Shilpa Shirodkar Movies: شلپا شروڈکر کو اصل پہچان فلم 'کشن کنہیا' کی ریلیز کے بعد ملی۔ فلم میں شلپا کے ساتھ انیل کپور(Anil Kapoor) اور مادھوری ڈکشٹ(Madhuri Dixit) بھی مرکزی کردار میں نظر آئے تھے۔

    • Share this:
      Shilpa Shirodkar Movies: آج بات ہو رہی ہے ایک ایسی اداکارہ کی جس کا 80-90 کی دہائی میں بہت چرچا ہوا کرتا تھا۔ ہم بات کر رہے ہیں اداکارہ شلپا شروڈکر(Shilpa Shirodkar) کی، جو اپنی فلموں کے لیے موضوع بحث رہتی تھیں، لیکن اچانک فلم انڈسٹری کو خیرباد کہنے سے بھی انہوں نے کافی سرخیاں بٹوری تھیں۔ شلپا شروڈکر 20 نومبر 1969 کو پیدا ہوئیں۔ شلپا کے فلمی کیرئیر کی بات کریں تو اداکارہ نے بالی ووڈ میں اپنے کیریئر کا آغاز مشہور فلمساز رمیش سپی کی 1989 میں ریلیز ہونے والی فلم 'بھرشٹاچار' سے کیا تھا۔

      شلپا نے اپنے مختصر فلمی کیریئر میں کئی مشہور فلموں میں کام کیا، جن میں گوپی کشن، بے وفا صنم، کشن کنہیا، رگھوویر اور آنکھیں وغیرہ شامل ہیں۔ خبر کے مطابق شلپا شروڈکر کو اصل پہچان فلم 'کشن کنہیا' کی ریلیز کے بعد ملی۔ فلم میں شلپا کے ساتھ انیل کپور(Anil Kapoor) اور مادھوری ڈکشٹ(Madhuri Dixit) بھی مرکزی کردار میں نظر آئے تھے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      VIDEO:عالیہ بھٹ بیبی بمپ کے ساتھ لوٹی ممبئی،رنبیرکپورکودیکھتے لگائی دوڑ، دی’جادو کی جھپی‘

      اب ہم جانتے ہیں کہ اچانک ایسا کیا ہوا کہ شلپا شروڈکر نے اپنے کیریئر کے عروج پر ہونے کے باوجود فلموں کو خیرباد کہہ دیا۔ دراصل، سال 2000 میں شلپا نے برطانیہ میں رہنے والے ایک بڑے بینکر اپریش رنجیت سے شادی کرلی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:

      Sonakshi Sinhaنے کہا’میری شادی کی اتنی فکر تو میرے والدین کو بھی نہیں ہے جتنی لوگوں کو ہے‘

      یہ بھی پڑھیں:
      Malaika Arora Arjun Kapoor:جب12سال چھوٹے ارجن کپورکوڈیٹ کرنے پرملائیکہ کوسننے پڑے تھے طعنے

      کہتے ہیں کہ شادی کے بعد بھی شلپا کو کام کے کئی آفر تھے لیکن انہوں نے فیملی کو وقت دینا بہتر سمجھا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق شلپا آج مکمل طور پر صحت مند ہیں اور ہندوستان سے دور دبئی میں اپنے خاندان کے ساتھ رہتی ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: