ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

عرفان خان کی بیوی نے جاری کیا بیان- ان سے ایک ہی ناراضگی ہے، انہوں نے بگاڑ دیا

اداکار عرفان خان (Irrfan Khan Family Statement) کی اہلیہ ستاپا سکدر (Wife Sutapa Sikdar) اور ان کے دونوں بیٹے بابل اور آیان (Son Babil Ayan) نے مداحوں کے لئے ایک بیان جاری کیا ہے۔

  • Share this:
عرفان خان کی بیوی نے جاری کیا بیان- ان سے ایک ہی ناراضگی ہے، انہوں نے بگاڑ دیا
عرفان خان کی فیملی۔ فائل فوٹو

ممبئی: اداکار عرفان خان (Irrfan Khan) نے29 اپریل کو اس دنیا کو الوداع کہہ دیا۔ 53 سالہ عرفان خان کافی وقت سےکینسر سےجدوجہد کر رہے تھے۔ ان کےجانےکے بعد ان کی فیملی پرجیسے مصیبت کا پہاڑ ٹوٹ گیا۔ مداح سوشل میڈیا پر عرفان خان کو خراج عقیدت پیش کر رہے ہیں۔ اس درمیان اداکار کی بیوی ستاپا، بیٹے بابل اور آیان نے اسٹیٹمنٹ (بیان) جاری کیا ہے۔ اس میں فیملی نے مداحوں کی حمایت کے ساتھ ساتھ عرفان خان س منسلک کئی یادوں کو تازہ کیا۔


اس اسٹیٹمنٹ میں لکھا ہے- ہم یہ کیسےکہہ سکتے ہیں کہ یہ فیملی اسٹیٹمنٹ ہے، جب پوری دنیا اسے ذاتی نقصان کی طرح دیکھ رہی ہے؟ میں کیسے تنہا محسوس کروں جب کروڑوں لوگ ہمارے ساتھ دکھ کا اظہار کر رہے ہیں؟ میں سبھی کو یہ بتا دینا چاہتی ہوں کہ یہ نقصان نہیں ہے، یہ حاصل کرنا ہے، یہ حاصل کرنا ہے ان سبھی چیزوں کا، جو انہوں نے ہمیں سکھائی ہیں اور اب ان سب باتوں پر عمل کرنا اور اس کے ذریعہ آگے بڑھنا سیکھیں گے۔ میں ان چیزوں کی بھرپائی کرنا چاہتی ہوں، جن کے بارے میں لوگوں کو ابھی تک پتہ نہیں ہیں۔




عرفان خان کی اہلیہ نے اپنے بیان میں مزید لکھا ہے۔ ’یہ ہمارے لئے غیر یقینی ہے، لیکن میں عرفان کے الفاظ میں کہوں گی، یہ حیرت انگیز ہے’ چاہے وہ ہو یا نہیں، وہ یہی سب پسند کرتے تھے۔ انہیں کبھی ایک جہتی حقیقت سے پیارنہیں تھا۔ انہوں نے مزید لکھا- ’میری ان سے صرف یہی شکایت ہےکہ انہوں نے مجھے زندگی بھر کے لئے بگاڑ دیا۔ وہ ہرچیز میں ایک الگ ہی تال دیکھتے تھے۔ یہاں تک کہ افراتفری اور انتشار میں بھی۔ اس لئے میں نے اس تال پرگانا اور ڈانس کرنا سیکھ لیا ہے’۔ انہوں نےلکھا- ’ڈاکٹروں کی رپورٹ کسی اسکرپٹ جیسی تھی، جنہیں میں ٹھیک کرنا چاہتی تھی، اس لئے میں نے اس میں کوئی بھی ڈیلیٹ مس نہیں کی۔

عرفان خان 53 سال کی عمر میں دنیا سے رخصت ہوگئے۔ لیکن ان کے کارنامے ہمیشہ زندہ رہیں گے۔
عرفان خان 53 سال کی عمر میں دنیا سے رخصت ہوگئے۔ لیکن ان کے کارنامے ہمیشہ زندہ رہیں گے۔


اس بیان میں عرفان خان کا علاج کرنے والے کئی ڈاکٹروں کا نام لیتے ہوئے لکھا گیا ہے۔ ’یہ سفرکتنا حیرت انگیز، خوبصورت اور درد سے بھرا رہا ہے، اسے الفاظ میں بیان کرنا ممکن نہیں ہے۔ ہمارے 35 سالوں کے ساتھ کے علاوہ۔ میں ان ڈھائی سالوں کو کسی وقفےکی طرح دیکھتی ہوں، جس کی اپنی شروعات ہے، متوسط اور شباب پر ہونا ہے، جس کے نائک عرفان ہیں۔ ہماری شادی نہیں بلکہ ملاپ تھا۔ میں اپنے چھوٹی سی فیملی کو ایک کشتی میں دیکھیتی ہوں، جسے میرے دونوں بیٹے بابل اور آیان آگے بڑھا رہے ہیں۔ انہیں عرفان راستہ دکھا رہے ہیں... وہاں نہیں، یہان سے موڑو، لیکن زندگی کوئی فلم نہیں ہے، اس لئے میں امید کرتی ہوں کہ میرے بیٹے اپنے والد کے احکامات کو دھیان میں رکھتے ہوئے اس بنیاد کشی کو آگے بڑھائیں گے’۔

عرفان خان کی اہلیہ سپاتا مزید لکھتی ہیں، ’میں نے اپنے بیٹوں سے ان کے والد کے ذریعہ دی گئی نصیحت کو بیان کرنے کے لئےکہا تو بابل نے بتایا ’غیر یقینی صورتحال کے رقص کے سامنے پہلےجھکنا سیکھیں اور کائنات پر بھروسہ کریں’۔ وہیں آیان نے بتایا- ’اپنے دماغ پر کنٹرول رکھنا سیکھو، اسےخود پرحاوی مت ہونے دو’۔ انہوں نے اخیر میں لکھا- ’آنسو بہیں گے، جب ہم رات کی رانی کو لگائیں گے،  یہ ان کا پسندیدہ تھا۔ اس جگہ پر جہاں پر انہیں زندگی کے سفر کے بعد رکھا گیا ہے۔ وقت لگے گا، لیکن یہ کھلےگا اور اس کی خوشبو اس سبھی کو چھوئے گی، جنہیں میں مداح نہیں ایک فیملی کہوں گی’۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: May 01, 2020 07:44 PM IST