உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کرینہ کپور خان اس بڑے مسائل پر کریں گی اپنے دونوں بیٹوں سے بات، تیمور اور جہانگیر کو دینا چاہتی ہیں یہ سیکھ

    کرینہ کپور خان نے ایک انٹرویو میں کہا کہ وہ کسی بھی کمیونٹی میں امتیازی سلوک پسند نہیں کرتیں۔ وہ سب کو برابر سمجھنے کے نظریے پر یقین رکھتی ہیں اور چاہتی ہیں کہ ان کے بیٹے بھی اس پر یقین کریں۔

    کرینہ کپور خان نے ایک انٹرویو میں کہا کہ وہ کسی بھی کمیونٹی میں امتیازی سلوک پسند نہیں کرتیں۔ وہ سب کو برابر سمجھنے کے نظریے پر یقین رکھتی ہیں اور چاہتی ہیں کہ ان کے بیٹے بھی اس پر یقین کریں۔

    کرینہ کپور خان نے ایک انٹرویو میں کہا کہ وہ کسی بھی کمیونٹی میں امتیازی سلوک پسند نہیں کرتیں۔ وہ سب کو برابر سمجھنے کے نظریے پر یقین رکھتی ہیں اور چاہتی ہیں کہ ان کے بیٹے بھی اس پر یقین کریں۔

    • Share this:
      ممبئی۔ بالی ووڈ اداکارہ کرینہ کپور خان نے اس سال فروری میں اپنے دوسرے بیٹے جہانگیر علی خان کو جنم دیا۔ دو ماہ قبل انہوں نے اپنے بیٹے کا نام کا انکشاف کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ان کے دوسرے بیٹے کا پورا نام جہانگیر علی خان ہے۔ اس کے بعد انہیں ٹرول کیا گیا۔ یہ تیمور علی خان کے نام پر بھی ہوا تھا۔ اب کرینہ کپور نے ایک انٹرویو میں انکشاف کیا ہے کہ وہ اپنے دونوں بیٹوں کو سکھائیں گی کہ کسی کے ساتھ امتیازی سلوک نہ کریں۔ وہ سب کو ایک نقطہ نظر سے دیکھیں۔ انہوں نے یہ بیان LGBTQ کمیونٹی کے بارے میں بات کرتے ہوئے دیا۔

      کرینہ کپور خان نے فلم فیئر کو دیے گئے ایک انٹرویو میں کہا کہ وہ کسی بھی کمیونٹی میں امتیازی سلوک پسند نہیں کرتیں۔ وہ سب کو برابر سمجھنے کے نظریے پر یقین رکھتی ہیں اور چاہتی ہیں کہ ان کے بیٹے بھی اس پر یقین کریں۔ انہوں نے کہا، "مجھے انہیں (LGBTQ کمیونٹی) کو 'مختلف' کہنا بھی پسند نہیں ہے۔ ہم ایک ہیں۔ یہی پورا خیال ہے۔ لوگ کیوں کہہ رہے ہیں کہ 'یہ مختلف ہے؟ نہیں! ہم سب کا اپنا دل ہے ، پھیپھڑے اور جگر سب ایک جیسے ہیں تو ہم ان کو کسی اور طریقے سے کیوں دیکھ رہے ہیں؟ میں یہی سوچتی ہوں اور اسی طرح میں اپنے بیٹوں کو بھی اسی طرح سوچ رکھنے کی صلاح دوں گی۔ "



      کرینہ کپور خان نے آگے کہا، میں آپ لوگوں (LGBTQ Community) سے پیار کرتی ہوں۔ مجھے یہ حقیقت پسند ہے کہ تم ہمیشہ مجھ سے بہت پیار کرتے ہو۔ میں مکمل شفافیت کے حق میں ہوں اور سیف اور میں دونوں ایسے لوگ ہیں جو شفاف طریقے سے رہتے ہیں اور LGBTQ کمیونٹی سے پوری دنیا میں ہمارے دوست ہیں، ہم کھلے دل اور کھلے خیالات والے ہیں اور اسی طرح میں اپنے بچوں کو ایسے ہی پالنے اور سیکھ دینے کیلئے تیار ہوں۔ ہم ان سے ایل جی بی ٹی کیو کمینوٹی سے جڑے مسائل پر بات کرتے ہیں اور مجھے لگتا ہے کہ ایسا ہی ہونا چاہئے"۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: