اپنا ضلع منتخب کریں۔

    دیپیکا پڈوکون سے پہلے ’لیڈی سنگھم‘ کے لیے کیٹرینہ کیف نے اس طرح دیا تھا آڈیشن، سامنے آیا ویڈیو

    دیپیکا پڈوکون سے پہلے ’لیدی سنگھم‘ کے لیے کیٹرینہ کیف نے اس طرح دیا تھا آڈیشن، سامنے آیا ویڈیو

    دیپیکا پڈوکون سے پہلے ’لیدی سنگھم‘ کے لیے کیٹرینہ کیف نے اس طرح دیا تھا آڈیشن، سامنے آیا ویڈیو

    اس فلم کی لیڈی سنگھم بنیں گی۔ اس درمیان کیٹرینہ کیف کا ایک ویڈیو سامنے آیا ہے، جس میں وہ لیڈی کاپ کے رول کے لیے روہت شیٹی کو آڈیشن دیتی نظر آرہی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      روہت شیٹی کی ہٹ فرنچائزی سنگھم کی اگلی فلم سنگھم اگین کا اعلان کردیا گیا ہے۔ اس فلم میں اجئے دیوگن سنگھم کے رول میں نظر آئیں گے۔ وہیں، فلم سرکس کے سانگ لانچ کے دوران روہت شیٹی نے بتایا کہ سنگھم اگیت میں دیپیکا پڈوکون ہیروئین ہوں گی۔ وہ اس فلم کی لیڈی سنگھم بنیں گی۔ اس درمیان کیٹرینہ کیف کا ایک ویڈیو سامنے آیا ہے، جس میں وہ لیڈی کاپ کے رول کے لیے روہت شیٹی کو آڈیشن دیتی نظر آرہی ہیں۔

      کیٹرینہ کیف نے لیڈی کاپ کے لیے دیا آڈیشن
      دراصل، پچھلے سال روہت شیٹی اور کیٹرینہ کیف فلم سوریہ ونشی کے پروموشن کے لیے رنویر سنگھ کے گیم شو ’دا بگ پکچر‘ میں پہنچے تھے۔ تبھی کیٹرینہ نے مسی مذاق میں یہ آڈیشن دیا تھا۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کیٹرینہ روہت شیٹی سے کہتی ہیں، ’مجھے لگتا ہے کہ سوریہ ونشی کے بعد آپ کو ایک فیمیل کاپ کے ساتھ فلم کرنی چاہیے۔‘

      یہ بھی پڑھیں:
      سامنتھا رُتھ پربھو کی بیماری کے بعد گوگل پر چھایا تھا مایوسائٹس کا ٹاپک

      یہ بھی پڑھیں:
      ’ہیرو کو فلم میں اپنی گرل فرینڈ چاہیے‘، جب ملکہ شیراوت نے کھولا بالی ووڈ کا کالا سچ

      سامنے آیا آڈیشن کا ویڈیو
      اس کے بعد سوریہ ونشی کی اداکارہ کیٹرینہ کیف پولیس آفیسر کی کیپ پہن کر اسٹیج پر چلتی ہیں اور سنگھم کا ڈائیلاگ کہتی ہیں، ’میرے ضمیر میں دم ہے کیونکہ میری ضرورتیں کم ہے‘۔ کیٹرینہ کی ایسی زبردست ایکٹنگ دیکھ کر رنویر سنگھ اور روہت شیٹی تالی بجانے لگتے ہیں۔ معلوم ہو کہ روہت شیٹی کی فلم سوریہ ونشی میں اکشے کمار اور کیٹرینہ کیف نے لیڈ رول ادا کیا تھا۔ وہیں، اجئے دیوگن اور رنویر سنگھ اس مووی میں کیمیو کرتے نظر اائے تھے۔ سال 2021 میں ریلیز ہوئی یہ فلم باکس آفس پر سوپر ہٹ ثابت ہوئی تھی۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: