உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جب Lata Mangeshkarکو دیا گیا تھا دھیما زہر، تین مہینے تک بستر سے اٹھ بھی نہیں پائی تھی سُروں کی ملکہ!

    جب Lata Mangeshkarکو دیا گیا تھا دھیما زہر، تین مہینے تک بستر سے اٹھ بھی نہیں پائی تھی سُروں کی ملکہ!

    جب Lata Mangeshkarکو دیا گیا تھا دھیما زہر، تین مہینے تک بستر سے اٹھ بھی نہیں پائی تھی سُروں کی ملکہ!

    Lata Mangeshkar Birth Anniversary: اسی سال 92 سال کی عمر میں لتا منگیشکر کی طویل بیماری کے بعد موت ہوگئی تھی۔ وہ 29 دنوں تک اسپتال میں بھرتی رہی تھیں لیکن انہیں بچایا نہیں جاسکا تھا۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      Lata Mangeshkar Birth Anniversary: عظیم گلوکارہ لتا منگیشکر بھلے ہی ہمارے درمیان نہیں ہیں لیکن ان سے جڑے ڈھیروں قصے کہانیاں آج بھی سنائے جاتے ہیں۔ 28 ستمبر کو ان کی یوم پیدائش ہے۔ لتا منگیشکر کی زندگی سے جڑا ایک قصہ ہی قصہ آج ہم آپ کو سنا رہے ہیں۔

      میڈیا رپورٹس کی مانیں تو لتا منگیشکر جب 33 سال کی تھیں تب انہیں دھیما زہر دے کر مارنے کی کوشش کی گئی تھی۔ ایک انٹرویو میں خود لتا منگیشکر نے اس واقعہ کے بارے میں بتایا تھا۔ ساتھ ہی یہ بھی کہا تھا کہ اس معاملے پر وہ اور ان کی فیملی اس لئے بات نہیں کرتی تھی کیونکہ ان کی زندگی کا سب سے بھیانک دور تھا۔

      آپ کو بتادیں کہ یہ واقعہ سال 1963 کا تھا اور اس دھیمے زہر کا اثر لتا منگیشکر کے اوپر ایسا ہوا تھا کہ وہ بہ مشکل ہی اپنے بستر سے کھڑی ہوپاتی تھیں۔ لتا منگیشکر نے انٹرویو کے دوران بتایا تھا کہ انہیں ٹھیک ہونے میں تین مہینے سے زیادہ کا وقت لگا تھا اور اس دوران وہ بیڈ پر ہی رہی تھیں۔ یہ بھی کہا تھا کہ ڈاکٹرس کے ٹریٹمنٹ اور بھرپور کوشش کی بدولت ہی ان کی واپسی ہوپائی تھی۔

      لتا منگیشکر کو لے کر یہ افواہ بھی پھیلی تھی کہ زہر کی وجہ سے ان کی آواز بھی چلی گئی تھی، حالانکہ لتا جی نے اس بات کو افواہ قرار دیا تھا۔ لتا منگیشکر نے یہ بھی انکشاف کیا تھا کہ بعد میں انہیں اس بات کی جانکاری ہوگئی تھی کہ کس شخص نے انہیں زہر دیا ہے۔ حالانکہ، ثبوت نہ ہونے کی وجہ سے وہ اس شخص کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لے پائی تھی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      جب ڈپریشن سے پریشان تھیں Deepika Padukone، مدد کو آگے آئے تھے رنبیر کپور!

      یہ بھی پڑھیں:
      فالگُنی کے دفاع میں اُتریں سونامہاپاترا،’میں نے پائل ہے چھنکائی‘ تنازعہ پر کیا یہ انکشاف

      بتادیں کہ اسی سال 92 سال کی عمر میں لتا منگیشکر کی طویل بیماری کے بعد موت ہوگئی تھی۔ وہ 29 دنوں تک اسپتال میں بھرتی رہی تھیں لیکن انہیں بچایا نہیں جاسکا تھا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: