உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ایک شخص نے اپنی گرل فرینڈ کی ماں کو ڈونیٹ کردی کڈنی اور لڑکی نے کسی اور سے رچالی شادی!

    پیار کے چکر میں قربان کردی اپنی کڈنی۔

    پیار کے چکر میں قربان کردی اپنی کڈنی۔

    ٹک ٹاک پر جو ویڈیو شیئر کیا گیا ہے اس میں شخص بہت دُکھی نظر آرہا ہے۔ وہ صوفے پر لیٹے ہوئے ہیں۔ بتادیں کہ ٹک ٹاک پر اس ویڈیو کو 14 ملین سے زیادہ وویوز مل چکے ہیں۔ اوزئیل کی اس حالت پر بہت سے لوگوں کو ترس آرہا ہے۔

    • Share this:
      کہتے ہیں پیار (LOVE) میں ڈوبا انسان کچھ بھی کرسکتا ہے۔ شائد اس لئے ہی کہا جاتا ہے کہ پیار میں انسان اندھا ہوجاتا ہے۔ یوں تو یہ ایک کہاوت ہے لیکن آج کے وقت میں کئی عاشقوں کے اوپر بالکل صادق آتی ہے۔ اس کی تازہ مثال میکسیکو میں سامنے آئی ہے۔ مبینہ طور پر یہاں ایک عاشق نے اپنی گرل فرینڈ کی ماں کی جان بچانے کے لئے اپنی کڈنی تک ڈونیٹ کردی لیکن بدلے میں جو اُس کے ساتھ ہوا اُسے جان کر یہی کہیں گے آپ یہ عشق نہیں آساناں، بس اتنا سمجھ لیجئے، آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے۔

      انگریزی ویب سائٹ دا سن (The Sun) کے مطابق میکسیکو کے رہنے والے اوزئیل مارٹینیز (Uziel Martinez) جو پیشے سے ایک ٹیچر ہیں، لیکن ان کی معشوقہ نے انہیں محبت کا ایسا سبق پڑھایا ہے کہ اب یہ کبھی یقین نام کا سبق اپنی زندگی میں دوبارہ نہیں پڑھیں گے۔ اوزئیل نے ٹک ٹاک پر اپنی کہانی شیئر کرتے ہوئے بتایا کہ انہوں نے اپنی گرل فرینڈ کی ماں کو اپنی ایک کڈنی ڈونیٹ کردی اور ایک مہینے بعد ہی گرل فرینڈ نے اُس سے بریک اپ کرلیا اور کسی اور سے شادی کرلی۔ اس بات سے شخص بہت غمزدہ نظر آیا۔ اُس نے اپنے ٹک ٹاک پر جو ویڈیو شیئر کیا اس میں وہ صوفے پر لیٹے بہت ہی غمزدہ نظر آرہا تھا۔
      ;

      ٹک ٹاک پر جو ویڈیو شیئر کیا گیا ہے اس میں شخص بہت دُکھی نظر آرہا ہے۔ وہ صوفے پر لیٹے ہوئے ہیں۔ بتادیں کہ ٹک ٹاک پر اس ویڈیو کو 14 ملین سے زیادہ وویوز مل چکے ہیں۔ اوزئیل کی اس حالت پر بہت سے لوگوں کو ترس آرہا ہے۔

      ایک شخص نے کہا کہ آپ کو دُکھی ہونے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ اس خاتون نے ایک بے حد بہترین شخص کو کھودیا ہے۔ وہیں دوسرے یوزر نے لکھا، ’آپ آگے بڑھیے اور ایسی لڑکی کو منتخب کیجیے جو آپ کو اپنائے جیسے آپ ہیں اور آپ کی تعریف کرے۔‘ حالانکہ بعد میں انہوں نے ایک اور ویڈیو بھی شیئر کیا جس میں انہوں نے بتایا کہ ان کی ایکس کے درمیان بھی بھی دوستی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ انہیں اس سے کوئی شکایت نہیں ہے۔ بھلے ہی دونوں الگ ہوچکے ہیں۔ لوگوں نے حالانکہ ان سے یہ بھی درخواست کی ہے کہ اب آگے سے اتنے جذباتی مت ہوجانا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: