உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ڈرگس معاملہ: آرین خان کو جیل میں کاٹنے ہوں گے مزید 6 دن، ضمانت عرضی پر 20 اکتوبر تک فیصلہ محفوظ

    ڈرگس معاملہ: آرین خان کو جیل میں کاٹنے ہوں گے مزید 6 دن، ضمانت عرضی پر فیصلہ 20 اکتوبر تک ملتوی

    ڈرگس معاملہ: آرین خان کو جیل میں کاٹنے ہوں گے مزید 6 دن، ضمانت عرضی پر فیصلہ 20 اکتوبر تک ملتوی

    Aryan khan Drugs Case: این سی بی نے چھاپہ ماری کے بعد تین اکتوبر کو آرین خان کو گرفتار کیا تھا۔ وہ ابھی ممبئی میں آرتھر روڈ جیل میں بند ہیں۔ انہوں نے گزشتہ ہفتے ضمانت کے لئے مجسٹریٹ عدالت کا رخ کیا تھا۔

    • Share this:
      ممبئی: ڈرگس معاملے میں بالی ووڈ اداکار شاہ رخ خان کے بیٹے آرین خان کی مشکلات کم نہیں ہو رہی ہیں۔ ممبئی کی خصوصی عدالت نے آرین خان کی ضمانت عرضی پر فیصلہ ایک بار پھرسے ٹال دیا ہے۔ اب اس معاملے کی سماعت 20 اکتوبر کو ہوگی۔ عدالت کا فیصلہ نہ آنے تک اب آرین خان کو مزید 6 دن جیل میں ہی کاٹنے ہوں گے۔

      جمعرات کو سماعت کے دوران وکیل امت دیسائی نے کہا کہ جو مجھے جانکاری ملی ہوئی ہے، اس کے مطابق فون میں کوئی ریو پارٹی کا ذکر نہیں ہے۔ جوائنٹ پوسیشن پر آج بحث نہیں کرنی ہے۔ میں نہیں مانتا کہ یہ جوائنٹ پوسیشن ہے، لیکن پھر بھی میں مان لیتا ہوں، اگر ایسا ہے بھی تو بھی یہ ٹرائل کا موضوع ہے۔ آرین خان بہت سال تک بیرون ملک میں تھے، جہاں کئی چیزیں قانونی ہیں۔ یہ بھی ہوسکتا ہے کہ وہاں کے لوگ کسی اور چیز کی بات کر رہے ہیں، جس میں آرین خان بھی شامل ہے۔ مجھے نہیں معلوم کہ کیا بات ہوئی ہے، لیکن عدالت کو یہ سب یاد رکھنا چاہئے۔ آپ سازش کے امکانات کہتے ہوئے ضمانت کی مخالفت نہیں کرسکتے۔

      جو الزامات لگائے گئے ہیں وہ غلط ہیں

      امت دیسائی نے کہا کہ شووک کے فیصلے کی بات ASG نے کی۔ اسی فیصلے کا ذکر میں کر رہا ہوں۔ اس میں عدالت نے یہ بھی اپنے آبزرویشن میں شووک کے سبھی دوسرے پیڈلر سے تار جوڑنے کے بعد بھی کہا کہ شووک ڈرگس لیتا نہیں تھا، بلکہ وہ پیڈلر سے لے کر سشانت سنگھ راجپوت کو دیتا تھا۔ اس لئے اسے ایک اہم بات مانا گیا تھا اور ڈرگس سپلائی کا الزام لگا تھا۔ آج بیرون ممالک سے بھی جوڑا گیا اور ایم ای اے سے بات شروع ہونے کی بات کہی گئی۔ مجھے نہیں معلوم کہ کیا ایسی بات چیت ہوئی بھی یا نہیں، لیکن میں صرف یہ کہہ سکتا ہوں کہ آج کی نسل جس انگریزی کا استعمال کرتی ہے، اسے ہمارے عمر والے ٹارچر مانیں گے۔ اس لئے جس بیان اور جو الفاظ کا استعمال وہ کرتے ہیں، اس سے ایسا خدشہ پیدا ہوسکتا ہے کہ اس میں کیا کوئی بڑی سازش ہے۔ کئی بار ایسا نہیں ہوتا ہے اور یہ جینریشن گیپ کی وجہ سے ہمیں لگتا ہے۔

      تین اکتوبر کو ہوئی تھی آرین خان کی گرفتاری

      واضح رہے کہ آرین خان کو تین اکتوبر کو گوا جارہی کروز شپ پر چھاپہ ماری کے بعد گرفتار کیا گیا تھا۔ اس وقت وہ عدالتی حراست میں ہیں۔ آرین خان کو ممبئی کے آرتھر روڈ جیل میں رکھا گیا ہے۔ مجسٹریٹ کی عدالت سے گزشتہ ہفتے ضمانت عرضی خارج ہونے کے بعد انہوں نے خصوصی جج کی عدالت میں عرضی داخل کی تھی۔ این سی بی نے حلف نامے میں کہا، پہلی نظر میں پتہ چلا کہ ملزم نمبر ایک (آرین خان) نے ملزم نمبر-دو (ارباز مرچنٹ) اور ملزم نمبر دو کے منشیات ذرائع سے خریدی۔ ان کے پاس سے 6 گرام چرس برآمد کیا گیا جو انہوں نے ہوش وحواس میں رکھا تھا۔ ایجنسی نے بتایا کہ جانچ کے دوران ملی اشیا سے انکشاف ہوتا ہے کہ آرین خان کی منشیات اشیا کی غیر قانونی خرید اور مارکیٹنگ میں رول ہے۔

      اس لئے جس بیان اور جو الفاظ کا استعمال وہ کرتے ہیں، اس سے ایسا خدشہ پیدا ہوسکتا ہے کہ اس میں کیا کوئی بڑی سازش ہے۔ کئی بار ایسا نہیں ہوتا ہے اور یہ جنریشن گیپ کی وجہ سے ہمیں لگتا ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: