ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

سشانت سنگھ راجپوت معاملے میں ممبئی پولیس کی بڑی لاپرواہی، دشا سے منسلک فائل کا فولڈر ہوا ڈیلیٹ

بہار پولیس (Bihar Police) کی ٹیم ہفتہ کی شام مالونی پولیس تھانے میں دشا سالیان (disha salian) کی خود کشی کے بارے میں کچھ اہم جانکاری لینے پہنچی تھی۔

  • Share this:
سشانت سنگھ راجپوت معاملے میں ممبئی پولیس کی بڑی لاپرواہی، دشا سے منسلک فائل کا فولڈر ہوا ڈیلیٹ
سشانت سنگھ راجپوت معاملے میں ممبئی پولیس کی بڑی لاپرواہی

ممبئی: بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت (Sushant Singh Rajput Suicide Case) کی موت کے معاملے میں ممبئی پولیس (Mumbai Police) کی بڑی لاپرواہی سامنے آئی ہے۔ خبر ہے کہ ممئی پولیس نے انجانے میں دشا سالیان (Disha Salian) سے متعلق فائل کا فولڈر ہی ڈیلیٹ کردیا۔ یہاں تک کہ بہار پولیس کو دشا کا کمپیوٹر/ لیپ ٹاپ بھی نہیں دیا جارہا ہے، جبکہ بہار پولیس (Bihar Police) نے کہا ہے کہ اگر انہیں لیپ ٹاپ دے دیا جائے تو وہ فولڈر کو دوبارہ نکال سکتے ہیں۔ ممبئی پولیس نے اس کیس میں جس طرح کا بیان بہار پولیس کے سامنے رکھا ہے، وہ اب ممبئی پولیس کے سامنے رکھا ہے، وہ اب ممبئی پولیس کے طریقہ کار کو شک کے دائرے میں لا رہا ہے۔


اطلاعات کے مطابق، بہار پولیس کی ٹیم ہفتہ کی شام مالونی پولیس تھانے دشا سالیان کی خودکشی (حادثاتی موت) کے بارے میں کچھ اہم اطلاعات لینے پہنچی تھی۔ ذرائع کے مطابق ممبئی پولیس کے جانچ افسر سبھی اطلاعات زبانی طور پر شیئر بھی کر رہے تھے۔ تبھی ممبئی پولیس کے جانچ اسر کو کہیں سے ایک کال آئی اور اس کے بعد چیزیں بدل گئیں۔ پولیس ذرائع کے مطابق اس کے بعد ممبئی پولیس کی طرف سے کہا گیا ہے کہ انجانے میں دشا سالیان سے جڑی فائل فولڈر ڈیلیٹ ہوگیا ہے۔ اس کے بعد بہار پولیس کو وہ کمپیوٹر / لیپ ٹاپ بھی نہیں دیا گیا۔


بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی موت کے معاملے میں ممبئی پولیس کی بڑی لاپرواہی سامنے آئی ہے۔
بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی موت کے معاملے میں ممبئی پولیس کی بڑی لاپرواہی سامنے آئی ہے۔


اس سے پہلے نیوز 18 کو سشانت سنگھ راجپوت کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سے متعلق جو اطلاعات ہاتھ لگی ہے، اس کے مطابق اس پورے معاملے میں انویسٹی گیشن آفیسر نے جو ابتدائی ثبوت پایا تھا، اس کا ذکر تک رپورٹ میں نہیں کیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی سشانت سنگھ کے گھر سے اس دن ویڈیو گرافر نے کیا ویڈیو ریکارڈ کیا تھا، اس کی بھی جانکاری رپورٹ میں نہیں دی گئی ہے۔ یہاں تک کہ ڈیڈباڈی کی ہائٹ یا کوئی آئیڈنٹیٹی مارک بھی رپورٹ میں نہیں بتایا گیا ہے۔

 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 02, 2020 04:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading