ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

سشانت سنگھ راجپوت کو ریا چکرورتی دیتی تھیں ڈرگس، وہ سنڈیکیٹ کی سرگرم رکن: این سی بی کا دعویٰ

Sushant singh rajput case: بالی ووڈ اداکارہ ریا چکرورتی (Rhea Chakraborty) کی ضمانت عرضی پر بامبے ہائی کورٹ میں منگل کو سماعت ہوئی۔ اس دوران معاملے کی جانچ کر رہے این سی بی (NCB) نے ہائی کورٹ میں اپنا حلف نامہ پیش کیا۔

  • Share this:
سشانت سنگھ راجپوت کو ریا چکرورتی دیتی تھیں ڈرگس، وہ سنڈیکیٹ کی سرگرم رکن: این سی بی کا دعویٰ
سشانت سنگھ راجپوت کو ریا چکرورتی دیتی تھیں ڈرگس

نئی دہلی: سشانت سنگھ راجپوت معاملے (Sushant singh rajput death case) سے متعلق ڈرگس معاملے میں گرفتار کی گئیں بالی ووڈ اداکارہ ریا چکرورتی (Rhea Chakraborty) کی ضمانت عرضی پر بامبے ہای کورٹ میں منگل کو سماعت ہوئی۔ اس دوران معاملے کی جانچ کر رہے نارکوٹکس کنٹرول بیورو (NCB) نے ہائی کورٹ میں اپنا حلف نامہ پیش کیا۔ اس میں این سی بی نے واضح طور پر کہا ہے کہ ریا چکرورتی سشانت سنگھ راجپوت کے لئے ڈرگس خریدتی تھیں۔ ریا چکرورتی نے سشانت سنگھ کی دوا لینے کی عادت کو چھپانے کے لئے ان کے ڈرگس خریدے۔


ریا چکرورتی اور ان کے بھائی شووک چکرورتی کی ضمانت عرضی کے خلاف این سی بی نے اپنے حلف نامہ میں کہا ہے کہ دونوں ہی لوگ ڈرگ سنڈیکیٹ کے سرگرم رکن ہیں۔ این سی بی کے زونل ڈائریکٹر سمیر وانکھیڑے کی طرف سے داخل جواب میں کہا گیا ہے کہ جانچ میں اس بات کے ثبوت ملے ہیں کہ ریا چکرورتی نے ڈرگس اسمگلنگ کو فائننس کیا۔ حلف نامہ میں کہا گیا ہے کہ واٹس ایپ چیٹ، موبائل، لیپ ٹاپ اور ہارڈ ڈسک سے جمع کئے گئے ڈاٹا سے یہ پتہ چلتا ہے کہ ریا چکرورتی مسلسل ڈرگس کی خرید کرتی تھیں۔ ساتھ ہی اس غیرقانونی کاروبار کو فائننس بھی کرتی تھیں۔


این سی بی کے حلف نامہ میں کہا گیا کہ اگر پورے منظر نامے کو دیکھا جائے تو ریا چکرورتی نے یہ جانتے ہوئے کہاکہ سشانت سنگھ راجپوت ڈرگس لے رہے ہیں۔ انہوں نے اس بات کو چھپایا۔ ریا چکرورتی نے اپنے گھر میں ڈرگس کو اسٹور کیا، جسے وہ سشانت سنگھ راجپوت کو بھی دیتی تھیں۔ این سی بی نے یہ بھی کہا کہ ریا چکرورتی ہائی سوسائٹی شخصیات سے جڑے ڈرگ سنڈیکیٹ کی ایکٹیو ممبر ہیں۔ این سی بی نے دعویٰ کیا کہ اس کے پاس اس بات کے مناسب ثبوت ہیں کہ وہ ڈرگس اسمگلنگ میں شامل تھیں۔ ریا چکرورتی ڈرگس ڈلیوری کرتی تھیں اور کریڈٹ کارڈ، کیش اور پیمنٹ گیٹ وے کے ذریعہ ادائیگی کرتی تھیں۔


 

 
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 29, 2020 03:40 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading