ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

او ٹی ٹی اور سوشل میڈیا کیلئے حکومت نے جاری کیں گائڈ لائنس ، اب 24  گھنٹے کے اندر ہٹانا ہوگا قابل اعتراض مواد

حکومت نے سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم (OTT Platforms) پر کنٹینٹ کو لیکر ہدایات جاری کی ہیں۔ نئی گائیڈ لائنس کے مطابق جن میں شکایت کے 24 گھنٹے کے اندر سوشل میڈیا Social Media) سے قابل اعتراض کنٹینٹ کو ہٹانا ہوگا۔

  • Share this:
او ٹی ٹی اور سوشل میڈیا کیلئے حکومت نے جاری کیں گائڈ لائنس ، اب 24  گھنٹے کے اندر ہٹانا ہوگا قابل اعتراض مواد
حکومت نے سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم (OTT Platforms) پر کنٹینٹ کو لیکر ہدایات جاری کی ہیں۔

حکومت نے سوشل میڈیا اور او ٹی ٹی پلیٹ فارم (OTT Platforms) پر کنٹینٹ کو لیکر ہدایات جاری کی ہیں۔ نئی گائیڈ لائنس کے مطابق جن میں شکایت کے 24 گھنٹے کے اندر سوشل میڈیا Social Media) سے قابل اعتراض کنٹینٹ کو ہٹانا ہوگا۔ اسی کے ساتھ ہی کمپنیوں کو شکایت نمٹارے کے لیے ایک نظام رکھنا ہوگا۔ اب نیٹفلکس، امیزون جیسے او ٹی ٹی پلیٹ فارم ہوں یا فیس بک، ٹویٹر جیسے سوشل میڈیا پلیٹ فارم سب کے لیے سخت ضابطے بن گئے ہیں۔ نئی ہدایات کے مطابق شکایت کے 24 گھنٹے میں سوشل میڈیا سے قابل اعتراض مواد کو ہٹانا ہوگا۔ اس کے علاوہ کمپنیوں کو شکایت نمٹارے کے لیے ایک نظام رکھنا ہوگا اور شکایات کا نمٹارہ کرنے والے افسر کو بھی رکھنا ہوگا۔ 24 گھنٹے میں شکایت کا رجسٹریشن ہوگا اور 15 دنوں میں اس کا نمٹارہ کرنا ہوگا۔ حکومت تین ماہ میں ڈیجیٹل کنٹینٹ کو بہ ضابطہ کرنے والا قانون نافذ کرنے کی تیاری میں ہے۔


مرکزی وزیر روی شنکر پرساد (Ravi Shankar Prasad) نے پریس کانفرنس کے دوران کہا، ہم نے کوئی نیا قانون نہیں بنایا ہے۔ ہم نے یہ قانون موجودہ آئی ٹی ایکٹ کے دائرے میں رہتے ہوئے بنایا ہے۔ ہم پلیٹ فارمس پر بھروسہ کرتے ہیں کہ وہ قوانین کا پورے طریقے سے پریوی کریں گے۔ ان قوانین کا فوکس سیلف ریگولیشن پر ہے۔ اطلاعات و نشریات کے مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر ، مواصلات اور آئی ٹی کے وزیر روی شنکر پرساد نے جمعرات کو یہاں گائڈلائنس کو جاری کرتے ہوئے صحافیوں کو یہ اطلاع دی۔ روی شنکر پرساد (Ravi Shankar Prasad) نے کہا کہ ہندوستان میں سوشل میڈیا پلیٹ فارم کی تجارت کرنے کے لیے خیر مقدم ہے۔ حکومت تنقید کے لیے تیار ہے لیکن سوشل میڈیا کے غلط استعمال پر بھی شکایت کا فورم ہونا چاہئے۔ اس کا غلط استعمال روکنا ضروری ہے۔


انہوں نے بتایا کہ ہندوستان میں واٹس ایپ کے 53 کروڑ، فیس بک کے 40 کروڑ سے زیادہ اور ٹویٹر پر ایک کروڑ سے زائد یوزر ہیں۔ ہندوستان میں ان کا کافی استعمال ہوتا ہے لیکن جو اندیشے ہیں ان پر کام کرنا ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ آن لائن پلیٹ فارم پر ڈالے جانے والے کنٹینٹ کے سلسلے میں گائڈلائنس بنائیں۔ اس کی ہدایت پر حکومت نے ہدایات تیار کی ہیں۔ سوشل میڈیا کے لیے بنائے گئے اہم قوانین کو تین ماہ کے اندر نافذ کیا جائے گا تاکہ وہ اپنے سسٹم میں اصلاح کر سکیں۔ باقی ضابطے کو نوٹیفائی کیے جانے کے دن سے نافذ ہوں گے۔

Published by: Sana Naeem
First published: Feb 25, 2021 06:32 PM IST