உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رات بھر مانگتی رہی دوا، ڈاکٹرس نے ایک نہ سنی، آپ کو بھی رُلادے گی پاک اداکارہ کی درد بھری کہانی

    رات بھر  مانگتی رہی دوا، ڈاکٹرس نے ایک نہ سنی، آپ کو بھی رُلادے گی پاک اداکارہ کی درد بھری کہانی

    رات بھر مانگتی رہی دوا، ڈاکٹرس نے ایک نہ سنی، آپ کو بھی رُلادے گی پاک اداکارہ کی درد بھری کہانی

    Zara Noor Abbas Traumatic Experience: زارا آگے لکھتی ہیں کہ میں نے جو تجربہ کیا ہے پاکستان کے ہیلتھ سسٹم کا اسے دیکھ کر مجھے لگتا ہے کہ خواتین خود کو بہت کم سمجھتی ہیں، انہیں نہیں پتہ ہوتا کہ وہ کتنی بہادر ہوتی ہیں۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Jammu | Hyderabad
    • Share this:
      Zara Noor Abbas Traumatic Experience: بچے کو جنم سے پہلے کھو دینے کا دُکھ کتنا بڑا ہوتا ہے یہ ایک ماں سے بہتر کون سمجھ سکتا ہے۔ حال ہی میں پاکستانی اداکارہ زارا نور عباس اسی تکلیف سے نکلی ہیں۔ پردے پراپنی ایکٹنگ سے سب کے چہرے پر مسکان بکھیرنے والی زارا کی ہی مسکان کچھ مہینے پہلے چھن گئی تھی جب انہوں نے جنم سے پہلے اپنے بچے کو کھودیا۔ حالیہ انٹرویو کے دوران زارا نے اپنی اس تکلیف کو یاں کیا۔ ساتھ ہی پاکستان کے ڈھیلے ہیلتھ سسٹم کی پول بھی انہوں نے کھولی۔

      ڈاکٹرس نے مجھے نہیں دی کوئی دوائی
      FWhy Podcast سے بات چیت کے دوران زارا نے بتایا، میرے لیے سب سے ٹرامیٹک بات تھی کہ میں انہیں (ڈاکٹرس) لگاتار بولتی گئی کہ میں ڈپریشن کی مریضہ ہوں۔ میں دوائیاں لیتی رہی ہوں، پچھلے سال تک، میں نے اب چھوڑ دی ہے۔ مجھے اینزائٹی ہوتی ہے۔ مجھے پینک اٹیک آتے ہیں۔ اگر بچے کی حالت ایسی نہیں ہے کہ اسے بچایا جاسکے تو مجھے آپ دوائی دے دیجیے گا، تا کہ میں سو جاوں، لیکن انہوں نے مجھے کوئی دوائی نہیں دی۔‘



      ڈیلیوری کے بعد پوری رات جاگتی رہی میں
      زارا آگے کہتی ہے کہ ’ڈیلیوری کے بعد میں رات بھر بیڈ پر لیٹی رہی، میرے گھر والے اور مہمان مجھے دیکھنے آتے رہے۔ میں صبح 9 بجے تک بستر پر لیٹی رہی، ڈیتھ سرٹیفکیٹ نکالنے تک میں جاگتی رہی۔ میں نے اپنا صبر کھو دیا تھا، مجھے غصہ آ رہا تھا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      عاصم ریاض کے بھائی عمر کے ساتھ ویدیو سانگ میں رومانس کریں گےAnjali Arora، سامنے آیا پوسٹر

      یہ بھی پڑھیں:
      Urfi Javedنے ٹرولرس کو پڑھایا اخلاقیات کا سبق،کہا-سماج لڑکوں کو سکھائے، تو لڑکیاں۔۔۔

      خواتین ہوتی ہیں بہت بہادر
      زارا نور نے اس جذباتی انٹرویو کی کلپ اپنے انسٹاگرام ہینڈل پر شیئر کرتے ہوئے لکھا، آپ جس طیز کو ہمیشہ کے لئے کھودیتے ہیں، اس کے بارے میں بات کرنا ایک بڑا ٹاسک ہوتا ہے۔ لیکن کچھ مہینوں بعد میری پیاری دوست سے میں اپنے دل کا حال بیاں کرسکتی ہوں۔ زارا آگے لکھتی ہیں کہ میں نے جو تجربہ کیا ہے پاکستان کے ہیلتھ سسٹم کا اسے دیکھ کر مجھے لگتا ہے کہ خواتین خود کو بہت کم سمجھتی ہیں، انہیں نہیں پتہ ہوتا کہ وہ کتنی بہادر ہوتی ہیں۔ میں امید کرتی ہوں کہ مجھے ان خواتین سے ہمت ملے، جو اسی طرح کے یا پھر اس سے بھی زیادہ بری تکلیف سے گزری ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: