ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

راج ببر نے اپنی باا ثر اداکاری سے سامعین کے دلوں میں ایک خاص شناخت بنائی

راج ببر 23 جون 1952 کو پیدا ہوئے تھے۔ سال 1975 میں نیشنل اسکول آف ڈرامہ سے گریجویشن مکمل کرنے کے بعد وہ اداکار بننے کا خواب سجائے ممبئی آگئے تھے۔ ممبئی آنے کے بعد انہیں مرکزی اداکار کی حیثیت سے اپنی شناخت بنانے کے لئے کافی جدوجہد کرنی پڑی۔

  • UNI
  • Last Updated: Jun 23, 2020 10:55 AM IST
  • Share this:
راج ببر نے اپنی باا ثر اداکاری سے سامعین کے دلوں میں ایک خاص شناخت بنائی
راج ببر نے اپنی باا ثر اداکاری سے سامعین کے دلوں میں ایک خاص شناخت بنائی

ممبئی: بالی ووڈ میں راج ببرکو ایک ایسے اداکار کے طور پرشمار کیا جاتا ہے، جنہوں نے اپنی بااثر اداکاری سے متوازی سنیما کے ساتھ کمرشل سنیما میں بھی سامعین کے دلوں میں اپنی خاص شناخت بنائی ہے۔ راج ببر 23 جون 1952 کو پیدا ہوئے تھے۔ سال 1975 میں نیشنل اسکول آف ڈرامہ سے گریجویشن مکمل کرنے کے بعد وہ اداکار بننے کا خواب سجائے ممبئی آگئے تھے۔ ممبئی آنے کے بعد انہیں مرکزی اداکار کی حیثیت سے اپنی شناخت بنانے کے لئے کافی جدوجہد کرنی پڑی۔ اس دوران وہ پروڈیوسر اور ڈائریکٹر پرکاش مہرہ کے دفتر میں ایک چھوٹے سے کمرے میں رہ کر جدوجہد کیا کرتے تھے۔


راج ببر نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز 1980 میں فلم ’سو دن ساس کے‘ سے کیا تھا، سے اس فلم میں انہوں نے اداکارہ رینا رائے کے شوہر کا کردار نبھایا تھا۔ یہ فلم باکس آفس سپر ہٹ ثابت ہوئی۔ فلم ’سو دن ساس کے‘ کی کامیابی کے باوجود راج ببر کو بطور اداکار کام نہیں مل رہا تھا۔ یقین تو سبھی نے دلایا، لیکن کسی نے بھی انہیں کام کرنے کا موقع نہیں دیا۔ اسی درمیان راج ببر کو ’نذرانہ پیار کا، ساجن میرے ساجن کی، جذبات، آپ تو ایسے نہ تھے‘ جیسی کچھ فلموں میں کام کرنے کا موقع ملا، لیکن ان فلموں سے انہیں کوئی خاص فائدہ نہیں ہوا۔ راج ببر کی قسمت کاستارہ 1980 میں بی آر چوپڑا کی فلم ’انصاف کا ترازو‘ سے چمکا۔ اس فلم میں انہوں نے ایک ریپسٹ کا کردار ادا کیا تھا۔ اس فلم کی کہانی بی آر چوپڑا نے کئی لوگوں کو سنائی لیکن کوئی بھی اداکار فلم میں کام کرنےکے لئے راضی نہیں ہوا۔



راج ببر 23 جون 1952 کو پیدا ہوئے تھے۔ سال 1975 میں نیشنل اسکول آف ڈرامہ سے گریجویشن مکمل کرنے کے بعد وہ اداکار بننے کا خواب سجائے ممبئی آگئے تھے۔
راج ببر 23 جون 1952 کو پیدا ہوئے تھے۔ سال 1975 میں نیشنل اسکول آف ڈرامہ سے گریجویشن مکمل کرنے کے بعد وہ اداکار بننے کا خواب سجائے ممبئی آگئے تھے۔


بی آر چوپڑا نے جب فلم کی کہانی راج ببر کو سنائی تو انہوں نے اس فلم کو ایک چیلنج کے طور پر لیا اور اس پر راضی ہوگئے۔ 1980 میں ریلیز فلم ’انصاف کا ترازو‘ سپرہٹ ثابت ہوئی اور وہ کافی حد تک انڈسٹری میں اپنا شناخت قائم کرنے میں کامیاب رہے۔ فلم ’انصاف کا ترازو‘ کی کامیابی کے بعد راج ببر، بی آر چوپڑا کے پسندیدہ اداکار بن گئے اور انہوں نے راج ببر کو تقریباً اپنی ہر فلم میں کام دینا شروع کردیا۔ ان فلموں میں نکاح، آج کی آواز، دہلیز، کرایہ دار عوم اور کل کی آواز‘ جیسی فلمیں شامل ہیں۔

راج ببر کے فلمی کیریئر میں اداکارہ سمیتا پاٹل کے ساتھ ان کی جوڑی کو خوب پسند کیا گیا تھا۔
راج ببر کے فلمی کیریئر میں اداکارہ سمیتا پاٹل کے ساتھ ان کی جوڑی کو خوب پسند کیا گیا تھا۔


فلم ’انصاف کا ترازو‘ کی کامیابی کے بعد راج ببر نے اپنی ویلن کی شبیہ کی پرواہ کئے بغیر رومانوی فلموں میں اداکاری کرنی جاری رکھی۔ ان فلموں میں پونم ڈھلون کے ساتھ ’پونم اور انیتا راج کے ساتھ ’پریم گیت‘ جیسی فلمیں شامل ہیں۔ ان فلموں کو ناظرین نے بہت پسند کیا لیکن اس کامیابی کا سہرا راج ببر کے بجائے اداکاراؤں کو دیا گیا۔ سال 1992 میں ریلیز فلم ’کرم یودھا‘ راج ببر کے کیریئر کی بطور مرکزی اداکار آخری فلم ثابت ہوئی۔ یہ فلم باکس آفس پر ناکام رہی۔ اس کے بعد راج ببر نے اداکاری میں یکسانیت سے بچنے اور خود کو ایک کریکٹر ایکٹر کے طور پر قائم کرنے کے لئے مختلف کردار نبھائے۔
راج ببر کے فلمی کیریئر میں اداکارہ سمیتا پاٹل کے ساتھ ان کی جوڑی کو خوب پسند کیا گیا تھا۔ ان کی جوڑی سب سے پہلے 1981 میں ریلیز فلم’تجربہ‘ میں ایک ساتھ نظر آئی ۔ بعد میں انہوں نے اداکارہ سمیتا پاٹل سے شادی کرلی۔ راج ببر نے ہندی فلموں کے علاوہ پنجابی فلموں میں بھی اداکاری کرکے ناظرین کوکافی لطف اندوز کیا۔ راج ببر نے فلموں میں متعدد کردار نبھانے کے بعد سماجی خدمت کے لئے سیاست میں قدم رکھا۔ راج ببر نے اپنے چار دہائی طویل فلمی کیریئر میں تقریباً ڈھائی سو سے زائد فلموں میں کام کیا۔ وہ آج بھی اسی جوش و خروش کے ساتھ فلم اور سیاست کے میدان میں سرگرم ہیں۔
First published: Jun 23, 2020 10:39 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading