உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Rashami Desai On Sidharth Shukla:رشمی دیسائی نے سدھارتھ شکلا کی موت پر ہوئے ٹرولس پر دی صفائی، کہا-’میں بے رحم ہوچکی تھی‘

    رشمی دیسائی نے سدھارتھ شکلا کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔

    رشمی دیسائی نے سدھارتھ شکلا کو لے کر کہی یہ بڑی بات۔

    Rashami Desai On Sidharth Shukla: رشمی نے مزید کہا، "ایسا نہیں تھا، ہم نے 'بگ باس 13' کے بعد بات نہیں کی، ہم نے بات کی، لیکن کبھی کبھی۔ وہ اچھا کام کر رہا تھا، تو اچھا لگتا تھا۔ ہم نے میچیور لیول پر ایک دوسرے کے لیے ایک حد مقرر کی تھی۔ ہمارا سفر صرف ہم جانتے تھے۔‘‘

    • Share this:
      Rashami Desai On Sidharth Shukla: آنجہانی اداکار سدھارتھ شکلا اور اداکارہ رشمی دیسائی طویل عرصے سے ایک دوسرے کے ساتھ تعلقات میں تھے۔ دونوں نے ایک ساتھ سیریل 'دل سے دل تک' میں کام کیا تھا اور یہیں سے دونوں نے ایک دوسرے کو ڈیٹ کرنا شروع کیا۔ تاہم، 'بگ باس 13' میں ان کے تعلقات میں کافی تبدیلی آئی۔ دونوں کے درمیان اتنی تلخی تھی کہ وہ ایک دوسرے کو دیکھنا بھی گوارا نہیں کرتے تھے۔

      تاہم ان کے درمیان کتنی ہی لڑائیاں ہوئیں، وہ ہمیشہ ایک دوسرے کے ساتھ کھڑے رہے۔ لیکن 2 ستمبر 2021 کو جب سدھارتھ شکلا کی دل کا دورہ پڑنے سے موت ہوگئی اور رشمی ان کے گھر پہنچ گئیں تھیں تب ٹرول کرنے والوں نے انہیں جعلی قرار دیتے ہوئے سخت ٹرول کیا۔ اب اداکارہ نے ایک انٹرویو میں بتایا کہ تب تک وہ بہت مضبوط ہو چکی تھیں اور شاید بے رحم ہو چکی تھیں۔

      'بی بی سی' کو انٹرویو دیتے ہوئے رشمی دیسائی نے ٹرولز کے بارے میں کہا، 'اس وقت تک میں خود کو بہت مضبوط بنا چکی تھی یا شاید میں بہت بے رحم ہو چکی تھی۔ میں بہت ایماندار ہونا چاہوں گی، کیونکہ اس وقت میری زندگی میں بہت کچھ ہو رہا تھا۔ جب میں نے سدھارتھ کے ساتھ کام کیا تو وہ مجھے بہت قریب سے جانتے تھے۔ ہم دونوں ایک دوسرے کی باتیں جانتے تھے۔ میں انہیں ہمیشہ کہتی تھی کہ ان کے بڑے جسم میں دس سال کا بچہ ہے۔ وہ بالکل ویسا ہی تھا، وہ صرف اپنی شرطوں پر جیتا تھا۔"

      یہ بھی پڑھیں:
      Sanvikkaa Bold Photos:پنچایت2کی’رینکی‘اصل زندگی میں ہے بولڈ، فینس نے بتایا’نیو نیشنل کرش

      یہ بھی پڑھیں:
      Cruise Drugs Case:این سی بی کے 6صفحات کی چارج شیٹ میں نہیں ہے آرین خان کا نام

      رشمی نے مزید کہا، "ایسا نہیں تھا، ہم نے 'بگ باس 13' کے بعد بات نہیں کی، ہم نے بات کی، لیکن کبھی کبھی۔ وہ اچھا کام کر رہا تھا، تو اچھا لگتا تھا۔ ہم نے میچیور لیول پر ایک دوسرے کے لیے ایک حد مقرر کی تھی۔ ہمارا سفر صرف ہم جانتے تھے۔‘‘
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: