உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Shahid Kapoor & Mira Rajput:بوائز ٹرپ پر شاہد کپور کو ستائی بیوی کی یاد، لکھی دل کی بات

    بوائز ٹرپ پر موجود شاہد کپور کو ستائی وائف میرا کی یاد۔

    بوائز ٹرپ پر موجود شاہد کپور کو ستائی وائف میرا کی یاد۔

    Shahid Kapoor & Mira Rajput: شاہد کپور اور میرا راجپوت سوشل میڈیا پر کپل گول سیٹ کرتے نظر آتے ہیں۔ دونوں ایک دوسرے کو خاص محسوس کرانے کا ایک بھی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے اور یہ تصویریں اس کا ثبوت ہیں۔

    • Share this:
      Shahid Kapoor & Mira Rajput:ان دنوں شاہد کپور اپنے دوستوں اور چھوٹے بھائی کے ساتھ یورپ میں چھٹیاں گزارنے گئے ہوئے ہیں۔ دوستوں کے ساتھ کافی عرصے بعد شاہد کپور کو بوائز ٹرپ پر دھوم مچاتے ہوئے اچانک اپنی مسز میرا راجپوت یاد آگئیں۔ جی ہاں، اپنی بیوی کی محبت کو یاد کرتے ہوئے، شاہد نے ان پر محبت کی بارش کی ہے اور اپنے جذبات کو دنیا کے سامنے ظاہر کیا ہے۔ ریسٹورنٹ میں اکیلے بیٹھے شاہد نے لکھا کہ بائیکنگ ٹرپ کے بیچ میں جب آپ سوچنے لگتے ہیں کہ آپ یہاں اپنی محبت کے ساتھ کیوں نہیں ہیں۔ میرا کے لیے شاہد کی اس محبت کو دیکھ کر ان کے مداح انہیں پرفیکٹ شوہر کا ٹیگ دے رہے ہیں اور میرا کو بہت خوش قسمت بتا رہے ہیں۔

      گزشتہ کئی دنوں سے شاہد کپور کے بوائز ٹرپ کی تصاویر سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہیں۔ ہنستے، گاتے یہ سب دوست اپنی زندگی کے خوش گوار لمحات گزار رہے ہیں لیکن اس درمیان شاہد کے لیے میرا کو یاد رکھنا لازم ہے کیوں کہ دونوں ایک بار پھر بچوں کی ذمہ داری ایک دوسرے کو سونپ کر اپنی زندگی میں جھومتے نظر آئے۔

      جب میرا کو گزشتہ ماہ اپنے گرل گینگ کے ساتھ چھٹیاں مناتے ہوئے دیکھا گیا تھا، شاہد میرا کے گھر آنے کے فوراً بعد اپنی بوائز ٹرپ کے سفر پر نکل پڑے۔ شاہد کی اس خوبصورت اسٹوری کو اپنے انسٹاگرام پر پوسٹ کرتے ہوئے میرا نے انتظار کرنے والا ایموجی شیئر کرکے شاہد کو یاد کیا ہے۔



      یہ بھی پڑھیں:
      Salman Khanسے ملاقات کرنا چاہتی ہیں باکسرNikhat Zareen، بھائی نے اس طرح دیا جواب

      یہ بھی پڑھیں:
      Malaika Arora:اسٹریچ مارکس کو لے کر ٹرول کرنےوالوں کو ملائیکہ اروڑہ نے دیا منہ توڑ جواب

      شاہد کپور اور میرا راجپوت سوشل میڈیا پر کپل گول سیٹ کرتے نظر آتے ہیں۔ دونوں ایک دوسرے کو خاص محسوس کرانے کا ایک بھی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے اور یہ تصویریں اس کا ثبوت ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: