ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں پر راج کرتے ہیں شاہ رخ خان

ممبئی۔ چھوٹے پردے سے اپنے کیریئر کا آغاز کرکے بالی ووڈ میں چوٹی کا مقام حاصل کرنے والے فلم اداکار شاہ رخ خان آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں پر راج کرتے ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 02, 2015 09:04 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں پر راج کرتے ہیں شاہ رخ خان
ممبئی۔ چھوٹے پردے سے اپنے کیریئر کا آغاز کرکے بالی ووڈ میں چوٹی کا مقام حاصل کرنے والے فلم اداکار شاہ رخ خان آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں پر راج کرتے ہیں۔

ممبئی۔  چھوٹے پردے سے اپنے کیریئر کا آغاز کرکے بالی ووڈ میں چوٹی کا مقام حاصل کرنے والے فلم اداکار شاہ رخ خان آج بھی اپنے مداحوں کے دلوں پر راج کرتے ہیں۔ فلم انڈسٹری میں کنگ خان کے نام سے مشہور شاہ رخ خان کی پیدائش 02 نومبر 1965 کو دہلی میں ہوئی تھی۔ ان کے والد ٹرانسپورٹ کے کاروبار سے منسلک تھے۔ اداکاری سے جڑنے اور ترسیل کے مختلف ذرائع کو قریب سے سمجھنے کے لئے انہوں نے جامعہ ملیہ اسلامیہ یونیورسٹی سے ماسٹر کی ڈگری حاصل کی۔ سال 1988 میں شاہ رخ خان نے بطور اداکار چھوٹے پردے کے سیریل 'فوجی' سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا۔


سال 1991 میں اپنے خوابوں کو حقیقت میں تبدیل کرنے کے لئے شاہ رخ ممبئی آ گئے۔ عزیز مرزا نے شاہ رخ خان کی صلاحیت کو پہچان کر انہیں اپنے سیریل 'سرکس' میں کام کرنے کا موقع دیا۔ انہی دنوں ہیما مالنی کو اپنی فلم 'دل آشنا' کے لئے دویا بھارتی کے لئے نئے چہرے کی تلاش تھی۔ شاہ رخ خان کو جب اس بات کا پتہ چلا تو وہ اپنے دوستوں کی مدد سے اس فلم کے لئے اسکرین ٹیسٹ دینے کے لئے گئے اور منتخب کرلئے گئے۔


اس درمیان انہیں فلم 'دیوانہ' میں کام کرنے کا موقع ملا۔ رشی کپور جیسے تجربہ کار اداکار کی موجودگی میں بھی شاہ رخ خان نے اپنی بہترین اداکاری سے شائقین کو اپنا دیوانہ بنا یا جس کے لئے انہیں فلم فیئر کی جانب سے ابھرتے ہوئے اداکار کا فلم فیئر ایوارڈ بھی ملا۔


اس درمیان ڈائریکٹر عباس مستان کی نظر شاہ رخ خان پر پڑی۔اس وقت وہ انگریزی کے نوبل 'اے کس بی فور ڈیتھ' پر ایک فلم بنانے جا رہے تھے۔ اس فلم میں شاہ رخ خان منفی رول ملا ۔ شاہ رخ نے اسے چیلنج کے طور پر لیا اور اس کے لئے حامی بھر دی۔ سال 1993 میں ریلیز ہونے والی فلم 'بازیگر' سپر ہٹ ہوئی اور وہ کافی حد تک انڈسٹری میں شناخت بنانے میں کامیاب ہو گئے۔ سال 1993 میں ہی شاہ رخ خان کو یش چوپڑا کی 'ڈر' میں کام کرنے کا موقع ملا۔ اس فلم میں ان کے بولنے کی اسٹائل 'ك ك کرن کی سبھی نقل کرنے لگے۔ سال 1995 میں شاہ رخ خان کو یش چوپڑا کی ہی فلم 'دل والے دلهنيا لے جائیں گے' میں کام کرنے کا موقع ملا جو ان کے فلمی کیریئر کے لئے سنگ میل ثابت ہوئی۔ سال 1999 میں شاہ رخ خان نے ہدایت کاری میں بھی قدم رکھا اور اداکارہ جوہی چاولہ کے ساتھ مل کر 'ڈریمز ان لمیٹیڈ' بینر قائم کی۔ اس بینر کے تحت سب سے پہلے شاہ رخ خان نے 'پھر بھی دل ہے ہندوستانی' بنائی ۔ بدقسمتی سے بہترین اسکرپٹ اور اداکاری کے بعد بھی فلم ہٹ نہیں ہوئی۔ بعد میں اسی بینر میں تلے شاہ رخ خان نے 'اشوکا' بنائی لیکن یہ بھی ناظرین کو پسند نہیں آئی۔ اگرچہ ان کی تیسری فلم 'چلتے چلتے' سپر ہٹ ثابت ہوئی۔


سال 2004 میں شاہ رخ خان نے 'ریڈ چلی انٹرٹینمنٹ' کمپنی کے بینر میں 'میں ہوں نا' بنائی کیا جو سپر ہٹ ثابت ہوئی۔ بعد میں اسی بینر کے تحت انہوں نے نے 'پہیلی'، 'کال'، 'اوم شانتی اوم'، 'بلو باربر' اور 'چنئی ایکسپریس' جیسی فلموں کی بھی ہدایت کی ۔ سال 2007 شاہ رخ خان کے کیریئر کا اہم موڑ ثابت ہوا جب لندن کے مشہور میوزیم 'میڈم تساد' میں ان کی موم کی مورتی لگائی گئی۔ اسی سال شاہ رخ خان نے ایک بار پھر چھوٹے پردے کی طرف رخ کیا اور اسٹار پلس کے مشہور شو 'کون بنے گا کروڑ پتی' کے تیسرے سیزن میں میزبان کا کردار ادا کیا۔


شاہ رخ خان اپنے فلمی کیریئر میں آٹھ بار بہترین اداکار کے فلم فیئر ایوارڈ سے نوازے جا چکے ہیں۔ شاہ رخ خان کے فلمی کیریئر میں ان کی جوڑی اداکارہ کاجول کے ساتھ لوگوں نے خوب پسند کی۔ اپنی محنت اور لگن کے دم پر شاہ رخ خان دیگر اداکاروں سے کافی دور نکل چکے ہیں اور آج کسی فلم میں ان کا ہونا ہی کامیابی کی ضمانت سمجھا جاتا ہے۔ابھی حال ہی میں شاہ رخ کی فلم 'ہیپی نیو ایئر' ریلیز ہوئی ہے۔ فلم نے 200 کروڑ روپے سے زیادہ کی کمائی کی ۔ شاہ رخ کی آنے والی فلموں میں 'دلوالے'، 'فین' اور 'رئیس' شامل ہیں۔



سالگرہ 02 نومبر کے موقع پر

First published: Nov 02, 2015 09:04 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading