உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Siddharth Shukla's Last Song:ریلیز ہوا سدھارتھ شکلا کا آخری گانا’جینا ضروری ہے‘، وشال کوٹین کے ساتھ آئے نظر

    سدھارتھ شکلا کا آخری گانا کردیا گیا ریلیز۔

    سدھارتھ شکلا کا آخری گانا کردیا گیا ریلیز۔

    Siddharth Shukla's Last Song: 'بگ باس' میں سدھارتھ کے کام نے انہیں ایک بہت بڑی فین فالوونگ فراہم کی۔ 'بگ باس 13' کے بعد شہناز گل کے ساتھ ان کی کیمسٹری کو مداحوں نے خوب پسند کیا۔

    • Share this:
      Siddharth Shukla's Last Song: اداکار سدھارتھ شکلا کی المناک موت کو تقریباً ایک سال ہو گیا ہے۔ 'جینا زروری ہے' گانے کے ریلیز کے ساتھ ہی مداح اپنے پسندیدہ سدھارتھ کو آخری بار دیکھیں گے۔ 'بگ باس 15' کے مدمقابل وشال کوٹیان، اس گانے کا حصہ ہیں۔

      اداکار وشال کوٹن نے سریش بھانوشالی اور فوٹوفٹ میوزک کے ساتھ سانگ 'جینا زروری ہے' کے آغاز کے ساتھ آنجہانی اداکار سدھارتھ شکلا کو خراج عقیدت پیش کیا۔ اس گانے میں سدھارتھ شکلا، وشال کوٹیان کے ساتھ دیپیکا ترپاٹھی ہیں۔ گانے کی شوٹنگ اوڈیشہ میں کی گئی ہے۔ 'جینا ضروری ہے' یوٹیوب پر ریلیز کر دیا گیا ہے۔

      سدھارتھ شکلا کو یاد کرکے جذباتی ہوئی وشال
      سدھارتھ کے ساتھ آخری بار کام کرنے والے وشال بھی انہیں یاد کر کے جذباتی ہو گئے۔ انہوں نے کہا، "اس ویڈیو میں سدھارتھ صرف میرے لیے شریک اداکار ہی نہیں تھے، وہ دو دہائیوں سے میرے قریبی دوست تھے۔ 'جینا ضروری ہے' ایک خوبصورت محبت کی کہانی ہے جہاں سدھارتھ اور میں اس گانے میں بھائیوں کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ ہم نے یہ گانا 2019 میں شوٹ کیاتھا۔



      انہوں نے کہا، "سدھارتھ 'بگ باس' میں گئے تھے اور پروڈیوسر کو اسے گھر سے باہر آنے کے بعد ریلیز کرنا تھا، لیکن پھر کووڈ آیا اور پھر ریلیز رک گئی۔ جب ہم ریلیز کی تاریخ تلاش کر رہے تھے، تو ہمیں سدھارتھ بھائی کی موت کا افسوسناک واقعہ سننے کو ملا۔ میں بے حس ہو گیا، یقین بھی نہیں آرہا تھا کہ ایسا ہوا ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Aashram 3: بابا نرالہ کے ساتھ بولڈ سین دینے والی ایشا گپتا نے اب فوٹوشوٹ میں پار کردی حد

      یہ بھی پڑھیں:
      آشرم3 کے بعد آدیتی پوہنکر کی ویب سیریز SHE کے دوسرے سیزن کا اعلان

      'بگ باس' میں سدھارتھ کے کام نے انہیں ایک بہت بڑی فین فالوونگ فراہم کی۔ 'بگ باس 13' کے بعد شہناز گل کے ساتھ ان کی کیمسٹری کو مداحوں نے خوب پسند کیا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: