உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دیویابھارتی کی اچانک موت کے بعد Ladlaمیں کاسٹ کی گئی سری دیوی تو سیٹ پرہونے لگا عجیب وغریب

    دیویہ بھارتی اور سری دیوی۔

    دیویہ بھارتی اور سری دیوی۔

    فلم میں انیل کپور اور سری دیوی کی جوڑی بھی لوگوں کو خوب پسند آئی۔ اس کے علاوہ دونوں نے مسٹر انڈیا، جدائی، لمحے اور روپ کی رانی چوروں کا راجا جیسی فلمیں بھی کیں۔

    • Share this:
      انیل کپور، سری دیوی اور روینہ ٹنڈن کی سپرہٹ فلم لاڈلہ تقریباً 28 سال قبل ریلیز ہوئی تھی۔ 1994 میں ریلیز ہونے والی اس فلم کو اس سال 28 سال مکمل ہونے کے بعد بھی لوگ بہت پسند کرتے ہیں۔ یوں تو فلم میں روینہ، انیل اور سری دیوی لیڈ کاسٹ میں تھے لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ سری دیوی سے پہلے آنجہانی اداکارہ دویا بھارتی یہ کردار کر رہی تھیں لیکن ان کے اچانک انتقال کے بعد سری دیوی کو شیتل جیٹلی کا کردار آفر کیا گیا۔ جو انہوں نے بخوبی ادا کیا۔

      میڈیا رپورٹس کے مطابق دیویا بھارتی کی موت کے بعد جب سری دیوی نے اس فلم کی شوٹنگ شروع کی تو ان کے ساتھ کچھ عجیب و غریب چیزیں ہوئیں۔ جیسا کہ اسی جگہ پر انہی لائنس پر اٹک جانا جہاں دیویا بھارتی اٹک جاتی تھیں۔ جب بار بار ایسا ہونے لگا تو سیٹ پر موجود لوگ کچھ پریشان ہو گئے۔ بالآخر فیصلہ ہوا کہ گایتری منتر کا جاپ کیا جائے اور سیٹ پر خصوصی پوجا کی جائے اور ایسا ہی ہوا۔ پھر سارے کام چھوڑ کر پہلے پوجا کی گئی، گایتری منتر کا جاپ کیا گیا۔ اس کے بعد فلم کی شوٹنگ شروع ہوئی اور فلم تیار ہوگئی۔

      یہ بھی پڑھیں:
      SRK Film Dunki:شاہ رُخ خان نے اپنی اگلی فلم کا کیا اعلان، نام اور ریلیز کی بتائی تاریخ

      کہا جاتا ہے کہ وہ دیویا بھارتی کی موت سے پہلے ہی یہ فلم سائن کر چکی تھیں اور اپنے حصے کی تقریباً 80 فیصد شوٹنگ مکمل کر چکی تھیں۔ لیکن شاید قسمت کو کچھ اور ہی منظور تھا، اسی لیے وہ وقت سے پہلے ہی دنیا کو الوداع کہہ گئی۔ آخر کار فلم کے میکرز نے سری دیوی کو فلم میں ان کی جگہ منتخب کیا اور سری دیوی کے اس کردار کو خوب سراہا گیا۔

      یہ بھی پڑھیں:
      شویتا تیواری کو پلک کے دوستوں نے بتایا’HOT‘، بیٹی نے دیا کچھ ایسا ری ایکشن

      فلم میں انیل کپور اور سری دیوی کی جوڑی بھی لوگوں کو خوب پسند آئی۔ اس کے علاوہ دونوں نے مسٹر انڈیا، جدائی، لمحے اور روپ کی رانی چوروں کا راجا جیسی فلمیں بھی کیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: