اپنا ضلع منتخب کریں۔

    ’غدر2‘ کی شوٹنگ سیٹ پر جمع ہوئی بھیڑ،سنی دیول کو دیکھنے کے لیے پاگل ہوئی پبلک

    ’غدر2‘ کی شوٹنگ سیٹ پر جمع ہوئی بھیڑ،سنی دیول کو دیکھنے کے لیے پاگل ہوئی پبلک

    ’غدر2‘ کی شوٹنگ سیٹ پر جمع ہوئی بھیڑ،سنی دیول کو دیکھنے کے لیے پاگل ہوئی پبلک

    غدر ہندی سینما کی سب سے زیادہ دیکھی گئی سوپر ہٹ فلموں میں سے ایک ہے۔ فلم کے گانے اور ڈائیلاگ آج بھی لوگوں کی زبان پر ہیں۔ ان دنوں غدر 2 کی شوٹنگ زوروں پر چل رہی ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Mumbai, India
    • Share this:
      بالی ووڈ ایکٹر سنی دیول ان دنوں اپنے بلاک بسٹر فلم غدر کے سیکوئیل کی شوٹنگ میں مصروف ہیں۔ غدر ہندی سینما کی سب سے زیادہ دیکھی گئی سوپر ہٹ فلموں میں سے ایک ہے۔ فلم کے گانے اور ڈائیلاگ آج بھی لوگوں کی زبان پر ہیں۔ ان دنوں غدر 2 کی شوٹنگ زوروں پر چل رہی ہے اور شائقین میں بھی اس کو لے کر کافی جوش ہے۔

      صبح 4 بجے شوٹنگ دیکھنے پہنچے فینس
      فلم ڈائریکٹر انیل شرما ہی غدر2 کو بھی ڈائریکٹ کررہے ہیں۔ قریب 21 سال بعد فلم کا سیکوئیل آرہا ہے جس کو لے کر پبلک میں کریز بنا ہوا ہے۔ فلم کو لے کر جانکاری سامنے آئی ہے کہ غدر 2 کی شوٹنگ سیٹ پر بھاری بھیڑ جمع ہورہی ہے۔ سنی دیول اور امیشا پٹیل کے فینس شوٹنگ دیکھنے صبح 4 بجے سے سیٹ پر پہنچ رہے ہیں۔ فلم کو لے کر شائقین کی دیوانگی بڑھتی ہی جارہی ہے۔



       




      View this post on Instagram





       

      A post shared by Anilsharma (@anilsharma_dir)





      یہ بھی پڑھیں:

      جب شادی شدہ وکرم بھٹ کے ساتھ ریلیشن شپ پر سشمیتا نے کہا تھا-’مجھے کوئی پچھتاوا نہیں

      یہ بھی پڑھیں:
      اس فلم سے انڈسٹری میں قدم رکھنے جارہے ہیں آرین خان، ڈیڈی شاہ رخ خان نے دیامزیدار ری ایکشن

      اٹھلاتی اداؤں سے پلک تیواری نے جیتا دل، ہوش اڑا دے گا یہ نیا ویڈیو

      ڈائریکٹر نے شیئر کیا ویڈیو
      فلم ڈائریکٹر انیل شرما نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو شیئر کیا ہے، جس میں غدر 2 کی شوٹنگ دیکھنے پہنچی فینس کی بھیڑ نظر آرہی ہے۔ یہ سبھی لوگ صبح 4 بجے سے شوٹنگ سیٹ پر پہنچ گئے تھے۔ اتنی بھیڑ کو دیکھ کر ڈائریکٹر اور اسٹارس سب حیران رہ گئے۔ پھر انیل شرما نے اپنے انسٹاگرام اکاونٹ پر یہ ویڈیو شیئر کردیا۔ ویڈیو کے بیک گراونڈ پر غدر فلم کا گانا مسافر جانے والے بج رہا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: