உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سشانت سنگھ راجپوت معاملہ: سی بی آئی نے امریکہ سے مانگی مدد، کھنگالی جائیں گی اداکار کی ڈیلیٹ ہوئی چیٹس

    سشانت سنگھ معاملہ: سی بی آئی نے امریکہ سے مانگی مدد

    سشانت سنگھ معاملہ: سی بی آئی نے امریکہ سے مانگی مدد

    Sushant Singh Rajput Case: سشانت سنگھ راجپوت گزشتہ سال ممبئی کے باندرہ واقع اپنے اپارٹمنٹ میں مردہ پائے گئے تھے۔ ان کے والد کے کے سنگھ نے پٹنہ پولیس میں ریا چکرورتی، ان کے والدین اور بھائی شووک کے خلاف 24 جون کو شکایت درج کرائی تھی۔ سپریم کورٹ کے حکم پر سی بی آئی نے اگست 2020 میں معاملے کی جانچ شروع کی تھی۔

    • Share this:
      ممبئی: اداکار سشانت سنگھ راجپوت (Sushant Singh Rajput) کی موت کے معاملے کی جانچ کر رہی سی بی آئی (CBI) نے امریکہ سے مدد مانگی ہے۔ جانچ ایجنسی نے امریکی کمپنیوں سے سشانت سنگھ راجپوت کے ای میل اور سوشل میڈیا اکاونٹ (Social Media) کی ڈیلیٹ کی ہوئی جانکاری حاصل کرنے میں تعاون مانگا ہے۔ معاملے کی ہر اینگل سے جانچ کر رہی ایجنسی گزشتہ ریکارڈ بھی کھنگالنا چاہتی ہے، تاکہ خودکشی سے متعلق کسی پرانے کنکشن کا پتہ لگایا جاسکے۔

      ہندوستان ٹائمس کی رپورٹ کے مطابق، سی بی آئی نے گوگل اور فیس بک سے یہ جانکاری MLAT یعنی میوچوئل لیگل اسسٹنس ٹریٹی کے تحت مانگی ہے۔ اس میں ڈیلیٹ کی ہوئی چیٹس، ای میل یا اداکار کی طرف سے کی گئی پوسٹ شامل ہیں۔ MLAT کے ذریعہ دونوں ملک گھریلو جانچ میں جانکاری حاصل کر سکتے ہیں۔ MLAT کے تحت ہندوستان میں جانکاری شیئر کرنے کا اختیار وزارت داخلہ کے پاس ہے۔ جبکہ امریکہ میں یہ کام اٹارنی جنرل کے دفتر سے ہوتا ہے۔

      سشانت سنگھ راجپوت گزشتہ سال ممبئی کے باندرہ واقع اپنے اپارٹمنٹ میں مردہ پائے گئے تھے۔
      سشانت سنگھ راجپوت گزشتہ سال ممبئی کے باندرہ واقع اپنے اپارٹمنٹ میں مردہ پائے گئے تھے۔


      رپورٹ میں ایک افسر کے حوالے سے بتایا گیا، ’ہم کیس کو آخری شکل دینے سے پہلے کوئی بھی کسر نہیں چھوڑنا چاہتے ہیں۔ ہم جاننا چاہتے ہیں کہ کیا ایسی کوئی خاص چیٹس یا پوسٹ تھی، جو معاملے میں مددگار ہوسکتی ہیں‘۔ جانچ ایجنسی نے گزشتہ سال ہی بیان کے ذریعہ بتایا تھا کہ وہ معاملے کی جانچ ہر اینگل سے کر رہی ہے۔ ان میں ریا چکرورتی پر لگے خودکشی کے لئے اکسانے کے الزامات، دباو کے سبب اداکار کی طرف سے اٹھائے گئے خودکشی کے قدم شامل ہیں۔

      سشانت سنگھ راجپوت کی فیملی کے وکیل وکاس سنگھ سی بی آئی کے اس قدم کی حمایت کرتے ہیں۔ وہ کہتے ہیں، ’میں حیران نہیں ہوں، کیونکہ (سی بی آئی) کیس کو آخری شکل دینے سے پہلے گہرائی سے جانچ کرنا چاہتے ہیں۔ چشم دید گواہ یا کیمرہ فوٹیج نہیں ہونے جیسی سشانت سنگھ کی موت کے معاملے میں کافی پیچیدگی ہے اور مجھے لگتا ہے کہ سی بی آئی صحیح لیڈ حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے‘۔

      جانچ ایجنسی نے امریکی کمپنیوں سے سشانت سنگھ راجپوت کے ای میل اور سوشل میڈیا اکاونٹ کی ڈیلیٹ کی ہوئی جانکاری حاصل کرنے میں تعاون مانگا ہے۔
      جانچ ایجنسی نے امریکی کمپنیوں سے سشانت سنگھ راجپوت کے ای میل اور سوشل میڈیا اکاونٹ کی ڈیلیٹ کی ہوئی جانکاری حاصل کرنے میں تعاون مانگا ہے۔


      واضح رہے کہ سشانت سنگھ راجپوت گزشتہ سال ممبئی کے باندرہ واقع اپنے اپارٹمنٹ میں مردہ پائے گئے تھے۔ ان کے والد کے کے سنگھ نے پٹنہ پولیس میں ریا چکرورتی، ان کے والدین اور بھائی شووک کے خلاف 24 جون کو شکایت درج کرائی تھی۔ سپریم کورٹ کے حکم پر سی بی آئی نے اگست 2020 میں معاملے کی جانچ شروع کی تھی۔ سی بی آئی کے علاوہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) اور نارکوٹکس کنٹرول بیورو (این سی بی) بھی معاملے کی جانچ کر رہی ہیں۔ ستمبر 2020 میں آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز نے اداکار کی موت کو خود کشی بتایا تھا۔ وہیں ابتدائی جانچ کرنے والی ممبئی پولیس نے بھی کسی بھی گڑبڑی سے انکار کیا تھا۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: