ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

Sushant Singh Rajput کے جسم پر ملے نشان، سدھارتھ پٹھانی پر وکاس سنگھ کا حیران کرنےکا دعویٰ، سی بی آئی اور این سی بی سے پوچھے سوال

سشانت سنگھ راجپوت (Sushant Singh Rajput) کے فیملی کے وکیل وکاس سنگھ (Vikas Singh) نے پریس کانفرنس کی۔ وکاس سنگھ نے پریس کانفرنس کے دوران نہ صرف سی بی آئی اور این سی بی کی جانچ پر سوال اٹھائے۔ بلکہ اس معاملے سے جڑے کئی اور حیران کرنے والے دعوے کئے ہیں۔

  • Share this:
Sushant Singh Rajput کے جسم پر ملے نشان، سدھارتھ پٹھانی پر وکاس سنگھ کا حیران کرنےکا دعویٰ، سی بی آئی اور این سی بی سے پوچھے سوال
سشانت سنگھ راجپوت کے جسم پر ملے نشان، سدھارتھ پٹھانی پر وکاس سنگھ کا حیران کرنےکا دعویٰ

ممبئی: بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت (Sushant Singh Rajput) معاملے میں سی بی آئی (CBI),، ای ڈی اور این سی بی (NCB) تین بڑی ایجنسیاں قانونی جانچ میں مصروف ہیں۔ آئے دن اس معاملے سے جڑے کئی انکشاف ہو رہے ہیں۔ وہیں ان دنوں اس معاملے کے ذریعہ سے ڈرگس کے معاملے میں کئی بڑے بالی ووڈ (Bollywood) شخصیات بھی پھنس گئے ہیں۔ حالانکہ اس پوری جانچ اور اسی سمت سے سشانت سنگھ راجپوت کی فیملی متفق نہیں ہے۔ یہی ظاہر کرنے کے لئے جمعہ کی شام سشانت سنگھ راجپوت کے فیملی کے وکیل وکاس سنگھ (Vikas Singh) نے پریس کانفرنس کی۔ وکاس سنگھ نے پریس کانفرنس کے دوران نہ صرف سی بی آئی اور این سی بی کی جانچ پر سوال اٹھائے۔ بلکہ اس معاملے سے جڑے کئی اور حیران کرنے والے دعوے کئے ہیں۔


وکاس سنگھ کا کہنا ہے کہ سی بی آئی اور این سی بی اس معاملے میں سستی برت رہی ہے، اس سے ہم فکر مند ہیں۔ وہیں انہوں نے یہ بھی کہہ ڈالا ہے کہ جس طرح ممبئی پولیس پریڈ کروا رہی تھی، اسی طرح سی بی آئی اور این سی بی بھی پریڈ کروا رہی ہے، جو سشانت سنگھ راجپوت کا موضوع تھا، اسے لے کر صحیح کوششیں نہیں ہو رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ’اگر ہمیں آج کے بعد بھی لگے گا کہ اس کیس کو صحیح سمت نہیں مل رہی ہے تو ہم عدالت میں بھی جائیں گے اور اس پر صحیح جانچ کی بات کریں گے’۔


AIIMS کی ٹیم سے کیوں نہیں ملی سی بی آئی؟


انہوں نے سشانت سنگھ راجپوت کی جسم پر ملے نشانات کو لے کر کہا- ’سشانت سنگھ کو لگتا ہے کہ سی بی آئی نے اچانک اس کیس میں جانچ کی رفتار سست کردی ہے۔ فیملی کو ایسا اس لئے لگ رہا ہے کیونکہ اتنے لمبے سے جانچ کرنے والی سی بی آئی کو ابھی تک AIIMS کی ٹیم سے ملنے کا موقع نہیں ملا ہے۔ AIIMS کے ایک ڈاکٹر کو میں نے سشانت سنگھ کی تصویر دکھائی تھی۔ انہوں نے سشانت سنگھ کے جسم پر چوٹ کے نشان دیکھ کر کہا تھا کہ یہ 200 فیصد قتل ہی ہے’۔ انہوں نے کہا- ’میں نہیں کہہ رہا ہوں کہ یہ قتل ہے، لیکن اگر یہ واقعی قتل ہے اور سی بی آئی AIIMS کی ٹیم سے بات کرتی تو شاید انویسٹی گیشن کی سمت ہی بدل جاتی’۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Sep 25, 2020 11:02 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading