ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

سشانت سنگھ راجپوت خودکشی معاملہ: ڈپریشن سے می ٹو تک، 9 گھنٹے کی پوچھ گچھ میں سنجنا سانگھی نے کھولے کئی راز

سنجنا سانگھی نے پولیس کو بتایا کہ جس دوران سشانت پر میرے نام سے کسی نے می ٹو کے الزام لگائے، اس دوران میں اپنی ماں کے ساتھ امریکہ گھومنے گئی تھی۔

  • Share this:
سشانت سنگھ راجپوت خودکشی معاملہ: ڈپریشن سے می ٹو تک، 9 گھنٹے کی پوچھ گچھ میں سنجنا سانگھی نے کھولے کئی راز
سشانت سنگھ راجپوت کے ساتھ ان کی آخری فلم میں کام کر چکیں سنجنا منگل کو باندرا پولیس اسٹیشن پہنچیں

ممبئی۔ بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت خودکشی معاملہ (Sushant Singh Rajput Suicide Case) میں جہاں ان کے مداح اور کچھ سلیبس سی بی آئی جانچ کی مانگ کر رہے ہیں، وہیں پولیس اس معاملہ کو سلجھانے کی کوشش میں مسلسل لگی ہوئی ہے۔ 34 سال کی عمر میں سشانت نے یہ قدم کیوں اٹھایا، اس گتھی کو سلجھانے کے لئے باندرا پولیس مسلسل ان کے قریبیوں سے بھی پوچھ گچھ کر رہی ہے۔ اس معاملہ میں پولیس نے منگل (30 جون) کو سشانت کی آخری فلم ’ دل بیچارا‘ کی سرکردہ اداکارہ سنجنا سانگھی (Sanjana Sanghi) سے تقریبا نو گھنٹے تک پوچھ گچھ کی۔


سشانت سنگھ راجپوت کے ساتھ ان کی آخری فلم میں کام کر چکیں سنجنا منگل کو باندرا پولیس اسٹیشن پہنچیں۔ پولیس نے ان سے بھی طویل پوچھ گچھ کی۔ نو گھنٹے کی پوچھ گچھ میں پولیس نے سنجنا سے شوٹنگ کے دوران سشانت سنگھ راجپوت پر لگائے گئے می ٹو (Me too)  کے الزامات کے ساتھ فلم کے دوران ان کے ڈپریشن میں جانے سے منسلک کئی اہم سوال پوچھے۔


اداکارہ نے اپنے بیان میں بتایا کہ سال 2018 میں فلم کے آڈیشن کے بعد کاسٹنگ ڈائریکٹر مکیش چھابڑا نے انہیں فلم دل بیچارا کے لئے منتخب کیا تھا۔ مکیش چھابڑا ہی اس فلم کے ڈائریکٹر بھی ہیں۔ سنجنا نے کہا کہ مجھے بعد میں معلوم ہوا کہ میں اس فلم میں سشانت سنگھ راجپوت کے مقابلے سرکردہ رول میں ہوں۔ انہوں نے کہا کہ فلم کے سیٹ پر دونوں پہلی بار ملے تھے۔


سنجنا نے پولیس کو بتایا کہ انہوں نے سشانت پر کبھی بھی می ٹو کا الزام نہیں لگایا تھا اور نہ ہی کبھی ان کے ساتھ اس طرح کا کوئی واقعہ ہوا تھا۔ سال 2018 میں جب می ٹو مہم چل رہی تھی، تب اس وقت کسی نے یہ افواہ اڑا دی تھی کہ سشانت نے مجھے غلط طریقے سے چھوا ہے اور میں نے یہ الزام لگایا، جو غلط تھا۔ میں نے ایسا کبھی نہیں کیا تھا۔

سنجنا سانگھی نے پولیس کو بتایا کہ جس دوران سشانت پر میرے نام سے کسی نے می ٹو کے الزام لگائے، اس دوران میں اپنی ماں کے ساتھ امریکہ گھومنے گئی تھی۔ مجھے ان باتوں کی کوئی جانکاری نہیں تھی۔ انہوں نے بتایا کہ مجھے بالکل پتہ ہی نہیں تھا کہ میرے نام سے سوشل میڈیا، اخبار اور ٹیلی ویژن پر ایسے ہو رہا ہے۔ واپس لوٹنے پر مجھے یہ سارا علم ہوا۔


می ٹو کے الزام سے ڈپریشن میں آ گئے تھے سشانت

سنجنا نے آگے بتایا کہ ہندستان واپس آنے کے بعد انہوں نے مکیش چھابڑا اور سشانت دونوں سے ملاقات کی تھی۔ سشانت اس واقعہ کے بعد سے ڈپریشن میں آ گئے تھے۔ سشانت نے سنجنا سے بات چیت میں اس بات کا ذکر کیا تھا کہ می ٹو مہم کے بہانے انہیں کیسے بدنام کرنے کی سازش رچی گئی تھی اور کس طرح سے انہیں ٹرول کیا جا رہا تھا۔
First published: Jul 01, 2020 11:36 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading