ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

الوداع: کل ادا کی جائے گی سشانت سنگھ راجپوت کی آخری رسوم، بہار سے والد سمیت 4 لوگ جائیں گے ممبئی

بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی پیر کو ممبئی میں آخری رسوم ادا کی جائے گی، جس میں پٹنہ سے ان کے والد کے کے سنگھ اور چچا زاد بھائی اور سپول سے بی جے پی کے رکن اسمبلی نیرج کمار ببلو کے ساتھ دو دیگر صبح 11.20 بجے کی فلائٹ سے ممبئی جائیں گے۔

  • Share this:
الوداع: کل ادا کی جائے گی سشانت سنگھ راجپوت کی آخری رسوم، بہار سے والد سمیت 4 لوگ جائیں گے ممبئی
سشانت سنگھ راجپوت کی وفات کے بعد پولیس کی پوچھ۔گچھ جاری ہے۔ حال ہی میں اس پوچھ۔گچھ میں سشانت کے ہاؤس ہیلپر نے چونکانے والا انکشاف کیا ہے۔ پنک ولا کی ایک رپقرٹ میں انڈیا ٹی وی کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ ہاؤس ہیلپ نے انکشاف کیا کہ سشانت گزشتہ 10 دنوں سے کافی دکھی تھے۔ وہیں تین دن سے وہ بالکل ٹھیک نہیں تھے وہ کسی سے بھی بات نہیں کررہے تھے۔

پٹنہ: بہار کے رہنے والے بالی ووڈ فلم اسٹار سشانت سنگھ راجپوت (Sushant SIngh Rajput) نے آج ممبئی میں خود کشی کرلی۔ اس خبر سے نہ صرف ان کے چاہنے والے بلکہ بالی ووڈ اور سیاست کے لوگ بھی حیران ہیں۔ جبکہ ممبئی میں کل سشانت سنگھ راجپوت کی  آخری رسوم ادا کی جائیں گی۔ یہ اطلاع سشانت سنگھ کے فیملی فرینڈ نشانت جین نے دی ہے۔ یہی نہیں، سشانت سنگھ راجپوت کے آخری رسوم میں شامل ہونے کے لئے پیر کو 11.20 کی فلائٹ ان کے والد، رکن اسمبلی نیرج ببلو سمیت دو دیگر اراکین ممبئی جائیں گے۔


کل صبح 11.20 بجے کی فلائٹ سے جائیں گے ممبئی


بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت کی پیر کو ممبئی میں آخری رسوم ادا کی جائے گی، جس میں پٹنہ سے ان کے والد کے کے سنگھ اور چچا زاد بھائی اور سپول سے بی جے پی کے رکن اسمبلی نیرج کمار ببلو کے ساتھ دو دیگر صبح 11.20 بجے کی فلائٹ سے ممبئی جائیں گے۔ آپ کو بتا دیں کہ سشانت سنگھ کی ماں کا انتقال 2002 میں ہوگیا تھا۔ اس کے علاوہ ان کی چار بہنیں ہیں، جس میں سے ایک میتو سنگھ ریاستی سطح کی کرکٹ کھلاڑی ہیں۔


سشانت سنگھ کی پرورش پٹنہ میں ہوئی

کائی پوچے، ایم ایس دھونی، کیدارناتھ جیسی کئی فلموں سے بالی ووڈ میں اپنی شناخت بنانے والے سشانت سنگھ راجپوت کا بہار سے گہرا لگاو رہا ہے۔ ان کی پیدائش بہار کے پٹنہ میں ہوئی تھی۔ یہیں پر ان کی ابتدائی تعلیم بھی ہوئی۔ اس کے علاوہ کھگڑیا میں واقع ننہال سے بھی ان کی یادیں جڑی ہوئی ہیں۔ اس لئے سشانت سنگھ راجپوت کی موت کی خبر نے آج بہار کے لوگوں کا دل دکھی کردیا۔ سشانت سنگھ راجپوت نے اپنی ابتدائی تعلیم پٹنہ کے سینٹ کیرینس اسکول میں حاصل کی تھی۔ اعلیٰ تعلیم کے لئے بعد میں سشانت دہلی شفٹ ہوگئے، لیکن آج بھی ان کی فیملی پٹنہ میں رہتی ہے۔ ویسے سشانت سنگھ راجپوت بنیادی طور پر پورنیہ ضلع کے رہنے والے تھے۔ یہی نہیں، سشانت سنگھ راجپوت کے رشتے میں بھی نیرج کمار ببلو سپول سے بی جے پی کے رکن اسمبلی ہیں۔

سشانت سنگھ راجپوت کے آخری رسوم میں شامل ہونے کے لئے پیر کو 11.20 کی فلائٹ ان کے والد، رکن اسمبلی نیرج ببلو سمیت دو دیگر اراکین ممبئی جائیں گے۔
سشانت سنگھ راجپوت کے آخری رسوم میں شامل ہونے کے لئے پیر کو 11.20 کی فلائٹ ان کے والد، رکن اسمبلی نیرج ببلو سمیت دو دیگر اراکین ممبئی جائیں گے۔


سشانت سنگھ راجپوت نے خودکشی کرلی

اس سے قبل بالی ووڈ اداکار سشانت سنگھ راجپوت (bollywoord actor Sushant Singh Rajput) نے خود کشی کرلی ہے۔ ممبئی کے باندرہ واقع فلیٹ میں ان کی لاش ملی ہے۔ ابھی تک ان کی خود کشی کی وج ہکا پتہ نہیں چلا ہے۔ میڈیا رپورٹس میں بتایا جارہا ہے کہ ان کے نوکر نے ان کی لاش کو پنکھے سے لٹکتے ہوئے دیکھا اور پولیس کو اس کی اطلاع دی ہے۔ سشانت سنگھ راجپوت کے اچانک دنیا سے چلے جانے کی اچانک آئی اس حیران کرنے والی خبر سے ہر کوئی صدمے میں ہے۔ ان کی موت پر کسی کو یقین ہی نہیں ہو رہا ہے۔ سشانت سنگھ راجپوت کی عمر محض 34 سال تھی، وہیں اتنی عمر میں آخر ایسا کیا ہوا جو انہوں نے خود کشی جیسا قدم اٹھا لیا۔

بریک اپ کی وجہ سے ٹوٹ گئے تھے سشانت سنگھ

سشانت سنگھ راجپوت صرف اپنی فلموں میں ہی نہیں بلکہ ذاتی زندگی کی وجہ سے بھی سرخیوں میں بنے رہتے تھے۔ اداکارہ انکتا لوکھنڈے سے ان کے بریک اپ نے سب سے زیادہ سرخیاں بٹوری تھیں۔ اس بریک کے بعد جہاں انکتا لوکھنڈے بے حد مایوس ہوگئی تھیں، وہیں سشانت سنگھ راجپوت بھی جیسے ٹوٹ ہی گئے تھے۔ جب دونوں ہی جب اپنی اپنی زندگیوں میں آگے بڑھ گئے۔ وہیں کئی میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا کہ انڈسٹری کے سب سے خوبصورت جوڑے کا بریک اپ آخر ہوا کیوں تھا۔ سشانت سنگھ راجپوت اور انکتا کا جب بریک اپ ہوا تب طرح طرح کی خبریں اڑی تھیں۔ ان خبروں پر خود سشانت نے جواب دیتےہوئے کہا تھا کہ ’نا تو انکتا شرابی ہیں اور نا ہی میں عورت بنانے والا ہوں’۔ بریک اپ کی وجہ بتاتے ہوئے انہوں نے کہا تھا کہ ’لوگ بس ایک دوسرے سے دور ہوجاتے ہیں... اور یہ بے حد بدقسمتی والا ہے۔
First published: Jun 14, 2020 09:56 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading