உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Swara Bhaskar:بُلی بائی کیس میں ملزمین کو ضمانت ملنے پر بھڑک گئیں سورا بھاسکر، صدیق کپپن کا ذکر کرکے کہی یہ بڑی بات

    بلی بائی ملزمین کو ضمانت دینے کے بعد سورا بھاسکر  کا پھوٹا  عدلیہ پر غصہ!

    بلی بائی ملزمین کو ضمانت دینے کے بعد سورا بھاسکر کا پھوٹا عدلیہ پر غصہ!

    بُلّی بائی کے تحت ماضی میں کافی ہلچل مچی تھی۔ جس کے بعد پولس نے گھنٹوں کی کارروائی کے بعد اس متنازع ایپ کو بنانے والے نامزد ملزم نیرج بشنوئی سمیت 6 لوگوں کو حراست میں لے لیا تھا۔ اب ان میں سے 3 ملزمان کو ضمانت مل گئی ہے۔

    • Share this:
      Swara Bhaskar: اپنے بے باک بیانوں کے لئے مشہور بالی ووڈ کی مشہور اداکارہ سوارا بھاسکر (Swara Bhaskar)ملک میں جاری کسی بھی معاملے پر اپنی رائے دینے سے پیچھے نہیں رہتیں۔ سوشل میڈیا پر بہت زیادہ وقت گزارنے والی سورا نے حال ہی میں بُلی بائی کیس میں ملزم کو دی گئی ضمانت پر غصہ ظاہر کیا ہے۔ سوارا بھاسکر نے بھی اس معاملے کو لے کر عدلیہ پر کئی سوالات اٹھائے ہیں۔ جس کے تحت انہوں نے صدیق کپن کا بھی ذکر کیا ہے جو سخت گیر گروپ پاپولر فرنٹ آف انڈیا میں شمولیت کے الزام میں جیل میں ہیں۔

      سورا بھاسکر نے اٹھائے سوال
      بتادیں کہ بُلّی بائی کے تحت ماضی میں کافی ہلچل مچی تھی۔ جس کے بعد پولس نے گھنٹوں کی کارروائی کے بعد اس متنازع ایپ کو بنانے والے نامزد ملزم نیرج بشنوئی سمیت 6 لوگوں کو حراست میں لے لیا تھا۔ اب ان میں سے 3 ملزمان کو ضمانت مل گئی ہے۔ بالی ووڈ اداکارہ سوارا بھاسکر اس معاملے پر برہم ہوگئیں اور انہوں نے عدلیہ کو نشانہ بنایا۔ سوارا بھاسکر نے اپنے آفیشل ٹویٹر ہینڈل پر ٹویٹ کیا اور لکھا کہ 'صدیق کپن اور بہت سے دوسرے صرف اس لیے جیل میں ہیں کیونکہ وہ چلتی ٹرین میں سوار ہوئے تھے۔ ہاں اب ان ملزمان کو جیل سے ضرور باہر نکال دو۔‘



      یہ بھی پڑھیں:
      وکی کوشل کے بھائی کی Girl Friend ہے بے حد خوبصورت، اس سابقCMسے ہے گہرا رشتہ

      یہ بھی پڑھیں:
      پہلی بار پاپا کے ساتھ اسکرین شیئر کرتی نظر آئیں گی Janhvi Kapoor،بونی کپور کریں گے ایکٹنگ

      سوشل میڈیا پر سوارا کو ملے ایسے ردعمل
      بلی بائی کیس کے ملزمین کو ضمانت ملنے کے بعد سوارا بھاسکر کے اس ری ایکشن پر سوشل میڈی اپر فینس کی الگ الگ ری ایکشن سامنے آرہی ہیں۔ جس کے تحت ایک ٹوئٹر یوزر نے سوارا کے ٹوئٹ پر کمنٹ کر کے لکھا ہے کہ ’اب کس پر نشانہ لگارہی ہو۔ یہ ضمانت مودی نے نہیں دی ہے بلکہ عدالت کی طرف سے ملی ہے۔‘
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: