உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Prophet Muhammadکو لے کر جاری تنازعہ پر فلم میکر نے دیا یہ بڑا بیان،کہا’بھکتوں کو کردینا چاہیے پٹرول کا بائیکاٹ‘!

    بی جے پی کی سابقہ ترجمان نوپور شرما (File Photo)

    بی جے پی کی سابقہ ترجمان نوپور شرما (File Photo)

    Kamaal R Khan: کمال آر خان نے ٹوئٹ کرتے ہوئے اس کے بعد طنز کیا اور کہا کہ ’’چونکہ خلیج کے لوگ ہندوستانی مصنوعات کا بائیکاٹ کر رہے ہیں اس لیے اب بھکتوں کو تیل اور پیٹرول کا بائیکاٹ کرنا چاہیے۔‘‘

    • Share this:
      Kamaal R Khan: بی جے پی لیڈر نوپور شرما کی جانب سے پیغمبر اسلام(Prophet Muhammad) کے بارے میں دیے گئے متنازعہ ریمارکس کے بعد یہ معاملہ فی الحال سرخیوں میں ہے اور تنازعہ ختم نہیں ہوا ہے۔ نوپور شرما(Nupur Sharma) کو بھی بی جے پی نے متنازعہ بیان پر پارٹی سے نکال دیا ہے۔ لیکن خلیجی ممالک اس کے خلاف مسلسل اپنا احتجاج بھرپور طریقے سے درج کرا رہے ہیں۔ اس تنازعہ کی وجہ سے اب خلیجی ممالک میں ہندوستانی اشیاء کے بائیکاٹ کی مہم چلائی جارہی ہے۔ ایسے میں اب فلمساز کمال آر خان(Kamaal R Khan) نے اس حوالے سے ایک ٹویٹ کیا ہے۔ جس کی وجہ سے انہیں خود بھی ٹرولنگ کا سامنا کرنا پڑا۔

      کمال نے کیا یہ ٹوئٹ
      کمال خان نے ٹویٹ کیا، ’’گزشتہ 8 سالوں میں یہ پہلا موقع ہے جب بی جے پی حکومت یہ کہنے پر مجبور ہوئی ہے کہ ہم تمام مذاہب کا احترام کرتے ہیں۔ 8 سال میں پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ تمام مسلم ممالک ایک ساتھ کھڑے ہو کر ہندوستان پر تنقید کر رہے ہیں۔ 20 سال میں یہ پہلا موقع ہے جب مسلم ممالک حکومت ہند سے معافی مانگنے کو کہہ رہے ہیں۔‘‘


      کمال آر خان نے ٹوئٹ کرتے ہوئے اس کے بعد طنز کیا اور کہا کہ ’’چونکہ خلیج کے لوگ ہندوستانی مصنوعات کا بائیکاٹ کر رہے ہیں اس لیے اب بھکتوں کو تیل اور پیٹرول کا بائیکاٹ کرنا چاہیے۔‘‘


      یہ بھی پڑھیں:
      Nupur Sharma کی معافی پر رچا چڈھا کا طنز،کہا’جب جب جان بچانی تھی تو معافی ہی کام آئی‘

      یہ بھی پڑھیں:
      جبShabana Azmiکوپاسپورٹ فوٹوکے لئے ایکسپریشن دینے سے کیاگیاتھامنع،ایکٹریس نے دیاتھایہ جواب
      کیا ہے تنازعہ
      نوپور شرما نے مبینہ طور پر پیغمبر اسلام سے متعلق متنازعہ تبصرہ کیا۔ ان کے اس بیان کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اور ہنگامہ شروع ہو گیا۔ تب سے ان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا جا رہا تھا اور اسی کو دیکھتے ہوئے بی جے پی نے انہیں ان کے عہدے سے معطل کر دیا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: