உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جبSara Ali Khan نے کہی تھی اپنے ماما سے شادی کرنے کی بات، ایسا تھا والد سیف علی خان کا ری ایکشن!

    سارہ علی خان کی شادی پر رائے سے چونک گئے تھے سیف علی خان!

    سارہ علی خان کی شادی پر رائے سے چونک گئے تھے سیف علی خان!

    Sara Ali Khan On Her Marriage: اس وقت وہ سب سے زیادہ سرخیوں میں آگئیں تھیں جب انہوں نے اپنے والد سیف علی خان کے سامنے اپنے ماما سے شادی کی بات کی۔ آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ سارہ کے ماما کون ہیں اور بیٹی کے اس معاملے پر سیف علی خان نے کیا ردعمل ظاہر کیا تھا۔

    • Share this:
      Sara Ali Khan On Her Marriage: بالی ووڈ اداکارہ سارہ علی خان اکثر کسی نہ کسی وجہ سے زیر بحث رہتی ہیں لیکن اس وقت وہ سب سے زیادہ سرخیوں میں آگئیں تھیں جب انہوں نے اپنے والد سیف علی خان کے سامنے اپنے ماما سے شادی کی بات کی۔ آئیے آپ کو بتاتے ہیں کہ سارہ کے ماما کون ہیں اور بیٹی کے اس معاملے پر سیف علی خان نے کیا ردعمل ظاہر کیا تھا۔

      ’کافی وِد کرن‘ کا ہے قصہ
      یہ واقعہ بالی ووڈ فلمساز کرن جوہر کے مقبول شو 'کافی ود کرن' کے پرانے سیزن کا ہے، جہاں سارہ علی خان اپنے والد سیف علی خان کے ساتھ پہنچی تھیں۔ اس دوران کرن جوہر نے سارہ سے ان کی شادی کے بارے میں پوچھا۔ اس کا جواب دیتے ہوئے اداکارہ نے کہا تھا کہ وہ رنبیر کپور سے شادی کرنا چاہتی ہیں۔ سارہ کا یہ جواب سن کر سیف علی خان بھی تھوڑا چونک گئے تھے۔

      یہی نہیں، رنبیر کپور کے علاوہ انہوں نے کارتک آرین کا بھی نام بتایا اور کہا کہ وہ انہیں ڈیٹ کرنا چاہتی ہیں۔ اس پر سیف علی خان نے مسکراتے ہوئے کہا کہ اگر کارتک کے پاس بینک بیلنس ہے تو آپ ان کے ساتھ ڈیٹ پر جا سکتے ہیں۔ سیف کی یہ بات سن کر سارہ بھی مسکرانے لگتی ہیں۔



       




      View this post on Instagram





       

      A post shared by Star World (@starworldindia)





      یہ بھی پڑھیں:

      یہ بھی پڑھیں:
      Aishwarya Rai:کیا پریگننسی چھپانے کے لئے ایشوریہ نے پہنا ڈھیلا آؤٹ فٹ!

      اس طرح رنبیر ہیں سارہ کے ماما
      سارہ علی خان سیف علی خان کی پہلی بیوی امریتا سنگھ کی بیٹی ہیں۔ اس کے ساتھ ہی سیف نے کرینہ کپور سے دوسری شادی کی ہے، جو رشتے میں رنبیر کپور کی کزن بہن ہیں۔ اس طرح رنبیر کپور سارہ علی خان کے ماما لگتے ہیں۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: