உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Sushmita Sen Miss Universe Story :جب ایشوریہ رائے کے نام سے بری طرح ڈر گئی تھیں سشمیتا سین، مقابلے سے واپس لے لیا تھا اپنا نام

    ایشوریہ رائے اور سشمیتا سین۔

    ایشوریہ رائے اور سشمیتا سین۔

    اداکارہ نے کہا کہ جب میں 15 سال کی تھی تو بابا کا بجٹ بہت تنگ تھا۔ پھر میں نے کچھ کام کرنا شروع کر دیا جس کے لیے میرے والد نے مجھے اجازت دے دی۔ جب میں یہ کر رہی تھی تو لوگ مجھے کہنے لگے کہ مجھے ماڈلنگ کرنی چاہیے۔

    • Share this:
      Sushmita Sen Miss Universe Story :سشمیتا سین نے سال 1994 میں مس یونیورس کا تاج جیت کر ملک کا سر فخر سے بلند کیا۔ صرف 18 سال کی عمر میں سشمیتا نے وہ کمال کر دکھایا جو ہندوستان میں پہلے کبھی نہیں ہوا۔ اگرچہ اس کے بعد ہندوستان کو لارا دتہ اور ہرناز سندھو کی شکل میں مزید دو مس یونیورس مل چکی ہیں لیکن آج بھی مس یونیورس کی بات کی جائے تو سشمیتا کا نام سب سے پہلے آتا ہے۔

      سشمیتا کے مس یونیورس بننے کے بارے میں بہت سی کہانیاں ہیں جو آپ کو معلوم ہوں گی۔ لیکن آج ہم آپ کو ایک نئی کہانی سناتے ہیں جب مس یونیورس کے لیے اپلائی کرنے سے قبل سشمیتا ایشوریا کے نام سے بہت خوفزدہ تھیں اور انھوں نے مقابلے سے اپنا نام واپس لے لیا تھا لیکن اداکارہ کی اس حرکت سے ان کی والدہ ان سے بہت زیادہ ناراض ہوگئی تھیں۔ بعد میں اداکارہ کی والدہ نے انہیں ایسا سبق دیا جس نے سشمیتا کی زندگی بدل کر رکھ دی۔ سشمیتا سین نے حال ہی میں ٹوئنکل کھنہ کے شو Tweak کے دوران یہ ساری کہانی سنائی کہ کس طرح انہوں نے اس مقابلے سے اپنا نام واپس لیا اور پھر وہ بعد میں مس یونیورس کیسے بن گئیں۔

      اداکارہ نے کہا کہ جب میں 15 سال کی تھی تو بابا کا بجٹ بہت تنگ تھا۔ پھر میں نے کچھ کام کرنا شروع کر دیا جس کے لیے میرے والد نے مجھے اجازت دے دی۔ جب میں یہ کر رہی تھی تو لوگ مجھے کہنے لگے کہ مجھے ماڈلنگ کرنی چاہیے۔ ایک دن میں دوستوں کے ساتھ پارٹی کرنے کلب گئی تو گھر میں پتا نہیں تھا۔ میں نے انہیں بتایا کہ میں ایک دوست کے گھر پڑھنے جا رہی ہوں۔ اس پارٹی میں ایک شخص میرے پاس آیا اور کہا کہ تمہیں مس انڈیا میں ٹرائی کرنا چاہیے، یہ سن کر میں اپنے دوستوں کے پاس گئی اور میں نے کہا کہ یہ بندہ ڈرنک ہے، وہ پھر میرے پاس آیا... وہ شخص تھا ٹائمز آف انڈیا کا رنجن بخشی ۔'

      'کارڈ میں نے لے لیا لیکن ذہن میں بہت خوف تھا کہ پاپا کو پتہ چلا تو مار ڈالیں گے۔ خیر میں نے اپنی والدہ سے اس بارے میں بات کی اور میری والدہ نے کہا 'بہت اچھی بات ہے جاؤ اپلائی کرو'۔ جب میں نے اگلے دن جا کر فارم بھرا تو مجھے کہا گیا کہ 'ارے تم بہت بہادر ہو، 25 لڑکیوں نے اپنا نام نکال دیا ہے، کیونکہ اس سال ایشوریہ رائے نے اپنا نام دیا ہے، میں نے فوراً اپنا نام واپس لے لیا۔ اس کے بعد میری والدہ نے ڈھائی دن مجھ سے بات نہیں کی، انہوں نے مجھے بہت سنایا۔ انہوں نے کہا اگر تمہیں لگتا ہے کہ یہ تمہارا مقابلہ ہے تو جاؤ اور انہیں ہراو۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Bollywood Actresses Education:شلپا، پرینکا، سشمیتا اور ودیا کی کیا ہے تعلیمی قابلیت؟

      یہ بھی پڑھیں:
      ’میں پارسل نہیں ہوں‘Alia Bhatt کے بیان پر پاکستانی اداکاراؤں کا آیا ری ایکشن

      اس کے بعد میں گئی اور میں نے وہ فارم بھرا اور اس ایک فیصلے نے میری زندگی بدل دی۔ میں اس کا پورا کریڈٹ اپنی ماں کو دیتی ہوں۔ میں ان کی بہت شکر گزار ہوں۔‘‘ ویسے آپ کو بتادیں کہ اسی سال یعنی 1994 میں ایشوریہ نے مس ​​ورلڈ اور سشمیتا نے مس ​​یونیورس کا خطاب جیتا تھا۔ تاہم، ان کامیابیوں سے پہلے سشمیتا سین نے مس ​​انڈیا پیگمنٹ (Miss India 1994) جیتا تھا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: