ہوم » نیوز » انٹرٹینمنٹ

سشانت سنگھ راجپوت کیس: بہار حکومت کی سفارش پر نہیں ہوسکتی سی بی آئی جانچ، جانیں وجہ

بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے (Chief minister of Bihar Nitish Kumar) سشانت سنگھ راجپوت کی موت (Sushant singh rajput death case) کے معاملے میں سی بی آئی جانچ کی سفارش کی ہے، لیکن کیوں قانون کے ماہرین کا ماننا ہے کہ اس سفارش پر سی بی آئی جانچ نہیں ہوسکتی۔

  • Share this:
سشانت سنگھ راجپوت کیس: بہار حکومت کی سفارش پر نہیں ہوسکتی سی بی آئی جانچ، جانیں وجہ
سشانت سنگھ راجپوت کیس: بہار حکومت کی سفارش پر نہیں ہوسکتی سی بی آئی جانچ

بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے (Chief minister of Bihar Nitish Kumar) نیوز 18 سے خاص بات چیت میں کہا کہ ان کی حکومت نے سشانت سنگھ راجپوت (Sushant singh rajput death case) کی موت کے معاملے میں سی بی آئی جانچ (CBI investigation) کی سفارش کی ہے۔ اس سے پہلے اس معاملے میں پٹنہ میں ایف آئی آر بھی درج کی گئی۔ آئیے جانتے ہیں کہ آئینی طور پر بہار حکومت اگر سی بی آئی جانچ کی سفارش کرتی ہے تو ایسا ہونا کتنا ممکن ہے۔ ہم نے اس بارے میں وکیل اور آئین کے جانکار وراگ گپتا سے بات کی۔ انہوں نے اس کی باریکیاں سمجھائیں۔ بقول ان کے عام طور پر سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کئی حالات میں کیا جاسکتا ہے، لیکن عام طور پر کون سی ریاست اس کی سفارش کر سکتی ہے اور پھر اس کا عمل کیا ہوگا، وہ طے ہے۔


یہ بہار حکومت کے دائرہ اختیار میں نہیں


ان کا کہنا تھا کہ جس ریاست میں حادثہ ہوا ہے اور وہ معاملہ جس ریاستی حکومت کی جیوریڈکشن میں آتا ہے۔ اس معاملے کی سیدھی طور پر جانچ اسی ریاست کی پولیس کرسکتی ہے۔ رہی بات سی بی آئی جانچ کی تو بہار حکومت نے بے شک سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کیا ہے، لیکن یہ اس کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا۔


بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے نیوز 18 سے خاص بات چیت میں کہا کہ ان کی حکومت نے سشانت سنگھ راجپوت کی موت معاملے میں سی بی آئی جانچ کی سفارش کی ہے۔
بہار کے وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے نیوز 18 سے خاص بات چیت میں کہا کہ ان کی حکومت نے سشانت سنگھ راجپوت کی موت معاملے میں سی بی آئی جانچ کی سفارش کی ہے۔


وہی ریاست سفارش کرسکتی ہے، جہاں حادثہ ہوا ہو

آئینی طور پر کوئی ریاست سی بی آئی جانچ کے لئے جب سفارش کرتی ہے تو اسے مرکزی حکومت کے پاس بھیجا جاتا ہے۔ چونکہ یہ معاملہ مہاراشٹر میں رونما ہوا ہے، لہٰذا اس معاملے میں مہاراشٹر حکومت کی منظوری سب سے پہلے ضروری ہوگی، تبھی مرکز سی بی آئی کو اس کی جانچ کے لئے مقرر کرسکتی ہے، ورنہ نہیں۔

تبھی ہوسکتی ہے سی بی آئی جانچ

کہنے کا مطلب یہ ہے کہ بہار حکومت بے شک سی بی آئی جانچ کی سفارش کرسکتی ہے، لیکن یہ معاملہ تبھی آگے بڑھے گا جبکہ مہاراشٹر رضا مند ہو، ورنہ نہیں۔ ان کا تو یہ بھی کہنا تھا کہ آئینی طور پر بہار حکومت کو ممبئی میں ہوئے اس حادثہ کا ایف آئی آر درج کرنے کا بھی حق نہیں بنتا، کیونکہ اس سے آئینی لاقانونیت کی حالت پیدا ہوتی ہے۔ بے شک اس میں بہتر ہوتا ہے کہ بہار حکومت، مہاراشٹر حکومت سے اپنا کنسرن درج کرائے اور تیزی سے اس کی جانچ کا مطالبہ کرے۔
Published by: Nisar Ahmad
First published: Aug 04, 2020 04:09 PM IST