ہوم » نیوز » Explained

Explained: اب فرانس نےبھی دی کووی شیلڈویکسین کو منظوری،جانئے کونسے ممالک نے اب تک کووی شیلڈکوکیاتسلیم؟

متعدد ممالک اپنے ملک کے بین الاقوامی سفر کے لئے کووی شیلڈ ویکسین کے لیے منظوری دے چکے ہیں، جس میں 16 یورپی ممالک شامل ہیں۔ حال ہی میں یورپی یونین نے گرین پاس (Green Pass) پروگرام کا آغاز کیا، جس کے تحت ایسے مسافروں کو اجازت دی جاسکے گی جنہیں منظور شدہ ویکسین لگائی گئی ہیں ، وہ یورپی یونین کے 27 ممالک کے زون کے اندر سفر کرسکیں گے۔

  • Share this:
Explained: اب فرانس نےبھی دی کووی شیلڈویکسین کو منظوری،جانئے کونسے ممالک نے اب تک کووی شیلڈکوکیاتسلیم؟
ہندوستان کے سیرم انسٹی ٹیوٹ (Serum Institute) کے ذریعہ بنائے گئے آسٹرا زینکا (AstraZeneca) کی ویکسین

فرانس نے اتوار سے شروع ہونے والے بین الاقوامی مسافروں کو ملک میں سفر کی اجازت دے دی ہے۔ ہندوستان کے سیرم انسٹی ٹیوٹ (Serum Institute) کے ذریعہ بنائے گئے آسٹرا زینکا (AstraZeneca) کی ویکسین کے ذریعے ٹیکے جانے والے زائرین کو قبول کرنے کا اقدام اس وقت کیا گیا جب یورپی یونین کووڈ 19 سرٹیفکیٹ نے صرف یورپ میں تیار کی جانے والی آسٹرا زینیکا ویکسینوں کو تسلیم کیا ۔متعدد ممالک اپنے ملک کے بین الاقوامی سفر کے لئے کووی شیلڈ ویکسین کے لیے منظوری دے چکے ہیں، جس میں 16 یورپی ممالک شامل ہیں۔ حال ہی میں یورپی یونین نے گرین پاس (Green Pass) پروگرام کا آغاز کیا، جس کے تحت ایسے مسافروں کو اجازت دی جاسکے گی جنہیں منظور شدہ ویکسین لگائی گئی ہیں ، وہ یورپی یونین کے 27 ممالک کے زون کے اندر سفر کرسکیں گے۔


فرانس کے اعلان کے بعد سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او ، آدار پونا والا Adar Poonawalla نے کہا ’’یہ واقعی مسافروں کے لئے خوشخبری ہے، کیونکہ ہم دیکھتے ہیں کہ 16 یورپی ممالک کوویشیلڈ کو داخلے کے لئے قابل قبول ویکسین کے طور پر تسلیم کرتے ہیں۔ تاہم ٹیکے لگائے جانے کے باوجود داخلے کے رہنما خطوط ملک سے دوسرے ملک میں مختلف ہوسکتے ہیں‘‘۔


سوئٹزر لینڈ اور سات یوروپی ممالک نے کووی شیلڈ کو گرین پاسپورٹ فہرست میں کیا شامل
سوئٹزر لینڈ اور سات یوروپی ممالک نے کووی شیلڈ کو گرین پاسپورٹ فہرست میں کیا شامل


یہ وہ ممالک ہیں جنہوں نے بین الاقوامی سفر کے لئے کووی شیلڈ کو تسلیم کیا ہے:
• آسٹریا

• بیلجیم

• بلغاریہ

• فن لینڈ

• جرمنی

• یونان

• ہنگری

• آئس لینڈ

• آئرلینڈ

• لٹویا

• نیدرلینڈ

• سلووینیا

• سپین

• سویڈن

• سوئٹزرلینڈ

• فرانس

• افغانستان

• اینٹیگوا اور باربوڈا

• ارجنٹائن

• بحرین

• بنگلہ دیش

• بارباڈوس

• بھوٹان

• بولیویا (غیر حقیقی ریاست)

• بوٹسوانا

• برازیل

• کیبو وردے

• کینیڈا

• کوٹ ڈی آئیوری

• ڈومینیکا

• مصر

• ایتھوپیا

• گھانا

• گریناڈا

• ہونڈوراس

• ہنگری

• ہندوستان

• جمیکا

• لبنان

• مالدیپ

• مراکش

• میانمار

• نامیبیا

• نیپال

• نکاراگوا

• نائیجیریا

• سینٹ کٹس اینڈ نیوس

• سینٹ لوسیا

• سینٹ ونسنٹ اینڈ گریناڈائنز

• سیچلز

• جزائر سلیمان

• صومالیہ

• جنوبی افریقہ

• سری لنکا

• سورینام

• بہاماز

• جانے کے لئے

• ٹونگا

• ٹرینیڈاڈ اور ٹوباگو

• یوکرین

ہندوستان نے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے ذریعہ مقامی طور پر تیار کی جانے والی آسٹرا زینیکا آکسفورڈ ویکسین ‘کوویشیلڈ’ اور بھارت بائیوٹیک کے ذریعہ تیار کردہ کوواکسن کے ساتھ رواں سال 16 جنوری کو ہندوستان نے اپنی ویکسینیشن مہم شروع کردی تھی۔

ہندوستان بین الاقوامی سطح پر تسلیم کرنے اور کوویکیسن کی منظوری کے لئے بھی زور دے رہا ہے۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) نے کوویکیسن کے لئے جائزہ لینے کے عمل کے آغاز کے ساتھ ہی ی حیدرآباد میں قائم بھارت بائیوٹیک نے پیر کو کہا تھا کہ وہ جلد سے جلد عالمی ادارہ سے ہنگامی استعمال کی فہرست (ای یو ایل) حاصل کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

’گرین پاسپورٹ‘

یورپی یونین کے گرین پاس کو متعارف کروانے کے بعد یورپی ممالک کے مابین چاروں میں سے ایک ویکسین پلانے والے افراد کے لئے ان ویکسین کو منظوری دی گئی ہے: فائزر / بائیوٹیک ، موڈرنا ، آسٹرا زینیکا-آکسفورڈ اور جانسن اینڈ جانسن

اس حقیقت کے باوجود کہ کووی شیلڈ ایسٹرا زینیکا ویکسین کے برابر ہندوستانی ہے ، اس کو یورپی یونین کی گرین پاس فہرست میں شامل نہیں کیا گیا۔ کووی شیلڈ تیار کرنے والے سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے سی ای او آدر پونا والا نے بتایا ہے کہ اس معاملے کو اعلی سطح پر اٹھایا گیا ہے اور وہ اس کے جلد حل ہونے کی امید کرتے ہیں۔

ای یو گرین کارڈ ای یو کے 27 رکن ممالک میں ہموار سفر کی اجازت دے گا۔ ممالک کو گرین پاس کے ساتھ سفر کرنے والے افراد پر لازمی قرنطین جیسی اضافی سفری پابندیاں عائد نہیں کرنا چاہئے جو کہ حفاظتی ٹیکوں کی سند ہے۔

ہندوستان نے یورپی یونین کے رکن ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ انفرادی بنیاد پر کووی شیلڈ اور کوویکیسن کو تسلیم کریں اور ویکسین یافتہ ہندوستانیوں کے ساتھ یوروپی یونین کے ممالک میں ویکسین پلانے والوں کے برابر سلوک کریں۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Jul 18, 2021 12:39 PM IST