உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained:کیا ہے VIP کے لئے پلین اور ہیلی کاپٹر کے سیفٹی رولس

    وی آئی پیز کے لئے طیارے اور ہیلی کاپٹروں کے کیا ہوتے ہیں اصول۔

    وی آئی پیز کے لئے طیارے اور ہیلی کاپٹروں کے کیا ہوتے ہیں اصول۔

    ہر وی آئی پی فلائٹ کوملٹی کریو کی جانب سے آپریٹ کیا جانا چاہیے۔ جنرل بپن راوت کے معاملے میں فی الحال یہی مانا جارہا ہے کہ اس رول کو نظر انداز کیا گیا تھا۔

    • Share this:
      ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف (CDS)جنرل بپن راوت (General Bipin Rawat)کی موت سے ملک صدمے میں ہے۔ اُن کی موت کل بدھ کو تمل ناڈو کے کوننور کے پاس ہیلی کاپٹر حادثے میں ہوئی جس مین اُن کی بیوی کے ساتھ 11 دیگر لوگوں کی بھی موت ہوگئی۔ فضائیہ نے ایم آئی-17 وی ایچ ہیلی کاپٹر کے اس حادثے کی جانچ کے احکامات دے دئیے ہیں۔ اس حادثے کی وجوہات کے بارے میں ابھی کچھ بھی نہیں کہا گیا ہے، لیکن وی آئی پی لوگوں کے لئے ملک میں جہاز اور ہیلی کاپٹر و دیگر کے لئے قوانین کا جائزہ لینے کی ضرورت کو جاننا بھی ضروری ہوگیا ہے۔

      کون سا ہیلی کاپٹر
      یہ ہیلی کاپٹر MI-17 سیریز کا روسی چاپر ہے، جس کا استعمال ٹرانسپورٹ ہیلی کاپٹر کے طور پر ہوتا ہے۔ اس ہیلی کاپٹر کا استعمال دنیا بھر میں ٹرانسپورٹ سے لے کر فوجی مہمات کے لئے کیا جاتا ہے۔ یہ کافی وزن لے کر پرواز کرنے میں قابل ہے اور اس میں 36 لوگ ایک ساتھ بیٹھ کر سفر کرسکتے ہیں۔



      کون بناتا ہے یہ رولس
      ہندوستان میں وی آئی پی لوگوں کے سفر کے لئے استعمال کیے جانے والے جہازوں اور چاپرس یا ہیلی کاپٹرس کی سیفٹی کے لئے رولس، ڈائریکٹوریٹ آف سول ایوی ایشن (DGCA)طئے کرتا ہے۔ ڈی جی سی اے کی گائیڈلائنس کی بنیاد پر ہی ریاست اور مرکزی حکومتیں و دیگر اداروں کی جانب سے وی آئی پی کے ٹریول کے لئے استعمال میں لائے جانے والے طیاروں اور ہیلی کاپٹروں کے لئے اعلیٰ سیکورٹی کے اصول و ضوابط پر عمل کیا جاتا ہے۔

      ہر طرح کے اصولوں پر آپریٹ کرنے کی صلاحیت
      ان گائیڈلائنس کے مطابق طیارہ یا چاپر ہمیشہ اچھی آپریبلیٹی کی صلاحیت، بھروسہ مند اور آسان رکھ رکھاو والی خصوصیت کا حامل ہونا چاہیے جسے وقت بہ وقت جاری کیے گئے ایئرکرافٹ رولس اور گائیڈلائنس کے مطابق آپریٹ کرپاتے رہنا چاہیے۔

      تجربہ کار انجینئرس اور پائلٹ گروپس
      وی آئی پی فلائٹس کو تجربہ کار انجینئرنس اور پائلٹ گروپس کی جانب سے ہی آپریٹ کیا جانا ضروری ہے۔ وی آئی پی جہازوں اور ہیلی کاپٹرس کے لئے پائلٹ گروپس اور انجینئروں کے لئے ایک الگ سے ٹریننگ پروگرام مقرر کیا جاتا ہے۔ ہر فلائٹ سے پہلے پوری طرح سے جہاز یا ہیلی کاپٹر کی جانچ کی جانی چاہیے اور یہ یقینی بنایا جانا چاہیے کہ جہاز یا ہیلی کاپٹر پوری طرح سے اُڑان بھرنے اور چلانے کے لائق ہے یا نہیں ہے۔



      موسم کا موافق رہنا بہت ضروری
      سیکورٹی رولس کے مطابق جب بھی موسم کے حالات جہاز یا ہیلی کاپٹر چلانے کے لحاظ سے غیر محفوظ ہوں تو کسی بھی حالت میں اُڑان بھرنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔ ہر وی آئی پی فلائٹ کوملٹی کریو کی جانب سے آپریٹ کیا جانا چاہیے۔ جنرل بپن راوت کے معاملے میں فی الحال یہی مانا جارہا ہے کہ اس رول کو نظر انداز کیا گیا تھا۔



      پائلٹ کے لئے ضروری آرڈرس
      رولس کے مطابق ہر اُڑان کے شروع ہونے سے پہلے پائلٹ کو موسم سے متعلق جانکاری سے واقف کروانا ضروری ہوتا ہے۔ اگر اُڑان سیلابی علاقوں سے اوپر جانے والی ہو، تو پائلٹ ے لئے حکم ہوتا ہے کہ وہ یقینی بنائے کہ جہاز یا چاپر میں سوار ہر شخص کے لئے مناسب سیفٹی کٹ موجود ہو۔ اس کے علاوہ ہر فلائٹ سے پہلے ہر مسافر کو ایمرجنسی کی صورت میں سیفٹی کٹ کے استعمال کرنے کا طریقہ پتہ ہونا چاہیے۔۔۔



      اگر کسی اُڑان سے پہلے کی گئی جانچ میں کسی طرح کی کمی یا گڑبڑی پائی جاتی ہے تو ایسی حالت میں کیا کرنا چاہیے اور کب اُڑان بھری جاسکتی ہے اس کے لئے بھی الگ سے احکام ہیں۔ ایسی حالت میں کمی یا گڑبڑی کی پوری جانکاری پائلٹ ان کمانڈ کو دی جانی چاہیے اور اُسے درست کرنے کے بعد اس کی تصدیق کی جانی چاہیے اور مناسب طور سے سرٹیفائیڈ ہونے کے بعد ہی پرواز کی اجازت دی جانی چاہیے۔


      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: