உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    'New Year 2022'کے جشن پر کورونا کا سایہ، پابندیوں کے درمیان پارٹی اور جشن، جانیے ریاستوں میں کہاں، کیا ہے چھوٹ؟

    'New Year 2022' جشن پر کورونا کا سایہ۔

    'New Year 2022' جشن پر کورونا کا سایہ۔

    کوویڈ-19 کے بڑھتے اثر کی وجہ سے ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں سختی بڑھا دی گئی ہے۔ ممبئی اور تمل ناڈو میں بدھ کو مقامی انتظامیہ نے سمندر کے کنارے ہونے والے سبھی جشن اور پارٹیوں پر بین لگادیا ہے۔ وہیں گوا حکومت میں پارٹی اور ریسٹورنٹ میں انٹری کے لئے کورونا نیگیٹیو رپورٹ کو لازمی کردیا گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: کورونا وائرس (Coronavirus) کے اومیکرون ویرینٹ (Omicron Variant) کی دہشت کے درمیان نئے سال کا جشن (New Year 2022 Celebration)پھیکا رہنے والا ہے۔ کوویڈ-19 کے بڑھتے اثر کی وجہ سے ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام ریاستوں میں سختی بڑھا دی گئی ہے۔ ممبئی اور تمل ناڈو میں بدھ کو مقامی انتظامیہ نے سمندر کے کنارے ہونے والے سبھی جشن اور پارٹیوں پر بین لگادیا ہے۔ وہیں گوا حکومت میں پارٹی اور ریسٹورنٹ میں انٹری کے لئے کورونا نیگیٹیو رپورٹ کو لازمی کردیا گیا ہے۔

      جانیے کس ریاست میں نئے سال سے پہلے کوویڈ-19 وبا کی روک تھام کو لے کر کیا پابندیاں ہیں؟

      مہاراشٹر
      مہاراشٹر میں اومیکرون ویرینٹ کے 167 کیسیز سامنے آئے ہیں اور منگل کو کورونا وائرس انفیکشن کے 2172 کیس درج ہوئے۔ ریاستی حکومت نے ممبئی میں 31 دسمبر کی آدھی رات تک دفعہ 144 لاگو کردیا ہے۔ اس دوران بیچ اور ریسٹورنٹس میں کوئی سوشل گیدرنگ یا پارٹی نہیں ہوگی۔ وہیں ناگپور میں مقامی انتظامیہ نے عوامی اور نجی مقامات پر پارٹی منانے پر پابندی لگادی ہے ۔

      تمل ناڈو
      تمل ناڈو میں سمندر کے کنارے اور عوامی مقامات پر کسی بھی طرح کے جشن کی اجازت نہیں ہوگی۔ ساتھ ہی ہوٹل و ریسٹورنٹ 11 بجے تک بند کردئیے جائیں گے۔ ریاستی پولیس نے اس بارے میں جانکاری دی۔ ریاست میں بدھ تک اومیکرون کے 45 کیس آچکے ہیں۔ اس کے علاوہ ریاست میں کوویڈ19 کے 619 نئے کیسیز سامنے آئے ہیں۔

      گوا
      گوا میں ویکسین لے چکے افراد یا کورونا کی نیگیٹیو رپورٹ لے کر آنے والے لوگوں کو لوگوں کو ہی پارٹی یا ریسٹورنٹ میں آنے کی اجازت دی جائے گی۔ سی ایم پرمود ساونت نے اس حکم کو قانونی طور سے لازمی قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی منعقد کرنے والے لوگوں کو ان رولس پر عمل کرنا ہوگا۔ کیسینو، سینما ہال، آڈیٹوریم، ریور کروز، واٹر پارک اور دیگر انٹرٹنمنٹ سینٹرس 50 فیصد صلاحیت کے ساتھ چلائے جائیں گے۔

      اس کے علاوہ صرف کورونا ویکسینیٹیڈ یا کوویڈ-19 کی نیگیٹیو رپورٹ لے کر آنے والے شہریوں کو ہی ریاست میں انٹری ملے گی۔ گوا حکومت نے منگل کو سمندری علاقے میں نائٹ کرفیو لاگو کردیا ہے۔

      دلی
      کورونا کے بڑھتے کیسیز کو دیکھتے ہوئے دلی حکومت نے دارالحکومت میں یلو الرٹ جاری کردیا ہے۔ اس کی وجہ سے سوشل اور فیسٹیول گیدرنگ پر پابندی لگادی گئی ہے۔ دلی میں اومیکرون ویرینٹ کے اب تک 238 کیسیز سامنے آچکے ہیں جو ملک میں سب سے زیادہ ہے۔ اس کے علاوہ شاپ اور دیگر غیر ضروری سامانوں کے لئے مالس کو آڈ ایون فارمولے کے تحت صبح 10 ب جے سے رات 8 ب جے تک کھولے جائیں گے۔ راجدھانی میں رات 10 بجے سے صبح 5 بجے تک نائٹ کرفیو اگلے حکم تک جاری رہے گا۔

      گجرات
      ریاست میں رات 11 بجے سے صبح 5 بجے تک نائٹ کرفیو کو 31 دسمبر تک کے لئے بڑھادیا گیا ہے۔ جم اور ریسٹورنٹ کو 75 فیصدی صلاحیت کے ساتھ کھولنے کی اجازت دی گئی ہے۔ احمدآباد، بڑودہ، سورت، راج کوٹ، بھاونگر، جام نگر، گاندھی نگر اور جوناگڑھ میں نائٹ کرفیو لاگو رہے گا۔ مہاراشٹر کے بعد گجرات، ملک میں اومیکرون ویرینٹ کے کیسیز کو لے کر تیسرے نمبر پر ہے۔

      کرناٹک
      کرناٹک میں ریاستی حکومت نے 28 دسمبر سے 10 دنوں کے لئے نائٹ کرفیو لگا دیا ہے۔ اس دوران رات 10 بجے سے 5 بجے تک پابندی لاگو رہے گی اور ریاست میں نئے سال کے جشن پر بھی پابندی ہوگی۔ وزیر صحت کے سدھاکر نے کہا کہ ریاست میںعوامی مقامات پر کسی بھی طرح کے جشن پر پابندی رہے گی۔ اس دوران ڈی جے کا استعمال اور لوگوں کی بھیڑ پر پابندی رہے گی۔ وہیں کرناٹک میں ہوٹل، پب اور ریسٹورنٹ کو 50 فیصدی صلاحیت کے ساتھ کھولنے کی اجازت ہوگی۔

      تلنگانہ
      تلنگانہ حکومت نے ہائی کورٹ کے حکم پر کوویڈ-19 سے جڑی پابندیوں کو 2 جنوری تک لاگو کردیا ہے ۔اس دوران ریلی اور پبلک میٹنگ، احتجاجی مظاہروں اور دھرنوں پر پابندی رہے گی۔ حالانکہ نئے سال کے جشن پر اب تک پابندی کا کوئی حکم نہیں ہے۔ ریاست میں اومیکرون کے 62 کیسیز سامنے آچکے ہیں۔

      چھتیس گڑھ
      ریاستی حکومت نے نئے سال کے جشن، سماجی اور مذہبی پروگرامس کے انعقاد کے لئے نئی گائیڈلائنس جاری کی ہے۔ اس کے تحت 50 فیصدی صلاحیت کے ساتھ لوگوں کو جشن و دیگر پروگرام کرنے کی اجازت ہوگی۔

      مغربی بنگال
      مغربی بنگال کی وزیراعلیی ممتا بنرجی نے عہدیداروں سے ریاست میں کورونا کی صورتحال کا جائزہ لینے کو کہا ہے۔ حالانکہ حکومت نے نئے سال کے سلیبریشن کو لے کر پابندیوں میں کچھ چھوٹ دی ہے۔ لیکن رات 11 بجے سے صبح 5 بجے تک موجودہ پابندی 15 جنوری تک لاگو رہے گی، صرف نئے سال کے جشن کو چھوڑ کر۔

      ہماچل پردیش
      ہماچل پردیش کے وزیراعلیٰ جئے رام ٹھاکر نے سینئر عہدیداروں کو ریاست میں نئے سال کے جشن کے دوران کوویڈ-19سے جڑے گائیڈلائنس پر عمل آوری کو یقینی بنانے کا حکم دیا ہے۔ ریاست کے سبھی ٹورسٹ سینٹرس پر آنے والے لوگ کورونا سے جڑی پابندیوں پر عمل کریں، اس کے حکم دئیے گئے ہیں۔ وہیں ریاست میں کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ بڑھانے کے احکامات بھی دئیے گئے ہیں۔

      اُترپردیش
      ریاست کے سبھی شہروں میں رات 11 بجے سے صبح 5 بجے تک نائٹ کرفیو لگایا گیا ہے۔ سبھی ضؒع عہدیداروں کو ریاست میں کورونا گائیڈلائنس پر عمل کرنے کو یقینی بنانے کے لئے کہا گیا ہے۔ وہیں ریاست میں ہونے والی شادیوں میں صرف 200 مہمانوں کو آنے کی اجازت دی گئی ہے۔

      مدھیہ پردیش
      مدھیہ پردیش میں رات 9 بجے سے صبح 5 بجے تک نائٹ کرفیو لاگو کیا گیا ہے۔ ریاست کے سبھی بڑے شہروں میں اضافی احتیاط برتنے کا حکم دیا گیا ہے۔

      بہار
      بہار میں وزیراعلیٰ نتیش کمار نے کسی بھی طرح کے کورونا سے جڑی پابندیوں کو لاگو کرنے سے انکار کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں ابھی اس کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

      کیرل
      کوویڈ-19 کے بڑھتے کیسیز کے پیش نظر ریاست میں 30 دسمبر سے 2 جنوری تک رات 10 بجے سے صبح 5 بجے تک کسی بھی طرح کے مذہبی، سماجی، سیاسی اور تہذیبی پروگراموں پر روک لگادی گئی ہے۔

      راجستھان
      راجستھان میں رات 11 بجے سے صبح 5 بجے تک نائٹ کرفیو لگایا ہوا ہے۔ اشوک گہلوت حکومت نے 31 جنوری تک ریاست کے سبھی شہریوں کو کورونا ویکسین کے دونوں ڈوز لینا قانونی طور سے لازمی کردیا ہے۔

      پڈوچیری
      مدراس ہائی کورٹ نے بدھ کو پڈوچیری میں نئے سال کے جشن کو منانے کی اجازت دے دی ہے۔ لیکن اس دوران شراب کی فروخت پر پابندی لگادی ہے۔ عدالت نے اپنے حکم میں کہا کہ 31 دسمبر کو رات 10 بجے سے 1 جنوری رات 1 بجے تک شراب کی فروخت پر پابندی برقرار رہے گی۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: