ہوم » نیوز » Explained

Corona Vaccination:ہندوستان اوردنیابھرمیں COVID-19ویکسینز،کیاآپ،تمام تفصیلات سے واقف ہیں؟

بیشتر ویکسینوں سے عالمی ایجنسیوں کی جانب سے سیٹ کردہ 50-60% اثر پذیری کے بینچ مارک کے مقابلے 70-90% اثر پذیری حاصل ہوتی ہے اور اسی لئے، انہیں استعمال کیلئے محفوظ اور موثر تصور کیا جاتا ہے۔

  • Share this:
Corona Vaccination:ہندوستان اوردنیابھرمیں COVID-19ویکسینز،کیاآپ،تمام تفصیلات سے واقف ہیں؟
بھارت بایو ٹیک نے انڈین کاؤنسل آف میڈیکل ریسرچ (ICMR)۔نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی (NIV) کے اشتراک کے ساتھ مقامی طور پر Covaxin ویکسین ڈیولپ کی ہے۔

اس وقت جبکہ ہندوستان COVID-19 وبا کی دوسری لہر سے نبردآزما ہے، ملک بھر میں ویکسین کی سپلائیز اور رول آؤٹس میں اضافہ کیا جا رہا ہے۔ 120,656,061 لوگوں کو ویکسین کی پہلی خوراک لگ چکی ہے جبکہ 28 مئی 2021 تک، 4,41,23,192 لوگ اپنی دوسری خوراک بھی لے چکے تھے۔ بھارت میں، سینٹرل ڈرگز اسٹینڈرڈ کنٹرول آرگنائزیشن (CDSCO) نے دو ویکسینز Covaxin اور Covishield کے ہنگامی استعمال کی اجازت دی ہے اور فی الوقت یہی دونوں ویکسینز عوام کو دی جا رہی ہیں۔


بھارت بایو ٹیک نے انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ (ICMR)۔نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف وائرولوجی (NIV) کے اشتراک کے ساتھ مقامی طور پر Covaxin ویکسین ڈیولپ کی ہے۔ یہ ایسے غیر فعال کردہ کوروناوائرسز پر مشتمل ہے جسے جسم میں انجیکٹ کئے جانے پر امیون سیلز اسے پہچان لیتے ہیں۔ یہ عمل امیون سسٹم کو وائرس کے خلاف اینٹی باڈیز تیار کرنے کیلئے ٹریگر کرتا ہے۔ اس کے کلینیکل ٹرائل کے مرحلہ 3 کے عبوری تجزیے میں، Covaxin کو ہلکے، معتدل اور شدید بیماری کے خلاف 78% اثر پذیر پایا گیا  اور شدید COVID-19 کے خلاف Covaxin کی اثر پذیری 100% ہے اور اس کیلئے اسپتال داخلے کی ضرورت نہیں پڑتی ہے۔ فی الوقت 4 تا 6 ہفتوں کے وقفے پر اس کی دو خوراکیں دی جا رہی ہیں۔



دوسری دستیاب ویکسین Covishield کو Oxford-AstraZeneca نے ڈیولپ کیا ہے جبکہ سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کے ذریعے اسے مقامی طور پر تیار کیا جا رہا ہے۔ ایک وائرل ویکٹر ویکسین ہونے کے ناطے، یہ جسم کے خلیوں کو اہم معلومات بہم پہنچانے کیلئے ایک مختلف وائرس کے ترمیم شدہ ورژن یا ویکٹر کا استعمال کرتا ہے۔ COVID-19 کا سبب بننے والے کوروناوائرس میں تاج نما اسپائکس ہوتے ہیں جس کی وجہ سے انہیں اسپائکس پروٹینز کہا جاتا ہے۔ ویکسین جسم کو ان اسپائک پروٹینز کی کاپیاں تیار کرنے کا اہل بناتی ہے۔ اس کے نتیجے میں، جسم وائرس کی شناخت کرتا ہے اور آئندہ کے مراحل میں جسم کے اس مرض کے رابطے میں آنے پر یہ اس مرض کے خلاف جسم کی حفاظت کرتا ہے اور وائرس سے لڑتا ہے۔ ظاہری SARS-CoV-2 انفیکشن کے خلاف Covishield کی اثرپذیری 76% ہے، شدید اور خطرناک اور اسپتال داخلے ہونے کی ضرورت پڑنے والے انفیکشن کے خلاف اس کی اثر پذیری 100% اور 65 برس اور اس سے زیادہ عمر کے لوگوں کو ہونے والے ظاہری COVID-19 کے خلاف اس کی اثر پذیری 85% ہے۔ وزارت برائے صحت اور خاندانی بہبود (MoHFW)، حکومت ہند 12 تا 16 ہفتوں کے وقفے سے اس کی دو خوراکیں لینے کی تجویز دیتی ہے۔

اس سال اپریل میں، روسی ویکسین Sputnik V کو ہنگامی استعمال کی اجازت دی گئی اور جلد ہی یہ ملک کے ویکسینیشن سینٹرز پر دستیاب ہوگی۔ بالکل Covishield کی ہی طرح، Sputnik V بھی ایک وائرل ویکٹر ویکسین ہے اور بعد کے مرحلے میں ہونے والے ٹرائلز میں اسے کوروناوائرس کے خلاف 91.6% اثرپذیر پایا گیا۔ Sputnik V کی دو خوراکین دی جاتی ہیں اور انہیں 21 دنوں کے وقفے سے دیا جاتا ہے۔ تاہم، دیگر ویکسینز کے برخلاف، اس کی دونوں خوراکیں ایک دوسرے سے تھوڑی سی مختلف ہیں۔ اس امر کی بنیاد پر کہ دو امیونائزیشنز زیادہ طویل مدتی اور مستحکم امیون ریسپانس فراہم کرتی ہیں اور مرض سے طویل مدتی تحفظ میں کردار ادا کرتی ہیں، ویکسین کی ہر خوراک میں ایک مختلف ویکٹر/غیر فعال کردہ وائرس کا استعمال کیا جاتا ہے۔ ویکسین کی واحد خوراک والے ورژن کو Sputnik Light کہا جاتا ہے اور جو ابھی زیر تکمیل ہے۔

دنیا کے دیگر ممالک میں دستیاب دیگر ویکسینز میں Pfizer, Moderna, Johnson & Johnson (Janssen), Sinopharm, CoronaVac, Novavac شامل ہیں۔ Pfizer اور Moderna دونوں mRNA پر مبنی ویکسینز ہیں جو انفیکشن سے پھیلنے والے امراض کے خلاف مدافعت کیلئے استعمال کی جانے والی ایک نئی قسم کی ویکسین ہے۔ جسم میں ایک کمزور کردہ یا غیر فعال کردہ وائرس متعارف کروانے کی بجائے، mRNA ویکسینز خلیوں کو پروٹین تیار کرنے یا جسم کے امیون ریسپانس کو فعال کرنے والے پروٹین کا ٹکڑا تیار کرنے کا اہل بناتا ہے۔ جسم کے حقیقی وائرس کے رابطے میں آنے پر، امیون ریسپانس اس سے لڑنے کیلئے اینٹی باڈیز پیدا کر سکتا ہے۔ Pfizer وہ واحد ویکسین ہے جسے 12 سے بعد کی عمر کے افراد کو لگانے کی اجازت دی گئی ہے۔ Johnson & Johnson (Janssen) ایک سنگل ڈوز وائرل ویکٹر ویکسین ہے جبکہ Sinopharm اور CoronaVac میں غیر فعال کردہ وائرس استعمال کیا جاتا ہے۔


ہر چند کہ ویکسینز کے ٹرائل کے مراحل کے دوران ان کی اثر پذیری کے نتائج سامنے آئے ہیں، لیکن ان ویکسینوں کی اصل اثر پذیری کا تعین صرف طویل مدت میں ہی کیا جا سکتا ہے۔ بھارت کی وزارت برائے صحت اور خاندانی بہبود کے مطابق، جب ویکسینوں کو ہنگامی صورتحال میں محدود طریقے سے استعمال کرنے کی اجازت دی جاتی ہے تب 1 تا 2 برس تک ٹرائل کا فالو اپ جاری رہتا ہے تاکہ ویکسین کی جانب سے ممکنہ طور پر فراہم کئے جانے والے تحفظ کے مکمل دورانیے کا اندازہ لگایا جا سکے۔ ویکسین کی اثر پذیری ایک ویکسین ٹرائل میں مرض کے خلاف تحفظ فراہم کرنے کی ویکسین کی صلاحیت کی ایک پیمائش ہے۔ COVID-19 ویکسینوں کا تجزیہ کرتے ہوئے، ظاہر علامت والی بیماری کے خلاف ان کی اثر پذیری پر زور دیا جاتا ہے۔ تاہم، شدید بیماری، اسپتال داخلہ اور اموات کے خلاف تحفظ فراہم کرنے کے تئیں اثر پذیری ایک زیادہ اہم قابل غور امر ہے۔

بیشتر ویکسینوں سے عالمی ایجنسیوں کی جانب سے سیٹ کردہ 50-60% اثر پذیری کے بینچ مارک کے مقابلے 70-90% اثر پذیری حاصل ہوتی ہے اور اسی لئے، انہیں استعمال کیلئے محفوظ اور موثر تصور کیا جاتا ہے۔ ویکسینوں کے مابین موازنہ احتیاط کے ساتھ کیا جانا چاہئے کیونکہ ان میں مختلف ٹیکنالوجی استعمال کی گئی ہے اور انہیں جس صورتحال میں ٹیسٹ کیا گیا ہے، ان میں سے ہر ایک ویکسین کے ٹرائل کی صورتحال مختلف ہے۔ عالمی ادارۂ صحت اور مرض کے کنٹرول اور مدافعت کے مراکز نے پہلی دستیاب ویکسین لینے کی تجویز کی ہے اور ان کا ایک دوسرے سے موازنہ کرنے سے بچنے کی تلقین کی ہے۔ وبا کی تیسری لہر کے امکان کے پیش نظر، زیادہ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین لگوانا وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔ مرض کی شدت کو دیکھتے ہوئے، اس کے خلاف کسی بھی سطح کی مدافعت مفید ثابت ہوگی۔
ویکسین مینوفیکچرر ویکسینیشن کی قسم ظاہری علامت والے COVID-19 کو روکنے میں اثر پذیری بیماری کے شدید/انتہائی اثر سے تحفظ اور اسپتال داخلے سے بچانے کی اثر پذیری خوراک کی تعداد پہلی اور دوسری خوراک کے درمیان وقفہ بھارت میں دستیابی
Pfizer BNT162b2 Pfizer, Inc. اور BioNTech mRNA 95% 100% 2 21 دن نہیں
Moderna mRNA-1273 ModernaTX, Inc mRNA 94.1% دستیاب نہیں 2 28 دن نہیں
Oxford-AstraZeneca AZD1222 سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا (Covishield) اور SKBio (جمہوریہ کوریا) وائرل ویکٹر 76% 100% 2 12 تا 16 ہفتے ہاں
Sputnik V (Gamaleya) Janssen Pharmaceuticals Companies of Johnson & Johnson وائرل ویکٹر 91·6% 100% 2 21 دن جلد دستیاب ہوگا
Johnson and Johnson (Janssen) JNJ-78436735 Janssen Pharmaceuticals Companies of Johnson & Johnson وائرل ویکٹر 72% 86% 1 دستیاب نہیں نہیں
CoronaVac (Sinovac) Sinovac Life Sciences, Beijing، چین غیر فعال کردہ وائرس 50.65%  اور 83.5% 2 21 دن نہیں
Sinopharm غیر فعال کردہ وائرس 79% 79% 2 3 تا 4 ہفتے نہیں
Covaxin غیر فعال کردہ وائرس 78% 100% 2 4 تا 6 ہفتے ہاں
Novavax* پروٹین پر مبنی 96.4% 100% 2 3 ہفتے نہیں

*اب بھی کلینیکل ٹرائلز جاری ہیں

ایشوریہ ایّر

رابطہ کار، کمیونٹی انویسٹمنٹ،

یونائٹیڈ وے ممبئی

ماخذ:

https://www.bbc.com/news/world-asia-india-55748124

https://www.thelancet.com/action/showPdf?pii=S0140-6736%2821%2900234-8

https://www.bmj.com/content/373/bmj.n969

https://www.bharatbiotech.com/images/covaxin/covaxin-factsheet1.pdf

https://vaccine.icmr.org.in/covid-19-vaccine

https://www.pfizer.com/news/hot-topics/the_facts_about_pfizer_and_biontech_s_covid_19_vaccine

https://extranet.who.int/pqweb/sites/default/files/documents/Status_COVID_VAX_28May2021.pdf

https://www.mohfw.gov.in/covid_vaccination/vaccination/faqs.html

https://www.cdc.gov/coronavirus/2019-ncov/vaccines/different-vaccines/Pfizer-BioNTech.html

https://www.cdc.gov/coronavirus/2019-ncov/vaccines/different-vaccines/Moderna.html

https://www.cdc.gov/coronavirus/2019-ncov/vaccines/different-vaccines/janssen.html

https://www.bharatbiotech.com/covaxin.html

https://www.who.int/news-room/feature-stories/detail/the-oxford-astrazeneca-covid-19-vaccine-what-you-need-to-know

https://www.thelancet.com/action/showPdf?pii=S0140-6736%2821%2900234-8

https://www.who.int/news/item/07-05-2021-who-lists-additional-covid-19-vaccine-for-emergency-use-and-issues-interim-policy-recommendations

https://www.mohfw.gov.in/pdf/CumulativeCovidVaccinationCoverageReport28thMay2021.pdf

https://www.astrazeneca.com/media-centre/press-releases/2021/azd1222-us-phase-iii-primary-analysis-confirms-safety-and-efficacy.html

https://www.afro.who.int/news/what-covid-19-vaccine-efficacy

https://www.yalemedicine.org/news/covid-19-vaccine-comparison



https://www.who.int/news-room/feature-stories/detail/the-sinopharm-covid-19-vaccine-what-you-need-to-know
Published by: Mirzaghani Baig
First published: Jun 03, 2021 07:48 PM IST