உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Cryptocurrency: ہندوستان میں کرپٹو کرنسی پر قانون سازی کیوں؟ دنیا کے دیگر ممالک میں کیا ہے صورت حال

    ایل سلواڈور دنیا کا واحد ملک ہے جس نے بٹ کوائن کو قانونی ٹینڈر کے طور پر تسلیم کیا ہے۔ تصویر: shutterstock

    ایل سلواڈور دنیا کا واحد ملک ہے جس نے بٹ کوائن کو قانونی ٹینڈر کے طور پر تسلیم کیا ہے۔ تصویر: shutterstock

    ایل سلواڈور (El Salvador) دنیا کا واحد ملک ہے جس نے بٹ کوائن کو قانونی ٹینڈر کے طور پر تسلیم کیا ہے۔ ملکی قانون کے مطابق کوئی بھی سامان یا سروس جو پہلے ڈالر میں قابل ادائیگی تھی اب بٹ کوائن میں بھی ادا کی جا سکتی ہے۔

    • Share this:
      ہندوستان میں کریپٹو کرنسی (Cryptocurrency) کو ریگولیٹ کرنے کے لیے نئے قوانین کے سلسلے میں پوری طرح تیاری جاری ہے کیونکہ مرکزی حکومت پارلیمنٹ کے آئندہ سرمائی اجلاس میں تمام نجی کریپٹو کرنسیوں پر پابندی لگانے کے لیے ایک بل پیش کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

      منگل کو جاری کردہ لوک سبھا بلیٹن کے مطابق کرپٹو کرنسی اینڈ ریگولیشن آف آفیشل ڈیجیٹل کرنسی بل 2021 (Cryptocurrency and Regulation of Official Digital Currency Bill, 2021) کے تحت سرکاری ڈیجیٹل کرنسی کی تخلیق کے لیے ایک فریم ورک بنانے کی کوشش کی جائے گی۔ جسے ریزرو بینک آف انڈیا (RBI) جاری کرے گا۔ نیا بل ملک میں تمام نجی کریپٹو کرنسیوں پر پابندی لگانے کی کوشش کرتا ہے۔ تاہم یہ کریپٹو کرنسی کی بنیادی ٹیکنالوجی اور اس کے استعمال کو فروغ دینے کے لیے کچھ مستثنیات کی اجازت دیتا ہے۔ بل کو اگلے ہفتے سے شروع ہونے والے آئندہ اجلاس میں پیش کیا جائے گا، اس پر غور کیا جائے گا اور اسے منظور کیا جاسکتا ہے۔

      ڈیجیٹل سکے صرف کرنسی کی طرح کام نہیں کرتے بلکہ ایک اثاثہ اور ایک شے بھی ہیں۔ تصویر: shutterstock
      ڈیجیٹل سکے صرف کرنسی کی طرح کام نہیں کرتے بلکہ ایک اثاثہ اور ایک شے بھی ہیں۔ تصویر: shutterstock


      اپریل 2018 میں ریزرو بینک آف انڈیا (آر بی آئی) نے تمام اداروں کو مشورہ دیا تھا کہ وہ ورچوئل کرنسیوں میں لین دین نہ کریں۔ تاہم 2020 کے فیصلے میں سپریم کورٹ نے آر بی آئی کے سرکلر کو ایک طرف رکھ دیا اور ہندوستان میں کریپٹو کرنسی میں تجارت کی اجازت دی۔ اب تک کہا جاتا ہے کہ ہندوستان میں 10 کروڑ سے زیادہ لوگوں نے کرپٹو کرنسیوں میں سرمایہ کاری کی ہے۔ آر بی آئی نے بار بار کرپٹو کرنسی کے استعمال کے خلاف خبردار کیا ہے۔ اس مہینے کے شروع میں آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس (Shaktikanta Das) نے بھی کرپٹو کرنسیوں کو مالیاتی نظام کے لیے خطرہ قرار دیا تھا۔

      تاہم ہندوستان واحد ملک نہیں ہے جو کرپٹو کرنسی پر احتیاط برت رہا ہے۔ کئی دوسرے بھی اسی راہ پر گامزن ہیں۔ اسی ضمن میں یہ معلوم کرنا ضروری ہے کہ دوسری معیشتیں دنیا بھر میں کرپٹو کرنسیوں کے ساتھ کیسے نمٹ رہی ہیں؟

      چین:

      ابتدائی طور پر کرپٹو سے متعلقہ تمام سرگرمیوں کا خیرمقدم کرنے کے بعد چین اب دنیا کی سب سے زیادہ محدود کرپٹو مارکیٹوں میں سے ایک بن گیا ہے۔ ملک نے باضابطہ طور پر 2019 سے کریپٹو کرنسی کی تجارت پر پابندی عائد کردی۔ تاہم یہ غیر ملکی زر مبادلہ کے ذریعے آن لائن جاری رہا۔

      چین نے اس سال کے شروع میں خریداروں کو متنبہ کیا تھا کہ انہیں بٹ کوائن (Bitcoin) اور دیگر کرنسیوں میں آن لائن تجارت جاری رکھنے کے لیے کوئی تحفظ حاصل نہیں ہوگا۔ مئی میں حکومتی عہدیداروں نے صنعت پر دباؤ بڑھانے کے عزم کا اظہار کیا۔ اگلے مہینے بینکوں اور ادائیگی کے پلیٹ فارم سے کہا گیا تھا کہ وہ لین دین کی سہولت بند کر دیں۔ ملک نے کرنسیوں کی کان کنی پر پابندی بھی جاری کی۔ ستمبر میں چین نے واضح کیا کہ جو لوگ ان ورچوئل کرنسی سے متعلق کاروبار میں ملوث ہیں وہ مجرمانہ طور پر ذمہ دار ہیں اور ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

      کرپٹو کرنسی اینڈ ریگولیشن آف آفیشل ڈیجیٹل کرنسی بل، 2021 (The Cryptocurrency & Regulation of Official Digital Currency Bill, 2021) پارلیمنٹ میں منظور کی جائے گی۔
      کرپٹو کرنسی اینڈ ریگولیشن آف آفیشل ڈیجیٹل کرنسی بل، 2021 (The Cryptocurrency & Regulation of Official Digital Currency Bill, 2021) پارلیمنٹ میں منظور کی جائے گی۔


      متحدہ یورپ

      یوروپی یونین میں ہر ملک کا کرپٹو کرنسیوں کے لیے اپنا ضابطہ ہے۔ ان میں سے زیادہ تر نے نرم ٹچ ریگولیٹری فریم ورک کا انتخاب کیا ہے۔ یورپی کمیشن نے گزشتہ سال ستمبر میں ’’کرپٹو-اثاثوں کے ضابطے میں مارکیٹس‘‘ کے عنوان سے مسودہ قانون سازی جاری کی تھی۔ اس کا کہنا ہے کہ کرپٹو کرنسی کو باقاعدہ مالیاتی آلات کے طور پر سمجھا جائے گا۔ کسی بھی فرم کو ہولڈنگ، ٹریڈنگ، بروکریج خدمات کی پیشکش یا کرپٹو کے حوالے سے سرمایہ کاری کا مشورہ فراہم کرنے کے لیے مسودے کے مطابق ریگولیٹرز سے پیشگی منظوری درکار ہوگی۔

      برطانیہ

      برطانیہ میں کرپٹو کرنسیوں کی تجارت براہ راست ریگولیٹ نہیں ہے۔ تاہم خدمات کی پیشکش جیسے کہ cryptocurrency derivatives میں تجارت کے لیے اجازت کی ضرورت ہوتی ہے۔ فنانشل کنڈکٹ اتھارٹی (FCA) وہ ادارہ ہے جو مجاز کرپٹو کرنسی سے متعلقہ کاروباروں کو لائسنس دیتا ہے۔ ایف اے سی وقتاً فوقتاً سرمایہ کاروں کو انتباہات جاری کرتا ہے کہ وہ احتیاط کے ساتھ سرمایہ کاری کریں۔

      ریاست ہائے متحدہ امریکہ

      امریکہ میں مختلف ریاستوں کے مختلف ضوابط ہیں۔ مجموعی طور پر یو ایس اے میں تمام کرپٹو کرنسی سرگرمیوں کی اجازت دینے کے حق میں رہا ہے۔

      کینیڈا

      کرپٹو کرنسی کینیڈا میں قانونی ٹینڈر نہیں ہیں۔ تاہم ملک میں کرپٹو کرنسی قانونی ہیں۔ مزید ٹیکس کے قواعد ڈیجیٹل کرنسی کے لین دین پر لاگو ہوتے ہیں۔ ڈیجیٹل کرنسی کا استعمال صارفین کو ملک میں ٹیکس کی ذمہ داریوں سے مستثنیٰ نہیں کرتا ہے۔

      حکومت نے کرپٹو کرنسی کو ریگولیٹ کرنے کی بات کی ہے، اس نے کہا کہ وہ مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔
      حکومت نے کرپٹو کرنسی کو ریگولیٹ کرنے کی بات کی ہے، اس نے کہا کہ وہ مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔


      فرانس

      فرانس نے 2019 میں کرپٹو کرنسیوں کو ریگولیٹ کرنا شروع کیا۔ فرانس میں کریپٹو کرنسی پر اسی طرح ٹیکس لگایا جاتا ہے جس طرح منقولہ جائیداد پر ہوتا ہے۔

      ترکی

      اپریل میں ترکی نے سامان اور خدمات کی خریداری کے لیے کریپٹو کرنسیوں اور کرپٹو اثاثوں کے استعمال پر پابندی لگا دی تھی۔ ملک کے مرکزی بینک نے قانون سازی شائع کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ تقسیم شدہ لیجر ٹیکنالوجی پر مبنی کرپٹو کرنسیز اور اس طرح کے دیگر ڈیجیٹل اثاثوں کو براہ راست یا بالواسطہ طور پر ادائیگی کے آلے کے طور پر استعمال نہیں کیا جا سکتا۔

      ال سلواڈور

      ایل سلواڈور دنیا کا واحد ملک ہے جس نے بٹ کوائن کو قانونی ٹینڈر کے طور پر تسلیم کیا ہے۔ ملکی قانون کے مطابق کوئی بھی سامان یا سروس جو پہلے ڈالر میں قابل ادائیگی تھی اب بٹ کوائن میں بھی ادا کی جا سکتی ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: