உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Covid-19 cases in India :ایک دن میں دوگنا ہوئے کیس، ہریانہ اور یوپی کے کئی اضلاع میں ماسک لازمی، مرکز نے کیرل کو دی ہدایت

    کورونا کے کیسیز میں آئی دوگنی اچھال تو ان ریاستوں نے اٹھایا بڑا قدم۔

    کورونا کے کیسیز میں آئی دوگنی اچھال تو ان ریاستوں نے اٹھایا بڑا قدم۔

    Covid-19 cases in India: ہریانہ کے وزیر صحت انل وج نے کہا کہ گروگرام میں پچھلے کچھ دنوں میں کورونا کیسز میں اضافہ کو دیکھتے ہوئے وہاں ماسک پہننا لازمی کر دیا گیا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: Covid-19 cases in India :ملک میں کورونا انفیکشن کے اعداد و شمار خوفزدہ کرنے لگے ہیں۔ خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کی رپورٹ کے مطابق ملک میں کورونا انفیکشن کے کیسز ایک دن میں دوگنا ہو گئے ہیں۔ انفیکشن کے بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے ہریانہ اور یوپی کی حکومتوں نے کئی اضلاع میں ماسک لگانا لازمی قرار دیا ہے۔ ساتھ ہی، مرکز نے کیرالہ حکومت کو ہدایت دی ہے کہ وہ ہر روز کورونا کیسوں کا تازہ ترین ڈیٹا فراہم کرے۔

      یوپی کے ان اضلاع میں ماسک پہننا ہوا لازمی
      کورونا کے بڑھتے کیسز کو دیکھتے ہوئے یوپی حکومت نے کئی اضلاع میں ماسک لگانا لازمی کر دیا ہے۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کی رپورٹ کے مطابق اتر پردیش کے چیف سکریٹری درگا شنکر مشرا نے ریاست کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ کی ہدایت پر حکم جاری کیا ہے کہ گوتم بدھ نگر، میرٹھ، غازی آباد، ہاپوڑ، باغپت، بلند شہر میں تمام عوامی مقامات اور لکھنؤ میں ماسک پہننا لازمی ہوگا۔

      اومیکرون ویرینٹ پایا گیا
      یوپی کے گوتم بدھ نگر، غازی آباد، ہاپوڑ، میرٹھ، بلند شہر اور باغپت میں متاثرہ مریضوں کے نمونوں کی جینوم سیکونسنگ میں اومیکرون کی قسم پائی گئی ہے۔ اس کے ساتھ لکھنؤ میں بھی مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کے پیش نظر وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے ان تمام اضلاع میں عوامی مقامات، سرکاری اور نجی دفاتر، عدالتوں اور اسکولوں میں ماسک کو دوبارہ لازمی کرنے کی ہدایت دی ہے۔

      ہریانہ حکومت بھی ہوئی سخت
      خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی کی رپورٹ کے مطابق، ہریانہ حکومت نے پیر کو نیشنل کیپیٹل ریجن (NCR) کے چار اضلاع میں ماسک پہننا لازمی قرار دے دیا۔ ہریانہ کے وزیر صحت انل وج نے کہا کہ گروگرام میں پچھلے کچھ دنوں میں کورونا کیسز میں اضافہ کو دیکھتے ہوئے وہاں ماسک پہننا لازمی کر دیا گیا ہے۔ اس کے ساتھ فرید آباد، سونی پت اور جھجر میں بھی ماسک پہننا لازمی قرار دیا گیا ہے۔ پیر کو ہریانہ میں پائے جانے والے 234 کورونا کیسز میں سے 198 گروگرام کے تھے۔

      ایک دن میں 214 اموات
      پیر کی صبح 8 بجے مرکزی وزارت صحت کی طرف سے اپ ڈیٹ کردہ اعداد و شمار کے مطابق، گزشتہ 24 گھنٹوں میں 2,183 متاثر پائے گئے ہیں، ایک دن پہلے 1,150 نئے کیسز پائے گئے تھے۔ اس عرصے کے دوران 214 اموات ریکارڈ کی گئی ہیں، جن میں سے 213 صرف کیرالہ سے ہیں جہاں گزشتہ چند ماہ سے پہلے ہونے والی اموات کو نئے اعداد و شمار کے ساتھ جاری کیا جا رہا ہے۔ اتر پردیش میں ایک موت ہوئی ہے۔

      روزانہ انفیکشن کی شرح میں اضافہ
      حالانکہ ایکٹو کیسز میں 16 فیصد کی کمی آئی ہے اور ان کی تعداد 11,542 ہے۔ پچھلے چار دنوں سے ایکٹیو کیسز بڑھ رہے تھے۔ روزانہ انفیکشن کی شرح بڑھ کر 0.83 فیصد اور ہفتہ وار انفیکشن کی شرح 0.32 فیصد ہے۔ شام 6 بجے کوون پورٹل کے اعداد و شمار کے مطابق، اب تک انسداد کورونا ویکسین کی مجموعی طور پر 1866 ملین خوراکیں دی جا چکی ہیں۔ ان میں 99.79 کروڑ پہلی، 84.38 کروڑ دوسری اور 2.42 کروڑ احتیاطی ڈوز شامل ہیں۔

      ہانگ کانگ نے ایئر انڈیا کی سروس پر لگائی روک
      اس کے ساتھ ہی ہانگ کانگ نے ہندوستان میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کو دیکھتے ہوئے ایئر انڈیا کی خدمات پر 24 اپریل تک پابندی لگا دی ہے۔ ہفتہ کو ایئر انڈیا کی پرواز کے تین مسافروں میں کووڈ-19 کا انفیکشن پایا گیا۔ خبر رساں ایجنسی پی ٹی آئی نے حکام کے حوالے سے بتایا کہ ہندوستان سے آنے والے مسافر صرف اس صورت میں ہانگ کانگ آسکتے ہیں جب سفر سے 48 گھنٹے قبل ان کے کورونا ٹیسٹ کی منفی رپورٹس آئیں ہوں۔

      یہ بھی پڑھیں:
      WHO: عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل کا دورہ ہند، آج سے گجرات کا تین روزہ دورہ

      مرکز نے کیرل سے یومیہ کورونا کے تازہ اعدادوشمار دینے کو کہا
      رپورٹ کے مطابق مرکز نے کیرالہ حکومت سے روزانہ کورونا سے متعلق تازہ ترین ڈیٹا فراہم کرنے کو کہا ہے۔ ریاستی حکومت کی طرف سے اعداد و شمار فراہم کیے جانے کے پانچ دن بعد، اچانک اچھال آیا ہے جو کہ وبا کی صورتحال جیسے کیسز، اموات اور انفیکشن کی شرح کو ظاہر کرتی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں:
      Climate Change سے متعلق اہداف کے حصول میں مدد کرسکتا ہے ہندوستان: اقوام متحدہ نمائندہ

      ایک دن میں نئے کیسیز 90 فیصد تک بڑھے
      کیرالہ کے پرنسپل ہیلتھ سکریٹری راجن این کھوبراگڑے کو لکھے ایک خط میں، مرکزی جوائنٹ ہیلتھ سکریٹری لو اگروال نے کہا ہے کہ وبائی مرض کی حقیقی صورتحال کو بہتر طور پر سمجھنے کے لیے ڈیٹا کی روزانہ اور درست رپورٹنگ بہت ضروری ہے۔ اس سے مقدمات کی شناخت اور نگرانی کے ساتھ ساتھ مرکزی، ریاستی اور ضلعی سطحوں پر قطعی حکمت عملی اور منصوبے بنانے میں مدد ملتی ہے۔

      اگروال نے کہا ہے کہ یہ نوٹس میں آیا ہے کہ کیرالہ نے پانچ دن بعد (13 اپریل سے) کورونا سے متعلق ڈیٹا فراہم کیا ہے۔ اس کی وجہ سے ملک میں کورونا کیسز، اموات اور انفیکشن کی شرح میں اچانک اضافہ ہوا ہے۔ ایک دن میں نئے کیسز میں 90 فیصد اضافہ ہوا ہے اور انفیکشن کی شرح میں 165 فیصد کا اضافہ درج کیا گیا ہے۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: