ہوم » نیوز » Explained

Explained : جانئے کار چوری ہوجانے پر ہندوستان میں کیا کیا اقدامات اٹھانے ہیں ضروری ؟

Steps to be Taken After Car Theft : پولیس میں شکایت درج کرانے کے بعد انشورینس کلیم فائل کریں ۔ کار چوری ہونے کی صورت میں اپنے بیمہ دہندہ کو حادثہ کے بارے میں جانکاری دیں ۔

  • Share this:
Explained : جانئے کار چوری ہوجانے پر ہندوستان میں کیا کیا اقدامات اٹھانے ہیں ضروری ؟
Explained : جانئے کار چوری ہوجانے پر ہندوستان میں کیا کیا اقدامات اٹھانے ہیں ضروری ؟

ایف آئی آر


اپنے مقامی پولیس اسٹیشن میں ایف آئی آر ( فرسٹ انفارمیشن رپورٹ) درج کرائیں ۔ پولیس شکایت درج کرنے کیلئے متعلقہ تفصیلات مانگے گی ۔ آپ کو ایف آئی آر کی ایک کاپی ملے گی ، جس کی انشورینس کلیم فائل کرتے وقت آپ کو ضرورت پڑے گی ۔


اپنے بیمہ دہندہ سے رابطہ کریں ۔


پولیس میں شکایت درج کرانے کے بعد انشورینس کلیم فائل کریں ۔ کار چوری ہونے کی صورت میں اپنے بیمہ دہندہ کو حادثہ کے بارے میں جانکاری دیں ۔

اپنے آر ٹی او کو مطلع کریں

موٹر وہیکل ایکٹ کے مطابق کار چوری ہونے کی صورت میں آر ٹی او ( ریجنل ٹرانسپورٹ افسر ) کو ضرور مطلع کریں ۔

انشورینس کمپنی میں مطلوبہ دستاویزات جمع کرائیں

کار چوری ہونے کی صورت میں کامیاب انشورینس دعوی کیلئے آپ سے انشورینس کمپنی متعدد دستاویزات کا مطالبہ کرے گی ۔ دستاویزات یہ ہوسکتے ہیں :

انشورینس دستاویزات کی کاپی ۔

اوریجنل ایف آئی آر کی کاپی ۔

کلیم فارم

ڈرائیونگ لائسنس کی کاپی ۔

آر سی بک کی کاپی ۔

ان دستاویزات کے علاوہ کامیاب کلیم فائلنگ کیلئے آپ کو کار کی اوریجنل چابھی ( دو سیٹس ) بھی جمع کرنی ہوگی ۔

پولیس سے نو ٹریس رپورٹ حاصل کریں ۔

اگر مخصوص مدت میں آپ کی کار ٹریس نہیں کی جاتی ہے تو آپ پولیس اسٹیشن سے نو ٹریس رپورٹ حاصل کریں ۔ یہ دستاویز بیمہ دہندہ کے ذریعہ دعوی کی منظوری کے لئے لازمی ہے ۔

دعوی کی منظوری میں کتنا وقت لگ سکتا ہے ؟

جیسا کہ اوپر بتایا گیا ہے کہ پالیسی شکایت درج کرانے کی تاریخ کے بعد سے 30 دن یا اس سے زیادہ کی مدت کے بعد ہی نو ٹریس رپورٹ بنائی جاتی ہے اور یہ آپ کے جگہ پر منحصر ہے ۔ علاوہ ازیں انشورینس کمپنی کو آپ کی کار کی آئی ڈی وی تیار کرنے میں 60 سے 90 دن لگ سکتے ہیں ۔ کل ملا کر اس پورے عمل میں آسانی سے تین سے چار ماہ لگ سکتے ہیں ۔

نوٹ : پراچی مشرا سپریم کورٹ کی وکیل ہیں ۔ 
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Mar 20, 2021 02:55 PM IST