ہوم » نیوز » Explained

Wear Mask At Home: آپ اگر اپنے گھر میں ہیں، تب بھی ماسک لگائیں! کووڈ۔19 کے خلاف جنگ میں یہ کیوں ہے ضروری؟

ڈاکٹر وی کے پال (Dr VK Paul) رکن صحت نیتی آیوگ (Niti Aayog) نے ​​کہا کہ ’’اگر افراد خاندان میں سے کسی کو کووڈ۔19 مثبت ہوا ہے تو یہ بات بہت اہم ہے کہ وہ شخص گھر کے اندر بھی نقاب پہنے۔ کیونکہ وائرس گھر میں دوسروں تک پھیل سکتا ہے‘‘۔

  • Share this:
Wear Mask At Home: آپ اگر اپنے گھر میں ہیں، تب بھی ماسک لگائیں! کووڈ۔19 کے خلاف جنگ میں یہ کیوں ہے ضروری؟
گھر پر بھی ماسک کا کریں استعمال، حکومت ہندنے جاری کیے گائیڈ لائنس

عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کی دوسری لہر نے ہندوستان کو اپنے لپیٹ میں لے لیا ہے۔ اسی تناظر میں مرکز نے پیر کے دن عوام کو مشورہ دیا کہ گھر میں بھی ماسک پہننے کا وقت آگیا ہے، خاص طور پر اگر کوئی کووڈ۔19 مریض آس پاس ہے۔ تب تو ہر ایک کو ماسک لگانا بے حد ضروری ہے۔ تاہم حکومت نے مزید کہا کہ غیر ضروری گھبراہٹ سے زیادہ نقصان پہنچا رہا ہے۔


دیگر سینئر عہدیداروں کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر وی کے پال (Dr VK Paul) رکن صحت نیتی آیوگ (Niti Aayog) نے ​​کہا کہ ’’اگر افراد خاندان میں سے کسی کو کووڈ۔19 مثبت ہوا ہے تو یہ بات بہت اہم ہے کہ وہ شخص گھر کے اندر بھی نقاب پہنے۔ کیونکہ وائرس گھر میں دوسروں تک پھیل سکتا ہے۔ بصورت دیگر میں یہ کہنے کے بجائے یہ کہوں گا کہ اب وقت آگیا ہے کہ ہم گھر میں ماسک پہننا شروع کردیں‘‘۔



اس کے پھیچے کیا چھپا ہے راز؟

اس ماہ کے آغاز میں لانسیٹ (Lancet) کی ایک تحقیق میں کہا گیا ہے کہ کووڈ۔19 کا سبب ہونے والا وائرس (سارس کوو۔2 وائرس) Sars-Cov-2 virus ہوا سے بھی ایک دوسرے میں منتقل ہوسکتا ہے۔

آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (All India Institute of Medical Sciences) کے ڈائریکٹر ڈاکٹر رندیپ گلیریا (Dr Randeep Guleria) نے نیوز 18 کو ایک گفتگو میں بتایا کہ ’’یہ ایک بحث ہے جو چھ ماہ سے زیادہ عرصے سے جاری ہے۔ چاہے وہ بوند بوند (droplet) ہو یا ایروسول (aerosol) میرے ذہن میں یہ یعنی وائرس دونوں کا مرکب ہے‘‘۔

’’بوند بوند (Droplet) کے انفیکشن کا مطلب ہے کہ ان ذرات (particle) کی مقدار زیادہ ہے۔ چونکہ وائرس لے جانے والی بوندوں کی مقدار بڑی ہوتی ہے، لہذا وائرس زیادہ لمبے فاصلے تک سفر نہیں کرسکتا اور زیادہ دیر تک ہوا میں نہیں رہ سکتا۔ اسی لیے وہ تیزی سے دیواروں یا اطراف کی اشیا پر گرجاتا ہے اور یہ سب انفکشن زدہ ہوجاتی ہیں‘‘۔

گلیریا نے کہا کہ ’’اسی لئے ابتدائی طور پر ہم بوند بوند کے انفیکشن کے ایک حصے کے طور پر دیواروں یا اطراف کی اشیا کی صفائی پر بہت زیادہ فوکس کر رہے ہیں۔ میں کہوں گا کہ سات سے آٹھ مہینوں سے ایروسول ٹرانسمیشن (aerosol transmission) بھی ہورہا ہے‘۔


ایروسول ٹرانسمیشن (aerosol transmission) کا کیا مطلب؟

ایروسول کا مطلب یہ ہے کہ جب کوئی شخص کھانستا یا چھینکتا ہے تو اس کے منہ سے چھوٹے ذرات (جو سائز میں پانچ مائکرون سے کم ہوتے ہیں) ہوا میں تحلیل ہو کر پھیل سکتے ہیں۔ یہ وہی وائرس ہے، جو لمبے عرصے تک ہوا میں رہ سکتا ہے اور لمبا فاصلہ طے کرسکتا ہے۔ لہذا آپ کو کسی ایسا شخص مل سکتا ہے جو آپ سے دو میٹر سے زیادہ کی دوری پر ہو۔ وہ کھانس رہا ہو اور وائرس زیادہ عرصے تک ماحول ؍ ہوا میں رہتے ہیں۔ اگر آپ اس علاقے کو عبور کرتے ہیں تو آپ کو انفیکشن لگنے کا امکان ہوسکتا ہے حالانکہ آپ ہمیشہ اس سے دو میٹر کے فاصلے پر تھے۔

ڈاکٹر رندیپ گلیریا نے ماسک کو مناسب طریقے سے پہننے یہاں تک کہ ڈبل ماسک لگانے اور کراس وینٹیلیشن کی ضرورت پر زور دیا۔ماسک سے متعلق حد کی فیٹیڈ فلٹریشن ایفیشنسی (fitted filtration efficiency) کی جانچ کرنے کے لئے ایک ٹیم نے ایک چھوٹا سا نمک ذرہ ایروسولز (small salt particle aerosols) کے ساتھ اسٹین لیس اسٹیل کی نمائش والے چیمبر سے 10 فٹ بھر دیا۔
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 27, 2021 10:09 AM IST