உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    PM Modi: حکومت لوگوں کی زندگیوں میں مثبت تبدیلی لانے کے لیے کوشاں، عوام بڑھیں آگے

    وزیر اعظم نریندر مودی (Prime Minister Narendra Modi) (فائل فوٹو)

    وزیر اعظم نریندر مودی (Prime Minister Narendra Modi) (فائل فوٹو)

    انہیں اپنا گھر ملنے پر مبارکباد دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ گھر صرف اینٹوں اور سیمنٹ سے بنا ڈھانچہ نہیں ہوتا۔ ہمارے جذبات اور خواہشات بھی اس سے وابستہ ہیں اور گھر کی چاردیواری نہ صرف تحفظ فراہم کرتی ہے بلکہ ایک بہتر کل کا اعتماد بھی دیتی ہے۔

    • Share this:
      وزیر اعظم نریندر مودی (Prime Minister Narendra Modi) نے منگل کے روز کہا کہ ان کی حکومت ہر ضرورت مند خاندان کو مکان فراہم کرنے کے ہدف کے لیے پرعزم ہے۔ اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ وہ مختلف فلاحی اسکیموں کے ذریعے شہریوں کی زندگیوں میں مثبت تبدیلیاں لانے کے لیے مخلصانہ کوششیں کر رہی ہے۔ مودی نے یہ 'پردھان منتری آواس یوجنا' (Pradhan Mantri Awas Yojana) سے فائدہ اٹھانے والے کو اپنے جواب میں لکھا اور کہا کہ اپنی چھت اور مکان ملنے کی خوشی انمول ہے۔

      ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ فائدہ اٹھانے والے مدھیہ پردیش کے ساگر ضلع کے سدھیر کمار جین نے مودی کو لکھے ایک خط میں ہاؤسنگ اسکیم کو بے گھر غریب خاندانوں کے لیے ایک اعزاز قرار دیا تھا۔ جین نے بتایا کہ وہ کرائے کے مکان میں رہ رہے ہیں اور کئی بار مکان بدل چکے ہیں۔ اس نے بار بار مکان بدلنے کا اپنا درد بھی شیئر کیا، اس نے نوٹ کیا۔ جین نے بتایا کہ وہ کرائے کے مکان میں رہ رہے ہیں اور کئی بار مکان بدل چکے ہیں۔

      بہتر کل کا اعتماد:

      انہیں اپنا گھر ملنے پر مبارکباد دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ گھر صرف اینٹوں اور سیمنٹ سے بنا ڈھانچہ نہیں ہوتا۔ ہمارے جذبات اور خواہشات بھی اس سے وابستہ ہیں اور گھر کی چاردیواری نہ صرف تحفظ فراہم کرتی ہے بلکہ ایک بہتر کل کا اعتماد بھی دیتی ہے۔

      اس میں کہا گیا ہے کہ آپ کے اپنے گھر کا خواب پردھان منتری آواس یوجنا کے ذریعے پورا ہوا ہے۔ اس کامیابی کے بعد آپ کے اطمینان کا احساس آپ کے خط میں لکھے گئے الفاظ سے آسانی سے محسوس کیا جا سکتا ہے۔ یہ گھر آپ کے خاندان کی باوقار زندگی کے لیے ایک نئی بنیاد کی طرح ہے۔ یہ آپ کے دونوں بچوں کا بہتر مستقبل کا ضامن ہوگا۔

      یادگار لمحات:

      مودی نے نوٹ کیا کہ اس اسکیم کے تحت کروڑوں استفادہ کنندگان کو پکے مکانات ملے ہیں۔ جین کو لکھے گئے خط میں وزیر اعظم نے کہا کہ مستفید ہونے والوں کی زندگیوں کے یہ یادگار لمحات انہیں قوم کی خدمت میں انتھک اور بلا روک ٹوک کام جاری رکھنے کی ترغیب اور توانائی دیتے ہیں۔

      گزشتہ ایک ہفتے کے دوران دہلی میں کووڈ مثبتیت کی شرح 0.5 فیصد سے بڑھ کر 2.70 فیصد تک پہنچ گئی۔ ڈاکٹروں نے منگل کے روز کہا کہ یہ گھبرانے والی صورتحال نہیں ہے کیونکہ روزانہ کیسز کی تعداد اب بھی کم ہے، لیکن خبردار چوکس رہنے کی ضرورت ہے اور یہ کہ لوگوں کو تمام حفاظتی اصولوں پر عمل کرنا چاہیے اور اطمینان کا احساس پیدا نہیں ہونے دینا چاہیے۔

      مثبتیت کی شرح میں اچانک اضافہ پیر کا اعداد و شمار پچھلے دو مہینوں میں سب سے زیادہ ہے، نے شہر میں کورونا وائرس وبائی امراض کی ممکنہ نئی لہر کے بارے میں تشویش کو جنم دیا ہے۔ ٹیسٹ مثبتیت کی شرح 5 فروری کو 2.87 فیصد تھی۔

      خوف و ہراس کی صورتحال نہیں :

      یہاں کے سرکردہ سرکاری اور نجی اسپتالوں کے ڈاکٹروں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ اگرچہ یہ خوف و ہراس کی صورتحال نہیں ہے لیکن عوام میں بڑے پیمانے پر اطمینان کا احساس ایک تشویش کا معاملہ ہے۔ روزمرہ کے کیسوں میں اضافہ ہوا ہے اور پچھلے کچھ دنوں میں مثبتیت کی شرح بھی بڑھ رہی ہے اور یہ 2.70 فیصد تک بڑھ گئی، جیسا کہ پیر کو بتایا گیا ہے۔

      مزید پڑھیں: EXPLAINED: پاکستان میں سیاسی ہلچل کا باقی دنیا کے لیے کیا ہےمطلب؟ کیاعالمی سیاست ہوگی متاثر؟

      فورٹس ہسپتال میں پلمونولوجی کی کنسلٹنٹ ڈاکٹر ریچا سرین نے کہا کہ میں کہوں گا کہ گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے، کیونکہ یومیہ کیسز کی گنتی اب بھی 130 تا 150 کی حد میں ہے۔ تاہم چوکنا رہنے اور تمام کوویڈ-مناسب طرز عمل کی پیروی کرنے کی ضرورت ہے۔

      ڈاکٹر ریچا سرین نے کہا کہ جب کہ وہ شہری حکومت کے ماسک مینڈیٹ کو ہٹانے کے حالیہ اقدام پر تنقید کرتی رہی ہیں۔ یہ کوئی مستحکم فیصلہ نہیں تھا اور اگر صورت حال کی تائید ہوتی ہے تو قواعد کو دوبارہ تبدیل کیا جا سکتا ہے۔ پی ٹی آئی کے ڈاکٹروں نے بھی اس بات پر اتفاق کیا کہ ویکسینیشن اور ہرڈ امیونٹی نے لوگوں کو یقینی طور پر تحفظ کی سطح بھی فراہم کی ہے۔

      احتیاطی خوراک فراہم کرنے کی مشق جاری :

      ملک بھر میں ویکسینیشن کی مشق جنوری 2021 میں شروع ہوئی تھی اور فی الحال احتیاطی خوراک فراہم کرنے کی مشق جاری ہے۔ شہر کے محکمہ صحت کے اشتراک کردہ اعداد و شمار کے مطابق دہلی میں پیر کے روز 137 نئے COVID-19 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جن میں مثبتیت کی شرح 2.70 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

      یہ بھی پڑھئے : کیا رمضان کے مہینہ میں میک اپ کرنے سے ٹوٹ جاتا ہے روزہ؟



      دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے منگل کو کہا کہ ان کی حکومت دارالحکومت میں کوویڈ کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے اور فی الحال گھبرانے کی کوئی بڑی وجہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر تمام ضروری اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ شہر کے وزیر صحت ستیندر جین نے پیر کو کہا تھا کہ شہری حکومت COVID-19 کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہے اور جب تک تشویش کی نئی قسم کا پتہ نہیں چل جاتا ہے اس وقت تک پریشان ہونے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: