உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained Hajj 2022: حج 2022 کےلیے آن لائن درخواست کیسےدیں؟ پیش ہےآپ کیلئےمرحلہ واررہنمائی

    حج درخواست فارم 2022 کے لیے مرحلہ وار گائیڈ

    حج درخواست فارم 2022 کے لیے مرحلہ وار گائیڈ

    عازمین حج کو اب اپنی درخواستیں صرف ویب سائٹ پر یا گوگل پلے اسٹور پر دستیاب حج کمیٹی آف انڈیا نامی موبائل ایپلیکیشن پر آن لائن داخل کرنا ہوگا۔ اسی ضمن میں نیوز 18 اردو کی جانب سے مکمل رہنمائی پیش ہے:

    • Share this:
    حج 2022 کے لیے آن لائن درخواست کا عمل پیر کے روز مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی Mukhtar Abbas Naqvi کے ذریعے شروع ہوچکا ہے۔ جنھوں نے حج 2022 کے لیے اہم اصلاحات اور بہتر سہولیات کا اعلان بھی کیا۔ جنوبی ممبئی میں واقع حج ہاؤس Haj House میں حج 2022 کا اعلان کرتے ہوئے نقوی نے کہا کہ حج کا پورا عمل 100 فیصد ڈیجیٹل/آن لائن ہوگا۔

    رجسٹریشن کا عمل شروع ہوتا ہے، نیوز 18 اردو حج 2020 کے تحت آن لائن درخواست دینے کے لیے مرحلہ وار رہنمائی فراہم کررہا ہے۔ واضح رہے کہ ریاستی حج کمیٹیاں ہاتھ سے لکھی یا ٹائپ شدہ درخواستوں کی ہارڈ کاپی قبول نہیں کریں گی۔ عازمین حج کو اب اپنی درخواستیں صرف www.hajcommittee.gov.in پر یا گوگل پلے اسٹور پر دستیاب "HAJ COMMITTEE OF INDIA" نامی موبائل ایپلیکیشن پر آن لائن داخل کرنا ہوگا۔ مختار عباس نقوی نے ٹوئٹ کیا کہ ’’مودی حکومت نے حج انتظامات میں وسیع اصلاحات کی ہیں۔ حج سبسیڈی ختم ہونا، مکمل حج کے عمل کا صدفیصد آن۔لاءن۔ / ڈیجیٹل ہونا، بغیر "محرم" کے خواتین کا سفرِحج ، حج سبسیڈی ختم ہونےکے باوجود سفرِحج کا مہنگا نہ ہونا، کم سے کم عملدرآمد ہوگا‘‘۔


    درخواست جمع کرانے کا عمل شروع ہونے سے پہلے حج 2022 کے لیے درخواست دینے کے لیے درج ذیل دستاویزات ضروری ہیں:

    پاسپورٹ Passport:
    درخواست گزار کا ایک مخصوص تاریخ والا پاسپورٹ حج کی درخواست دینے کے لیے ضروری دستاویز ہے۔ آخری لمحات کے رش سے بچنے کے لیے تمام عازمین حج کے پاس درست ہندوستانی بین الاقوامی پاسپورٹ ہونا چاہیے جو درخواست کی تاریخوں سے پہلے جاری کیا گیا ہو۔

    بینک اکاؤنٹ Bank Account:
    حج کی درخواست دینے کے لیے کور ہیڈ کا بینک اکاؤنٹ لازمی ہے۔ تاہم تمام حاجیوں کو مشورہ دیا جاتا ہے کہ وہ اپنا بینک اکاؤنٹ کھولیں/اپ ڈیٹ کریں تاکہ ضرورت پڑنے پر رقم کی واپسی براہ راست ان کے بینک اکاؤنٹس میں جمع کی جا سکے۔

    آدھار کارڈ Aadhaar Card:
    حج کمیٹی آف انڈیا نے مشورہ دیا ہے کہ ہر حاجی کو آدھار کارڈ حاصل کرنا چاہیے اور حج درخواست فارم میں مخصوص کالم میں مطلوبہ تفصیلات کا ذکر کرنا چاہیے۔ تاہم، حج کی درخواستیں دینے کے لیے آدھار کارڈ لازمی نہیں ہے۔

    موبائل نمبر Mobile Number:
    تمام عازمین حج درخواست میں اپنا موبائل نمبر درج کریں اور اسے فعال رکھیں تاکہ جب بھی ضرورت ہو حکام ان سے رابطہ کر سکیں۔

    حج درخواست فارم 2022 کے لیے مرحلہ وار گائیڈ:

    مرحلہ 1: حج درخواست کے لیے نئی رجسٹریشن

    مرحلہ 2: حج درخواست فارم پُر کریں۔

    مرحلہ 3: تصویر اور دستاویزات اپ لوڈ کریں۔

    مرحلہ 4: فیس کی ادائیگی کریں۔

    تفصیل سے اقدامات:

    مرحلہ 1: hajcommittee.gov.in کی آفیشل ویب سائٹ پر جائیں اور "HAJ فارم" پر کلک کریں اور "Apply" کو منتخب کریں۔

    ایک اسکرین ظاہر ہوگی۔ وہاں ’’نیا صارف رجسٹریشن‘‘ پر کلک کریں۔

    ’’نیا صارف رجسٹریشن‘‘ پر کلک کرنے کے بعد رجسٹریشن فارم کو احتیاط سے پُر کریں۔ درخواست دہندگان کو اپنا موبائل نمبر، ای میل آئی ڈی، پہلا نام، اور آخری نام بھرنا ہوگا۔ مضبوط پاس ورڈ کا انتخاب کریں اور پاس ورڈ کی دوبارہ تصدیق کریں۔

    سیکیورٹی کوڈ درج کریں۔ اگر معلومات درست ہیں، تو چیک باکس پر کلک کریں اور ’’تفصیلات جمع کروائیں‘‘ پر کلک کریں۔

    مرحلہ 2: اکاؤنٹ کی تصدیق۔ OTP کے کامیاب جمع کرانے پر ایک تصدیقی پیغام اسکرین پر ظاہر ہوگا۔ آپ کا اکاؤنٹ چالو کر دیا گیا ہے؛ اب آپ لاگ ان کر سکتے ہیں۔

    مرحلہ 3: اکاؤنٹ ایکٹی ویشن

    رجسٹرڈ یوزر سائن ان اور درخواست فارم بھرنا

    سال 2022 کے لیے آن لائن حج درخواست فارم بھرنے کے لیے رجسٹرڈ موبائل نمبر اور پاس ورڈ درج کریں۔

    مرحلہ 4: سائن ان کریں۔ سائن ان کرنے کے بعد درج ذیل اسکرین ظاہر ہوگی۔ مناسب درخواست کے زمرے پر کلک کریں۔ ڈراپ ڈاؤن سے بالغوں کی تعداد منتخب کریں اگلا بٹن پر کلک کریں:

    مرحلہ 5: درخواست کا زمرہ

    درخواست دہندگان کی تفصیلات پُر کریں:
    درخواست دہندہ کی تفصیلات (بھارتی بین الاقوامی پاسپورٹ کے مطابق)، کووڈ-19 ویکسینیشن کی تفصیلات، ذاتی تفصیلات، موجودہ رہائشی پتہ، نامزد کی تفصیلات، بینک اکاؤنٹ کی تفصیلات وغیرہ کو پُر کریں۔ تمام تفصیلات درج کرنے کے بعد اعلان پر کلک کریں اور 'محفوظ کریں اور اگلا' بٹن ڈبائیں۔

    مرحلہ 6: درخواست کی تفصیلات۔
    تصویر اور دستاویز اپ لوڈ کریں۔

    - ڈراپ ڈاؤن سے حاجیوں کو منتخب کریں۔

    - تصویر اور دستاویز اپ لوڈ کرنے کے لیے "براؤز" پر کلک کریں۔

    -تمام دستاویزات صرف JPG/JPEG فارمیٹ میں ہونے چاہئیں۔

    -تصویر (پاسپورٹ سائز) 10kb سے 100kb کے درمیان اور چوڑائی 100 پکسل سے 148 پکسل کے درمیان ہونی چاہیے۔

    -دستاویزات کا سائز 100kb سے 500kb اور چوڑائی 570 پکسل سے 795 پکسل کے درمیان ہونا چاہیے۔

    مرحلہ 7: دستاویزات: اپ لوڈ کریں۔

    تمام حاجیوں کی تصاویر اور دستاویزات اپ لوڈ کرنے کے بعد ’اپ لوڈ' بٹن پر کلک کریں۔ مندرجہ بالا اقدامات ہر شریک حاجی کے لیے دہرائے جائیں۔

    مرحلہ 8: فیس کی ادائیگی کریں۔

    - تصاویر اپ لوڈ کرنے کے بعد درخواست دہندگان خود بخود فیس کی ادائیگی کے لیے لنک پر جائیں گے۔

    - درخواست دہندگان ڈیبٹ/کریڈٹ کارڈ/نیٹ بینکنگ کے ذریعے فیس ادا کر سکتے ہیں۔

    "آن لائن ادائیگی" کو منتخب کریں اور "آن لائن ادائیگی کے لیے یہاں کلک کریں" پر کلک کریں۔

    -پے آن لائن پر کلک کرنے کے بعد آپ کو دوبارہ ادائیگی کے گیٹ وے پر بھیج دیا جائے گا اور ادائیگی کریں گے۔

    لین دین کی کامیابی سے تکمیل پر ایک لین دین کی رسید تیار کی جائے گی۔ کامیاب ادائیگی کے بعد براہ کرم فائنل جمع کرانے کے لیے آن لائن HAF میں دوبارہ لاگ ان کریں۔ "FINAL SUBMISSION" پر کلک کریں، آپ کو الرٹ میسج ملے گا۔ Ok پر کلک کریں۔

    مرحلہ 9: حتمی جمع کروانا

    حج درخواست فارم پرنٹ نکالیں:

    ایک منفرد سسٹم سے تیار کردہ گروپ آئی ڈی ظاہر کی جائے گی، جو آن لائن جمع کرانے کی کامیابی کی تکمیل کی نشاندہی کرتی ہے۔ آن لائن حج درخواست فارم کو دیکھنے/ پرنٹ کرنے کے لیے، "PDF ڈاؤن لوڈ کریں" پر کلک کریں۔

    حج کمیٹی آف انڈیا کے عہدیداروں نے کہا کہ اگر دستاویزات اپ لوڈ ہیں، تو اس مرحلے پر اپنے پرنٹ شدہ HAF اور دستاویزات کو اپنی متعلقہ ریاستی حج کمیٹی میں جمع کرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ اگر دستاویزات اپ لوڈ نہیں کیے گئے ہیں، تو برائے مہربانی حج درخواست کا عمل مکمل کرنے کے لیے 31-01-2022 سے پہلے اپنی متعلقہ اسٹیٹ حج کمیٹی کو دستاویزات کے ساتھ ایک پرنٹ شدہ حج درخواست کی کاپی جمع کرائیں۔
    عازمین حج کو مندرجہ ذیل دستاویزات بطور انکلوژر اپ لوڈ کرنا ہوں گی۔

    1) ناقابل واپسی پروسیسنگ فیس کی ادائیگی 300/- ہر ایک (صرف آن لائن)۔

    2) حج درخواست فارم آن لائن بھریں اور جمع کرائیں۔

    3) مشین پڑھنے کے قابل درست ہندوستانی بین الاقوامی پاسپورٹ کا پہلا اور آخری صفحہ اپ لوڈ کریں۔

    4) تازہ ترین پاسپورٹ سائز تصویر اپ لوڈ کریں۔

    5) کور ہیڈ کے منسوخ شدہ چیک کی ایک کاپی اپ لوڈ کریں۔

    6) ایڈریس پروف کی ایک کاپی اپ لوڈ کریں: اگر موجودہ پتہ وہی ہے جو پاسپورٹ میں درج ہے، تو پاسپورٹ کی ایک کاپی کافی ہوگی، اور کسی اور دستاویز کی ضرورت نہیں ہوگی۔ دیگر معاملات میں، حج درخواست فارم کی صحیح طریقے سے بھری ہوئی ڈاؤن لوڈ کی گئی کاپی کے ساتھ درج ذیل میں سے کسی ایک کی خود تصدیق شدہ کاپی منسلک کی جائے۔

    - آدھار کارڈ

    -بینک پاس بک

    -الیکشن کمیشن فوٹو شناختی کارڈ؛ یا

    -گزشتہ تین ماہ کا یوٹیلیٹی بل:

    -بجلی کا بل

    -ٹیلی فون بل (لینڈ لائن)۔

    کور نمبر کیا ہے؟

    کور نمبر ایک منفرد کمپیوٹر سے تیار کردہ نمبر ہے جسے IHPMS سافٹ ویئر سے حج کمیٹی آف انڈیا نے ریاستی اور مرکزی زیر انتظام علاقائی حج کمیٹیوں کے ذریعے حجاج کے ڈیٹا انٹری اور متعلقہ دستاویزات کی تصدیق کے بعد حاصل کیا ہے۔ ریاست / مرکز کے زیر انتظام حج کمیٹیاں کور ہیڈ کو کور نمبر بتاتی ہیں۔ درخواست دہندگان کو مستقبل کے تمام خط و کتابت میں اس کور نمبر کو بطور حوالہ استعمال کرنا چاہیے۔ عازمین حج کو ریاستی/UT حج کمیٹیوں سے کور نمبر حاصل کرنا ہوگا کیونکہ کور نمبر کے بغیر قرہ (لاٹری) کے لیے حج درخواست پر غور نہیں کیا جائے گا۔

    کور سے مراد وہ درخواست دہندگان ہیں جو ایک گروپ کے طور پر اکٹھے درخواست دے رہے ہیں، اور صرف خاندان کے افراد یا قریبی رشتہ داروں کو ہی ایک کور میں رکھا جانا چاہیے۔ کور ہیڈ صرف ایک بالغ مرد ہو گا، اور وہ کور میں شامل تمام درخواست دہندگان کی ادائیگیوں کا ذمہ دار ہوگا۔

    ایک کور میں درخواست دینے والے تمام درخواست دہندگان کی رہائش کی کیٹیگری ایک جیسی ہونی چاہیے۔ ایک کور میں تمام حاجیوں کو ایک ساتھ سفر کرنا ہوگا۔ مطلوبہ یونٹ یا جگہ کی عدم دستیابی کی وجہ سے KSA میں رہائش فراہم کرنے سے متعلق معاملات کے علاوہ کسی بھی صورت میں کور تقسیم نہیں ہوگا۔

    قرعہ (لاٹری) کیا ہے؟

    قرعہ سے مراد کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی ہے۔ جن ریاستوں/مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں حج کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں ان کے کوٹے سے زیادہ ہیں، حجاج کا انتخاب عارضی طور پر کور پر کرائے گئے قرہ کے ذریعے کیا جائے گا۔ قرہ کو متعلقہ ریاستوں/UT حج کمیٹیوں کے ذریعے IHPMS سافٹ ویئر پر مکمل کیا جائے گا، جو کہ حج کمیٹی آف انڈیا کے سرور پر برقرار ہے۔ قرہ کے فوراً بعد، ریاستی/ مرکز کے زیر انتظام حج کمیٹیاں عارضی طور پر منتخب عازمین کو ان کے انتخاب کی حیثیت سے آگاہ کریں گی۔ تمام منتخب شدہ عازمین کو ان کے رجسٹرڈ موبائل نمبر پر ایس ایم ایس کے ذریعے بھی مطلع کیا جائے گا۔ عازمین حج کمیٹی کی ویب سائٹ پر بھی اپنی حیثیت کی جانچ کر سکتے ہیں۔
    Published by:Mirzaghani Baig
    First published: