உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    EXPLAINED: تباہ ہونے والے چینی طیارے کے بلیک باکسز کو کیسے کیا جائے گاہینڈل ؟

    حادثے کی عبوری رپورٹیں ایک ماہ بعد شائع ہوتی ہیں لیکن اکثر ان رپورٹیں کی دوبارہ تحقیق کی جاتی ہیں۔ اس دوران مکمل تحقیقات کو مکمل ہونے میں ایک سال یا اس سے زیادہ وقت لگتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ فضائی حادثات عام طور پر عوامل کے کاک ٹیل کی وجہ سے ہوتے ہیں۔

    حادثے کی عبوری رپورٹیں ایک ماہ بعد شائع ہوتی ہیں لیکن اکثر ان رپورٹیں کی دوبارہ تحقیق کی جاتی ہیں۔ اس دوران مکمل تحقیقات کو مکمل ہونے میں ایک سال یا اس سے زیادہ وقت لگتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ فضائی حادثات عام طور پر عوامل کے کاک ٹیل کی وجہ سے ہوتے ہیں۔

    حادثے کی عبوری رپورٹیں ایک ماہ بعد شائع ہوتی ہیں لیکن اکثر ان رپورٹیں کی دوبارہ تحقیق کی جاتی ہیں۔ اس دوران مکمل تحقیقات کو مکمل ہونے میں ایک سال یا اس سے زیادہ وقت لگتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ فضائی حادثات عام طور پر عوامل کے کاک ٹیل کی وجہ سے ہوتے ہیں۔

    • Share this:
      چینی حکام نے بدھ کے روز کہا کہ انہوں نے چائنا ایسٹرن ایئرلائنز (China Eastern Airlines) کے طیارے کا ایک بلیک باکس برآمد کر لیا ہے جو پیر کے روز پہاڑ کے کنارے گرا تھا جس میں 132 افراد سوار تھے۔ چین کے ایوی ایشن ریگولیٹر (China’s aviation regulator) کے ایک اہلکار نے بتایا کہ برآمد ہونے والا آلہ طیارے کا کاک پٹ وائس ریکارڈر ہے۔

      اسی دوارن ابتدائی تشخیص کی بنیاد پر انہوں نے مزید کہا کہ ریکارڈنگ کا مواد نسبتاً اچھی حالت میں اثر سے بچتا دکھائی دیتا ہے۔ ریگولیٹر نے ماڈلز کا نام لیے بغیر کہا کہ جیٹ کے دونوں بلیک باکس ہنی ویل نے تیار کیے تھے۔ بلیک باکس پڑھنے کا عمل اس طرح کام کرتا ہے۔

      بلیک باکسز کیا ہیں؟

      وہ اصل میں سیاہ نہیں ہیں لیکن زیادہ مرئی نارنجی ہیں۔ ماہرین اس بات سے متفق نہیں ہیں کہ عرفیت کی ابتدا کیسے ہوئی لیکن یہ طیاروں کے کریش ہونے پر جوابات کی تلاش کا مترادف بن گیا ہے۔ بہت سے مورخین اپنی ایجاد کو 1950 کی دہائی میں آسٹریلوی سائنسدان ڈیوڈ وارن سے منسوب کرتے ہیں۔ وہ لازمی ہیں۔ مقصد قانونی ذمہ داری قائم کرنا نہیں ہے بلکہ اسباب کی نشاندہی کرنا اور حادثات کو روکنے میں مدد کرنا ہے۔

      وہ کیسے تیار ہوئے ہیں؟

      قدیم ترین آلات تار یا ورق پر محدود ڈیٹا ریکارڈ کرتے تھے۔ جدید لوگ ٹھوس اسٹیٹ میموری کا استعمال کرتے ہیں۔ ریکارڈنگز کو حادثے سے بچنے کے قابل کنٹینرز کے اندر رکھا گیا ہے جو اثر پر کشش ثقل کی قوت سے 3,400 گنا زیادہ برداشت کر سکتے ہیں۔ دونوں بلیک باکس کی ریکارڈنگ مارچ 2019 میں ایتھوپیا کی ایئر لائنز 737 MAX کے حادثے سے برآمد ہوئی تھی جو چائنا ایسٹرن ہوائی جہاز کی طرح بہت تیز رفتاری سے زمین پر گرا تھا۔

      مزید پڑھیں: امتحانات کاحجاب معاملےسے کوئی تعلق نہیں، Supreme Court نےحجاب معاملہ پر فوری سماعت سےکیاانکار

      وہ کتنے بڑے ہیں؟

      ان کا وزن تقریباً 10 پاؤنڈ (4.5 کلوگرام) ہے اور ان کے چار اہم حصے ہیں: ایک چیسس یا انٹرفیس ڈیوائس کو محفوظ بنانے اور ریکارڈنگ اور پلے بیک کی سہولت کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ اس کے دو ریکارڈرز ہیں، جس میں پائلٹ کی آوازوں اور کاک پٹ آوازوں کے لیے ایک کاک پٹ وائس ریکارڈر (CVR) اور ایک فلائٹ ڈیٹا ریکارڈر (FDR) جو اونچائی، ہوا کی رفتار، سرخی اور انجن کے زور سمیت پیرامیٹرز پر معلومات حاصل کرتا ہے۔

      ریکارڈرز کو کیسے ہینڈل کیا جائے گا؟

      تکنیکی ماہرین حفاظتی مواد کو چھیلتے ہیں اور کنکشن کو احتیاط سے صاف کرتے ہیں تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ وہ غلطی سے ڈیٹا کو مٹا نہیں دیتے ہیں۔ آڈیو یا ڈیٹا فائل کو ڈاؤن لوڈ اور کاپی کرنا ضروری ہے۔ پہلے تو ڈیٹا کا کوئی مطلب نہیں۔ گراف میں تبدیل ہونے سے پہلے اسے خام فائلوں سے ڈی کوڈ کرنا ضروری ہے۔ تفتیش کار بعض اوقات سپیکٹرل تجزیہ کا استعمال کرتے ہیں۔ آوازوں کی جانچ کرنے کا ایک طریقہ جو سائنس دانوں کو بمشکل سنائی دینے والے الارم یا دھماکے کے پہلے لمحاتی شگاف کو منتخب کرنے کی اجازت دیتا ہے۔

      کتنی معلومات دستیاب ہیں؟

      یہ ہنی ویل ریکارڈرز کے عین مطابق ماڈلز پر منحصر ہوگا، جن کا انکشاف نہیں کیا گیا ہے۔ ایک ایئر انڈیا ایکسپریس 737-800 جس میں دو ہنی ویل بلیک باکس ہیں جو 2020 میں شدید بارش میں رن وے کو اوور شوٹنگ کرنے کے بعد کریش ہو گئے تھے۔ مذکورہ حادثے کی حتمی رپورٹ کے مطابق 120 منٹ کی ڈیجیٹل آڈیو کے قابل CVR تھا۔ یہ 66 منٹ کی چائنا ایسٹرن فلائٹ کو پورا کرنے کے لیے کافی سے زیادہ ہوگا۔ ایئر انڈیا ایکسپریس کے طیارے پر ایف ڈی آر نے تقریباً 25 گھنٹے کی فلائٹ ڈیٹا کو ریکارڈ کیا۔

      مزید پڑھیں: حجاب کے مسئلہ پر سالانہ امتحانات کے پیش نظر بنگلورو کے دارالعلوم سبیل الرشاد میں ہوئی اہم میٹنگ

      ڈیٹا کہاں پڑھا جائے گا؟

      چین کے ایوی ایشن ریگولیٹر کے ایک اہلکار ژو تاؤ نے کہا کہ دریافت ہونے والا پہلا بلیک باکس بیجنگ کے ایک انسٹی ٹیوٹ کو ڈی کوڈنگ کے لیے بھیجا جا رہا ہے، حالانکہ اس میں کتنا وقت لگتا ہے اس کا انحصار نقصان کی حد پر ہو گا۔

      نتائج کب پبلک کیے جائیں گے؟

      حادثے کی عبوری رپورٹیں ایک ماہ بعد شائع ہوتی ہیں لیکن اکثر ان رپورٹیں کی دوبارہ تحقیق کی جاتی ہیں۔ اس دوران مکمل تحقیقات کو مکمل ہونے میں ایک سال یا اس سے زیادہ وقت لگتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ فضائی حادثات عام طور پر عوامل کے کاک ٹیل کی وجہ سے ہوتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: