உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہشت گردی کے بارے میں کملا ہیرس نے پاکستان کا دیا حوالہ، ہندوستان کے لیے اس کا کیا ہے مطلب ؟

    Youtube Video

    کملا ہیرس نے اس بات کو دہرایا کہ ہندوستان انڈو پیسفک میں ایک اتحادی ہے اور مزید کہا کہ امریکہ، ہندوستان کی طرح انڈو پیسفک کا رکن ہونے کے بارے میں بہت فخر محسوس کرتا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      اس بات کو ہندوستان کی جیت کے طور پر دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ بین الاقوامی برادری پر دباؤ ڈال رہا ہے کہ وہ اپنے پڑوسی کے دہشت گردی کی مدد میں کردار کو تسلیم کرے۔ اسی ضمن میں امریکی نائب صدر کملا ہیرس Kamala Harris نے وزیر اعظم نریندر مودی Narendra Modi سے ملاقات کے دوران پاکستان کے کردار کا 'از خود نوٹس' لیا۔

      جب دہشت گردی کا مسئلہ سامنے آیا تو نائب صدر نے اس سلسلے میں پاکستان کے کردار کا حوالہ دیا۔ فارن سیکریٹری ہرش وردھن شکلا Harsh Vardhan Shringla کے مطابق ہیرس نے کہا کہ دہشت گرد گروہ ہیں جو پاکستان میں کام کر رہے ہیں۔

      انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے حوالے سے امریکی نائب صدر کملا ہیرس نے اس حوالے سے پاکستان کے کردار کا حوالہ دیا۔ انہوں نے کہا کہ وہاں دہشت گرد گروہ کام کر رہے ہیں۔ انہوں نے پاکستان سے کہا کہ وہ کارروائی کرے تاکہ یہ گروہ امریکی سلامتی اور ہندوستان کی سلامتی کو متاثر نہ کریں۔ حارث نے کہا کہ دونوں ملکوں کے عوام کے بہترین مفادات میں جمہوریتوں کا تحفظ کرنا دونوں ملکوں کا فرض ہے۔


      چونکہ دنیا بھر میں جمہوریتیں خطرے میں ہیں، یہ ضروری ہے کہ ہم اپنے متعلقہ ممالک اور دنیا بھر میں جمہوری اصولوں اور اداروں کا دفاع کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہم گھروں میں جمہوریت کو مضبوط بنانے کے لیے جو کچھ کرنا چاہیے اسے برقرار رکھتے ہیں اور ہماری قوموں پر لازم ہے کہ وہ اپنے ملکوں کے لوگوں کے بہترین مفادات میں جمہوریتوں کی حفاظت کریں۔ ان کی ملاقات مودی اور صدر جو بائیڈن Joe Biden کے درمیان پہلی دوطرفہ ملاقات اور جمعہ کو وائٹ ہاؤس میں کواڈ لیڈرز سمٹ Quad Leaders’ Summit سے ایک دن پہلے ہوئی ہے۔

      پاکستان پر زور دار حملہ

      یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ امریکہ نے دہشت گردی پر پاکستان پر زور دار حملہ کیا ہو۔ افغانستان سے امریکی انخلاء کے دوران امریکی قانون سازوں نے پارٹی لائنوں کو کاٹتے ہوئے افغانستان میں اس کے تخریبی کردار کے لیے اسلام آباد کے خلاف مزید سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ کمیٹی کے اولین دو اراکین نیو جرسی کے ڈیموکریٹ باب مینینڈیز اور اڈاہو ریپبلکن جیمز رِش نے اپنے ابتدائی بیانات میں انخلاء کو ایک شکست کے طور پر قبول کیا اور افغانستان میں دوہرے سلوک پر پاکستان کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا۔

      سینیٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے چیئرمین باب مینینڈیز نے زور دے کر کہا کہ ہمیں پاکستان کے دوہرے معاملات کو سمجھنے اور طالبان کو محفوظ پناہ گاہ فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ امریکی سینیٹر مارکو روبیو نے کہا کہ انہیں پورے معاملے میں پاکستان کے کردار کو سمجھنا چاہیے اور کہا کہ یہ ایک مشکل مگر اہم صورتحال ہے۔

      اس ملاقات کے دوران پی ایم مودی نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ دنیا کی سب سے بڑی اور قدیم جمہوریت کے طور پر قدرتی شراکت دار ہیں۔
      اس ملاقات کے دوران پی ایم مودی نے کہا کہ ہندوستان اور امریکہ دنیا کی سب سے بڑی اور قدیم جمہوریت کے طور پر قدرتی شراکت دار ہیں۔


      افغانستان میں گندا کھیل:

      امریکہ کا افغانستان سے دیرینہ انخلا پاکستان کے ساتھ کئی دہائیوں پرانے باہمی تعلقات میں تازہ ترین نقطہ نظر ہے۔ اسلام آباد کو طویل عرصے سے امریکہ نے طالبان میں ثالث کے طور پر دیکھا تھا، لیکن امریکہ کے نکلنے کے بعد امریکی انتظامیہ اسے طالبان کی فتح کے پیچھے ایک وجہ کے طور پر دیکھ رہی ہے۔

      پاکستان کے افغانستان میں حالات کو کنٹرول کرنے کے لیے آئی ایس آئی کے سربراہ کے ساتھ مبینہ طور پر طالبان کے حریف طبقات کے درمیان ثالث کے طور پر کام کرنے کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ پاکستان افغانستان میں اپنی چالیں کھیل رہا ہے۔ آئی ایس آئی کے سربراہ نے طالبان کی عبوری حکومت میں حقانی دھڑے کا بڑا حصہ یقینی بنایا۔

      افغانستان کی صورتحال کو ختم کرنے کے لیے یہ واضح ہے کہ افغانستان میں علاقائی انتشار نے امریکہ پاکستان تعلقات کے لیے بہت کم گنجائش چھوڑ دی ہے۔ یہ حقیقت ہے کہ بدلتی ہوئی جغرافیائی سیاسی صف بندی میں پاکستان چین اور طالبان کے ساتھ نظر آتا ہے۔

      امریکہ اور ہندوستانی جمہوریت کے لیے مسئلہ:

      اپنے رسمی دفتر میں پی ایم مودی کا استقبال کرتے ہوئے کملا ہیرس نے کہا کہ دنیا بھر میں جمہوریتیں خطرے میں ہیں، یہ ضروری ہے کہ ہم اپنے متعلقہ ممالک اور دنیا بھر میں جمہوری اصولوں اور اداروں کا دفاع کریں اور یہ کہ ہم جو کچھ کرنا چاہتے ہیں اسے برقرار رکھیں اور ہمارے ملک کے عوام کے بہترین مفاد میں جمہوریت کی حفاظت کرنا فرض ہے۔

      انہوں نے کہا کہ ہندوستان امریکہ کا بہت اہم شراکت دار ہے۔ ہماری پوری تاریخ میں ہماری قوموں نے مل کر کام کیا ہے اور ساتھ کھڑے ہی ، تاکہ ہماری دنیا کو ایک محفوظ اور مضبوط دنیا بنایا جا سکے۔

      کملا ہیرس نے اس بات کو دہرایا کہ ہندوستان انڈو پیسفک میں ایک اتحادی ہے اور مزید کہا کہ امریکہ، ہندوستان کی طرح انڈو پیسفک کا رکن ہونے کے بارے میں بہت فخر محسوس کرتا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: