ہوم » نیوز » Explained

کووڈ ۔19 کا پتہ لگانے کے کیا طریقے ہیں، پازیٹو اور نگیٹو رپورٹ کا کیا مطلب ہے؟

یہ وائرس پہلی بار مشرقی ایشیاء کے ایک محدود حصے میں 2002 میں نمودار ہوا تھا اور اس وقت اسے SARS COV 1 کا نام دیا گیا تھا۔ یہ وائرس یا تو DNA (deoxy- nucleic acid-DNA) یا RNA (رائیبو نیوکلیئک ایسڈ) وائرس ہوسکتا ہے۔

  • Share this:
کووڈ ۔19 کا پتہ لگانے کے کیا طریقے ہیں، پازیٹو اور نگیٹو رپورٹ کا کیا مطلب ہے؟
یہ وائرس پہلی بار مشرقی ایشیاء کے ایک محدود حصے میں 2002 میں نمودار ہوا تھا اور اس وقت اسے SARS COV 1 کا نام دیا گیا تھا۔ یہ وائرس یا تو DNA (deoxy- nucleic acid-DNA) یا RNA (رائیبو نیوکلیئک ایسڈ) وائرس ہوسکتا ہے۔

کووڈ کورونا وائرس ایک بیماری ہے جو SARS COV 2 (Severe Acute Respiratory Syndrome COrona Virus 2)) کی وجہ سے ہوتا ہے۔ اس کو یہ نام اس لئے دیا گیا ہے کیونکہ یہ پھیپھڑوں کو بہت متاثر کرتا ہے۔ چین میں اس بیماری کا پہلا کیس دسمبر 2019 میں سامنے آیا تھا۔ لہذا اسے (COVID 19) کا نام دیا گیا۔ یہ وائرس پہلی بار مشرقی ایشیاء کے ایک محدود حصے میں 2002 میں نمودار ہوا تھا اور اس وقت اسے SARS COV 1 کا نام دیا گیا تھا۔ یہ وائرس یا تو DNA (deoxy- nucleic acid-DNA) یا RNA (رائیبو نیوکلیئک ایسڈ) وائرس ہوسکتا ہے۔ کورونا وائرس آر این اے وائرس ہے۔ نیوکلیئک ایسڈ اس وائرس کیلئے انسانی جسم کی روح جیسی جنیاتی چیز ہے۔ اس لئے کسی جسم میں وائرس کے انفیکشن کا پتہ لگانے کے لئے ہمیں وائرس کی روح کو تلاش کرنا ہوتا ہے۔ کچھ ٹیسٹ نیوکلیئک ایسڈ یا روح کا پتہ لگانے کے لئے کچھ جانچ کی جاتی ہیں۔ آئیے یہاں اس کی جانچ کے بارے میں جانتے ہیں۔


کووڈ ۔19 کا پتہ لگانے کے کیا طریقے ہیں؟

وائرس کا پتہ لگانے کے لئے دو طریقے اختیار کیے جارہے ہیں: آر ٹی پی سی RTPCR آر اور آر اے ٹی RAT (کارڈ ٹیسٹ)۔

آر ٹی پی سی آر RTPCR کیا ہے؟

آر ٹی پی سی آر کا مطلب ہے Reverse Transcriptase Polymerase Chain Reaction جسے ریئل ٹائم پی سی آر PCR بھی کہا جاتا ہے۔ یہ طریقہ آر این اے کو بڑھاوا دینے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے (جیسے اس کی متعدد کاپیاں تیار کرنا) کیونکہ نمونہ آر این اے RNA میں وائرس بہت کم مقدار میں موجود ہوتا ہے۔ اس کئی گنا اس لئے بڑھایا جاتا ہے تاکہ کم وقت میں ہی وائرس کی موجودگی کا درست پتہ لگایا جاسکے۔ چونکہ مشین کو ٹیسٹ کا نتیجہ دینے میں صرف 3-6 گھنٹے لگتے ہیں لیکن نمونے کی بڑی تعداد کی وجہ سے اس کی رپورٹ آنے میں کافی وقت لگ جاتا ہے۔

پازیٹو اور نگیٹو رپورٹ کا کیا مطلب ہے؟

صحیح مثبت کا مطلب ہے کہ ٹیسٹ میں وائرس کا پتہ غلط چلا ہے اور جو نمونہ لیا گیا یہ وائرس دراصل اس میں موجود تھا۔ (اگر جانچ رپورٹ مثبت ہے تو ، اس کا مطلب ہے کہ نمونے میں وائرس موجود ہے)۔

صحیح نگیٹو کا مطلب یہ ہے کہ جب وائرس نمونے میں موجود نہیں ہوتا ہے تو دراصل جانچ رپورٹ نگیٹو آتی ہے۔

غلط نگیٹو کا مطلب ہے کہ نمونے میں وائرس ہونے کے باوجود جانچ میں اس کا پتہ نہیں چل پایا ہے جانچ رپورٹ نگیٹو ہونے کا مطلب نمونے میں وائر س موجود ہے۔ اس طرح پازیٹو جانچ کا مطلب ہوا وائرس کی موجودگی لیک نگیٹو رپورٹ کا مطلب یہ نہیں ہے کہ وائرس ضروری طور پر سے موجود نہیں ہے۔ اسی لئے ایک بار RTPCR جانچ کرانے کو کہا جاتا ہے۔

آر ٹی پی سی آر کتنا حساس ہے؟
حساس کا مطلب وائرس کا پتہ لگانے کی اپنی صلاحیت ، مثال کے طور پر یہ جانچ کرنے کی صلاحیت جو صحیح مثبت نتائج دے سکتی ہے۔
ناک اور گلے سے اٹھائے گئے سواب کے نمونوں میں آر ٹی پی سی آر RTPCR ٹیسٹ کے ذریعہ سارس COV 2 کی موجودگی کا پتہ لگانا 85 فیصد تک درست ہوتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ یہ 100 میں سے 85 نمونوں میں مثبت نتائج دیتا ہے۔ اس بات کا امکان ہو سکتا ہے کہ بقیہ 15 نمونوں میں وائرس موجود ہوسکتے ہیں لیکن انہیں آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ میں نہیں ملا (غلط نگٹو رہا)۔ اس صورت میں ، اگر آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ دوبارہ کرایا جائے تو ، وائرس کا پتہ چل سکتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اگر پہلا آر ٹی پی سی آر ٹیسٹ منفی ہے تو یہ ٹیسٹ دوبارہ کرانے کا سجھاؤ دیا جاتا ہے۔

RTPCR جانچ کتنی مخصوص ہے؟
مخصوص کا مطلب ہے کہ اگر نمونے میں وائرس موجود نہیں ہے تو جانچ سے اس بات کا پتہ لگایا جاسکتا ہے۔ مثال کے طور پر صحیح منفی جانچ کا نتیجہ۔

ناک اور گلے سے لئے گئے سواب میں سارس COV 2 وائرس کا پتہ لگانے کے لئے RTPCR ٹیسٹ کی خصوصیت 98 فیصد ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ 100 نمونوں میں سے صرف دو نمونوں ایسے ہو سکتے ہیں جس میں غلط پازیٹو نتیجے آئے جس کا مطلب یہ ہے کہ نمونے میں وائرس نہیں موجود ہونے کے باوجود جانچ سے وائرس ہونے کی بات کا پتہ چلا ۔ چونکہ آر ٹی پی سی آر ایک اچھی خاصیت رکھتا ہے ، لہذا مثبت جانچ کی رپورٹ کو صحیح مثبت سمجھا جاتا ہے اور یہ بھی خیال کیا جاتا ہے کہ اس شخص میں انفیکشن ہے۔ لہذا ، اس صورتحال میں دوبارہ جانچ کرانے کو نہیں کہا جاتا ہے۔

RTPCR جانچ میں CT ویلیو کا کیا مطلب ہے؟

سی ٹی CT کا مطلب ہے چکر سیما (cycle threshold) اس کا مطلب یہ ہے کہ کتنی بار گھمانے کے بعد وائرس کا پتہ چلتا ہے۔ سی ٹی کی ویلیو جتنی ہی کم ہوگی اس مریض کے جسم میں وائرس کی موجودگی اتنی ہی زیادہ ہوگی کیونکہ کچھ ہی چکر لگانے میں وائر کا پتہ چل گیا۔

کیا سی ٹی ویلیو زیادہ ہونے کا مطلب ہے بیماری کا سنگین ہونا؟

نہیں CT ویلیو اور بہماری کو سنگین ہونے کے درمیان کوئی تعلق نہیں ہے۔ CT ویلیو صڑف یہ بتاتا ہے کہ مریض کے جسم میں زیادہ وائرس ہے اور اس وجہ سے وہ زیادہ موثر ہے۔ مطلب ایسا مریض زیادہ لوگوں کو متاثر کر سکتا ہے۔ 24 کو حد مانا گیا ہے جس ممریض میں سی ٹی ویلیو 24 سے کم ہوتا ہے اس کے بارے میں مانا جاتا ہے کہ وہ 24 سے زیادہ سی ٹی ویلیو والے لے موازنے میں اس بیماری کو زیادہ پھیلا سکتا ہے۔

RAT کیا ہے؟

RAT کی حساسیت 50 فیصد سے بھی کم ہے۔ اس لئے اگر کسی مریض میں وائرس کی علامت ہیں اور اس کا RAT جانچ نگیٹو ہے تو اس مریض کو نگیٹو نہیں مانا جاسکتا اور اسے RTPCR جانچ کرانے کی ضرور ہے۔

ان جانچوں کیلئے جسم سے کیسے نمونے لئے جاتے ہیں؟

ناک اور گلے سے سواب کے نمونے کی ضرورت ہوتی ہے۔

یہ جانچ کب کی جانی چاہئے؟

جیسے ہی آپ کے جسم میں اس وائرس کی علامات ظاہر ہوتی ہیں اور آپ کسی کووڈ مریض کے رابطے میں آتے ہیں اس کی جانچ فورا کرانی چاہئے۔

اس جانچ کو دوبارہ کرانا چاہئے؟

اگر مریض میں علامت نہیں ہے اور وہ ٹھیک ہو چکا ہے تو دوبارہ جانچ کرانے کی ضرورت نہیں کیونکہ جانچ میں وائرس کا پتہ لگایا جاتا ہے۔ بیماری کا نہیں۔ اس لئے اگر مریض ٹھیک ہو چکا ہے تو اگر جانچ پازیٹو بھی آتی ہے تو اس کی فکر نہیں کرنی چاہئے۔

اگر آپ مقرر کام پر لوٹنے کیلئے آپ کے نگیٹو ہونے کا نتیجہ کے طور پر اس کی جانچ کیلئے کہا جاتا ہے تو دوبارہ جانچ کرائی اجسکتی ہے۔ یا اگر آپ کو ٹریول کرنا ہے تو یہ سفر کرنے کیلئے ضروری ہے۔

ان ٹیسٹوں کے لئے جسم سے نمونے کیسے لئے جاتے ہیں؟
ناک اور گلے سے جھاڑیوں کے نمونے درکار ہیں۔
یہ ٹیسٹ کب کرانا چاہئے؟
جیسے ہی آپ کا جسم اس علامت کو ظاہر کرتا ہے اور / یا آپ کووڈ مریض سے رابطہ کرتے ہیں۔
یہ ٹیسٹ کب کرایا جائے؟

اگر مریض میں علامت نہیں ہے اور وہ ٹھیک ہو چکا ہے تو دوبارہ جانچ کرانے کی ضرورت نہیں کیونکہ جانچ میں وائرس کا پتہ لگایا جاتا ہے۔ بیماری کا نہیں۔ اس لئے اگر مریض ٹھیک ہو چکا ہے تو اگر جانچ پازیٹو بھی آتی ہے تو اس کی فکر نہیں کرنی چاہئے۔

اگر آپ مقرر کام پر لوٹنے کیلئے آپ کے نگیٹو ہونے کا نتیجہ کے طور پر اس کی جانچ کیلئے کہا جاتا ہے تو دوبارہ جانچ کرائی اجسکتی ہے۔ یا اگر آپ کو ٹریول کرنا ہے تو یہ سفر کرنے کیلئے ضروری ہے۔
Published by: Sana Naeem
First published: May 30, 2021 10:09 AM IST