ہوم » نیوز » Explained

Nationwide lockdown: کیاملک گیرسطح پرقومی لاک ڈاؤن کانفاذعمل میں آئےگا؟کیاکہتےہیں ماہرین

ڈاکٹر شاہد جمیل (DR. SHAHID JAMEEL) وائرولوجسٹ اور ڈی بی ٹی / ویلکم ٹرسٹ انڈیا الائنس کا کہنا ہے کہ ’’لاک ڈاؤن روزانہ کی اجرت پر کام کرنے والے مزدوروں کو بے حد متاثر کرتا ہے۔ لوگوں کو خود ہی کورونا پروٹوکال پر عمل کرنا چاہئے اور خود کو پولیس اسٹیٹ میں تبدیل نہیں کرنا چاہئے‘‘۔

  • Share this:
Nationwide lockdown: کیاملک گیرسطح پرقومی لاک ڈاؤن کانفاذعمل میں آئےگا؟کیاکہتےہیں ماہرین
ہندوستان میں کورونا کا قہرجاری

کیا ملک گیر سطح پر قومی لاک ڈاؤن کووڈ۔19 کے چین کو توڑنے کا واحد راستہ ہے؟ کیا اس لاک ڈاؤن کو قومی یا مقامی بنایاجاناچاہئے؟ کیا لاک ڈاؤن سے معاشی صورت حال زورل پذیر ہوگی؟ کیا اس سے معیشت کو نقصان ہوگا؟ یہ اور ان جیسے کئی سوالات پر ماہرین کی رائے پیش ہے:


ڈاکٹر گِردھار بابو (DR. GIRIDHAR BABU) پروفیسر اینڈ ہیڈ (PROFESSOR & HEAD, LIFECOURSE EPIDEMIOLOGY, PHFI, BENGALURU):


مجھے نہیں لگتا کہ قومی لاک ڈاؤن ہی واحد راستہ ہے۔ بنیادی طور پر اس وجہ سے کہ ہم بیماری کی منتقلی کی حرکیات کو سمجھنے میں ناکام ہو رہے ہیں۔ ہمیں دیکھنے کی ضرورت ہے کہ وبا کا مرکز کیا ہے۔ مثال کے طور پر کرناٹک کے بنگلورو میں زیادہ کیسس ہے۔


ہوسکتا ہے کہ پوری ریاست کو مقفل کرنے کا جواز نہ ہو۔ ہم قابو پانے میں ناکام ہو رہے ہیں۔ صرف شہر کی سطح پر لاک ڈاؤن ضروری ہے۔ خاص طور پر جہاں لوگوں کو اہم نگہداشت نہیں مل سکتی ہے۔ ہمیں تعداد کم کرنے اور صحت کی دیکھ بھال کے نظام کو ختم نہ کرنے پر غور کرنا چاہئے۔ اگر آپ کیسوں کا بخوبی پتہ نہیں چلاتے ہیں تو کل لاک ڈاؤن سے کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ لاک ڈاؤن سے صرف رفتار کم ہوتی ہے، لیکن کنٹینمنٹ وہی ہے جس کی آپ کو ضرورت ہے۔

کیا ملک بھر میں لک سکتاہے قومی لاک ڈاؤن؟
کیا ملک بھر میں لک سکتاہے قومی لاک ڈاؤن؟


ڈاکٹر وشال را یو ایس (DR. VISHAL RAO US) رکن، ایکسپیرٹ کمیٹی (COVID TASK FORCE, GOVT OF KARNATAKA, BENGALURU):

ہمیں یہ تسلیم کرنے کی ضرورت ہے کہ لاک ڈاؤن ہمیں تیار کرنے میں مدد کرتا ہے اور لاک ڈاؤن کے لیے خود منصوبہ بندی اور تیاریوں کی ضرورت ہوتی ہے۔ آکسیجن کی طلب دوگنی ہو رہی ہے۔

کرناٹک میں لاک ڈاؤن ریاستی حکومت کی طرف سے ایک اہم اشارہ ہے۔ لیکن اس کے آخر میں یہ شہریوں کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ رہنما اصولوں پر عمل کریں۔ ویکسی نیشن چین لاک ڈاؤن کے دوران متاثر ہوسکتا ہے۔ ہمیں اپنی حکمت عملی میں تبدیلی لانی ہوگی۔

ڈاکٹر شاہد جمیل (DR. SHAHID JAMEEL) وائرولوجسٹ اور ڈی بی ٹی / ویلکم ٹرسٹ انڈیا الائنس (VIROLOGIST AND CEO OF DBT/WELLCOME TRUST INDIA ALLIANCE):

ملک گیر لاک ڈاؤن اس مقصد کو پورا نہیں کررہا ہے۔ ہمیں کورونا کے زیادہ کیسوں والے علاقوں میں مزید لاک ڈاؤن کی ضرورت ہے۔

ہم نے دیکھا کہ گذشتہ قومی لاک ڈاؤن کے ذریعہ معیشت کو کس قدر تباہی کا سامنا کرنا پڑا۔ توازن برقرار رکھنا ضروری ہے۔ لوگوں کو کھانے پینے اور ان کی آمدنی کو بڑھانے کے لئے خاطر خواہ انتظامات کرنا ہوں گے۔

ڈاکٹر شاہد جمیل (DR. SHAHID JAMEEL) وائرولوجسٹ اور ڈی بی ٹی / ویلکم ٹرسٹ انڈیا الائنس کا کہنا ہے کہ ’’لاک ڈاؤن روزانہ کی اجرت پر کام کرنے والے مزدوروں کو بے حد متاثر کرتا ہے۔ لوگوں کو خود ہی کورونا پروٹوکال پر عمل کرنا چاہئے اور خود کو پولیس اسٹیٹ میں تبدیل نہیں کرنا چاہئے‘‘۔

لہذا یہ اعتماد ضروری ہے۔ ویکسین کی فراہمی کی شرح پچھلے کچھ دنوں میں کم ہوگئی ہے۔ کورونا کی نئی مختلف حالتیں تیزی سے پھیل رہی ہیں۔لیکن یہ کہنا درست نہیں ہوگا کہ وہ اینٹی باڈیز سے بچ رہے ہیں۔ میں اس سے اتفاق کرتا ہوں۔صحت عامہ کے نظام پر زبردست دباؤ ہے۔ لیکن یہ پوری مشکل افراد پر ڈالنا مشکل ہے۔ یہ مسئلہ سیاست سے اوپر کا ہے۔ اس میں کسی بھی طرح کی سیاست کی گنجائش نہیں ہے
Published by: Mohammad Rahman Pasha
First published: Apr 27, 2021 08:14 AM IST