உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Budget Terms Explained:کمائی ہو یا نہ ہو، ہم سب ہر حال میں ادا کرتے ہیں ٹیکس، جانیے ڈائریکٹ، اِن ڈائریکٹ ٹیکس کا کیا ہے چکر

    حکومت آمدنی اور منافع پر جو ٹیکس لگاتی ہے وہ براہ راست ٹیکس ہے اور جو ٹیکس وہ اشیاء اور سروسز پر لگاتی ہے وہ بالواسطہ ٹیکس ہے۔

    حکومت آمدنی اور منافع پر جو ٹیکس لگاتی ہے وہ براہ راست ٹیکس ہے اور جو ٹیکس وہ اشیاء اور سروسز پر لگاتی ہے وہ بالواسطہ ٹیکس ہے۔

    کئی مرتبہ ایسا محسوس نہیں کرتے کہ ہم نے کوئی ٹیکس دیا ہے۔ ایسا اس لئے کہ ہم یہ ٹیکس سیدھے طور پر یعنی ڈائریکٹ حکومت کو نہیں دیتے۔ یہ ٹیکس عام طو رپر مصنوعات یا سروسز کی قیمتوں میں چھپا ہوتا ہے۔ یہ اِن ڈائریکٹ ٹیکس ہم سب دیتے ہیں۔

    • Share this:
      نئی دہلی:Budget Terms Explained: انکم ٹیکس شخصی طور سے بھرتے ہیں، کارپوریٹ ٹیکس کمپنیاں بھرتی ہیں۔ یہ ڈائریکٹ ٹیکس ہیں، جنہیں زیادہ تر لوگ سمجھتے ہیں کیونکہ حکومت انہیں ٹیکس ادا کرنے والے یا کمپنی سے ڈائریکٹ یعنی سیدھے طور پر وصول کرتی ہے۔ حالانکہ ٹیکس کی ایک اور کیٹگری ہے، جسے ہم سب دیتے تو ہیں، مگر کئی مرتبہ ایسا محسوس نہیں کرتے کہ ہم نے کوئی ٹیکس دیا ہے۔ ایسا اس لئے کہ ہم یہ ٹیکس سیدھے طور پر یعنی ڈائریکٹ حکومت کو نہیں دیتے۔ یہ ٹیکس عام طو رپر مصنوعات یا سروسز کی قیمتوں میں چھپا ہوتا ہے۔ یہ اِن ڈائریکٹ ٹیکس ہم سب دیتے ہیں۔

      انکم اور منافع پر حکومت جو ٹیکس وصول کرتی ہے، وہ ڈائریکٹ ٹیکس ہے اور جو ٹیکس گڈس اینڈ سروسز پر وصول کرتی ہے، وہ اِن ڈائریکٹ ٹیکس ہے۔ ان ڈائریکٹ ٹیکس کو ایسے سمجھ سکتے ہیں جیسے کہ آپ نے بازار سے کوئی سامان خریدا ہے تو آپ جو قیمت ادا کررہے ہیں، اس میں ٹیکس بھی شامل ہے۔

      Direct Tax

      • ڈائریکٹ ٹیکس کو حکومت انکم اور منافع پر وصول کرتی ہے۔ ہندوستان میں انکم ٹیکس، سیکیوریٹی ٹرانزکشن ٹیکس اور کیپٹل گین ٹیکس اس کے تحت آتے ہیں۔ انکم ٹیکس کسی مالی سال میں ہوئی کمائی پر دینا ہوتا ہے۔

      •  سیکورٹی ٹرانزکشن ٹیکس(STT) شیئروں کی خرید و فروخت پر ادا کرنا ہوتا ہے۔ شیئروں کی خریدو فروخت پر آپ کو منافع ہو یا نقصان، سیکوریٹی ٹرانزکشن ٹیکس چکانا ہی ہوتا ہے۔

      • انکم ٹیکس اور ایس ٹی ٹی کے علاوہ کیپٹن گینس ٹیکس بھی حکومت ڈائریکٹ وصول کرتی ہے۔ کسی پراپرٹی کی فروخت یا انوسٹمنٹ سے ایگزٹ پر ہوئے منافع پر یہ ٹیکس چکانا ہوتا ہے۔ ہولڈنگ پیرئیڈ کے حساب سے شارٹ ٹرم کیپٹل گین ٹیکس یا لانگ ٹرم کیپٹل گین ٹیکس دینا ہوتا ہے۔

      • کمپنیاں کاروبار سے ہوئے منافع پر کارپوریٹ ٹیکس دیتی ہیں۔


      Indirect Tax

      • ڈائریکٹ ٹیکس کو انکم و منافع پر حکومت کو دیا جاتا ہے جب کہ گڈس و سروسز پر حکومت اِن ڈائریکٹ ٹیکس وصول کرتی ہے۔ ڈائریکٹ ٹیکس حکومت کو راست طو رپر چکایا جاتا ہے۔

      • کسٹم ڈیوٹی کو امپورٹر یا ایکسپورٹر اُن چیزوں پر ادا کرتے ہیں جسے ملک میں درآمد(Import) یا برآمد(Export) کیا جاتا ہے۔ اس کا اثر عام لوگوں پر ایسے پڑتا ہے کہ اگر حکومت نے گولڈ پر اس ڈیوٹی کو بڑھا دیا تو جیولری مہنگی ہوسکتی ہے کیونکہ اب آپ کو زیادہ ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔

      • ہندوستان میں بننے والی چیزوں پر ایکسائز ڈیوٹی لگائی جاتی ہے۔ 30 جون 2017 کے پہلے تک زیادہ سے زیادہ گُڈس اس کے تحت ہی آتی تھیں لیکن جی ایس ٹی (گڈس اینڈ سروسز ٹیکس) آنے کے بعد اس کے تحت تمباکو پروڈکٹ، ہوائی ایندھن، قدرتی گیس، پیٹرول ڈیزل شامل ہیں یعنی کہ ان چیزوں پر ابھی بھی ایکسائز ڈیوٹی لگتی ہے۔ ایکسائز ڈیوٹی کا اثر عام لوگوں پر ایسے پڑتا ہے کہ اس کی وجہ سے ہی مہنگے تیل کا بوجھ عام لوگوں کو اُٹھانا پڑرہا ہے۔ پٹرول اور ڈیزل کے لئے جو قیمتیں ہم سبھی ادا کرتے ہیں، اس میں آدھے سے زیادہ حصہ ٹیکس کا ہوتا ہے۔




      • کسی گڈس یا سروسز کی سپلائی پر شخصی یا کاروباریوں کو جی ایس ٹی ادا کرنی ہوتی ہے۔ ہم ہر دن استعمال ہونے والی جو بھی چیزیں خریدتے ہیں، اس میں ایک حصہ جی ایس ٹی کا ہوتا ہے۔

      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: