ہوم » نیوز » Explained

COVID-19 Vaccination:ویکسینیشن سبھی لوگوں کیلئے دستیاب،ضرورت اور آگے بڑھنے کاراستہ

ویکسین کی درخواست دینے والوں کو خود کو رجسٹر کرنے اور اپنے علاقے کے پن کوڈ کی مدد سے مناسب ویکسینیشن سینٹر تلاش کرنے کو کہا گیا۔ وزارت برائے صحت اور خاندانی بہبود کے ڈیٹا کے مطابق، 4 مئی تک، 18 تا 44 برس کی عمر کے تقریباً 600,000 لوگوں کو ویکسین لگائی گئی۔ عمر کے اس زمرے میں گجرات نے سب سے زیادہ لوگوں کو ویکسین لگائی۔

  • Share this:
COVID-19 Vaccination:ویکسینیشن سبھی لوگوں کیلئے دستیاب،ضرورت اور آگے بڑھنے کاراستہ
حال ہی میں منظور شدہ روس میں تیار کردہ Sputnik V کے علاوہ، فی الوقت بھارت میں صرف یہیں دو ویکسینز زیر استعمال ہیں۔

COVID-19 کے خلاف ہندوستان کی جنگ میں وقت کو مرکزی حیثیت حاصل ہے۔ اس کا تعلق ویکسین کی تیاری، ٹرانسپورٹ اور اس کی ڈیلیوری سے ہے۔ اشاراتی طور پر بھی اجتماعی امیونٹی حاصل کرنے کیلئے، ہمیں ہندوستانی بالغوں کے ایک بڑے حصے کو ویکسینیٹ کرنا ہوگا اور یہ کام تیزی سے کرنا ہوگا۔ اس مقصد کو ذہن میں رکھ کر، مرکزی حکومت نے 1 مئی کو 18 برس اور اس سے بڑی عمر کے تمام ہندوستانیوں کیلئے ویکسینیشن ڈرائیو شروع کیا۔ تاہم، کئی ریاستوں میں ویکسین کی کمی اور چونکہ 45 تا 60 برس کی عمر کے کروڑوں لوگ اب بھی ویکسینیشن کے منتظر ہیں، اس وجہ سے صرف معدودے چند ریاستیں ہی سبھی اہل بالغوں کی ویکسینیشن کر سکیں۔


ویکسینیشن ڈرائیو کے ایکسٹینشن کی شروعات سست رفتاری سے ہوئی اور کئی نئے صارفین نے اس بات کی اطلاع دی کہ CoWin رجسٹریشن ویب سائٹ بند ہو گئی۔ یہ معاملہ حل کرنے کے بعد، ویکسین کی درخواست دینے والوں کو خود کو رجسٹر کرنے اور اپنے علاقے کے پن کوڈ کی مدد سے مناسب ویکسینیشن سینٹر تلاش کرنے کو کہا گیا۔ وزارت برائے صحت اور خاندانی بہبود کے ڈیٹا کے مطابق، 4 مئی تک، 18 تا 44 برس کی عمر کے تقریباً 600,000 لوگوں کو ویکسین لگائی گئی۔ عمر کے اس زمرے میں گجرات نے سب سے زیادہ لوگوں کو ویکسین لگائی۔ لیکن، ہندوستان کے ویکسینیشن ڈرائیو کو اب بھی انتہائی تیزی سے آگے بڑھانے کی ضرورت ہے۔



سب سے پہلے، اہدافی عمل کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ مہاراشٹر، کرناٹک اور پنجاب جیسی ریاستوں میں انفیکشن کے کئی ہاٹ اسپاٹس ہیں اور یہاں ویکسینیشن کرنے اور وسائل بہم پہنچانے اور خاص تعاون کرنے کی ضرورت ہے۔ ان علاقوں میں آباد لوگوں کو COVID-19 کے خلاف امیونٹی فراہم کرنے سے متعلق معلومات جلد از جلد فراہم کرنے اور  بااختیار بنانے کی ضرورت ہے۔ ہندوستان کے ویکسین مینوفیکچررز، سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا اور بھارت بایوٹیک بالترتیبCovishield  اور  Covaxin کا پروڈکشن بڑھانے کیلئے کام کر رہے ہیں۔ حال ہی میں منظور شدہ روس میں تیار کردہ Sputnik V کے علاوہ، فی الوقت بھارت میں صرف یہیں دو ویکسینز زیر استعمال ہیں۔ اب صرف ویکسین کی ان خوراکوں کو سب سے زیادہ ضرورت مند لوگوں تک پہنچانے کیلئے درست لاجسٹکس اور سپلائی چین کا اہتمام کرنے کی ضرورت ہے۔

اس قسم کے  تمام زمانی المیوں کی طرح، COVID-19 کی وبا بھی اجتماعی مقصد کے ایک تجدید شدہ احساس اور فوکسڈ کوشش کا مطالبہ کرتی ہے تاکہ اس سے پیدا شدہ تباہی پر غالب آیا جا سکے۔ اس کے ہیبت ناک پھیلاؤ اور مستقل تباہ کاریوں کی کہانیوں سے اب یہ بات کافی واضح ہو گئی ہے کہ اگر ہم نے ایک ساتھ مل کر یہ بوجھ نہ اٹھایا تو یہ بیماری ہمیں تباہ و برباد کر کے رکھ دے گی۔



Network18 ‘Sanjeevani – A Shot of Life’ کے ساتھ، جو کہ فیڈرل بینک کی ایک خاص CSR پیش قدمی ہے، ہم اپنا فرض نبھا رہے ہیں اور Covid-19 کے خلاف ہندوستان کے سب سے بڑے ویکسینیشن اور بیداری ڈرائیو کا حصہ ہیں۔ مزید اپ ڈیٹس کیلئے ہمیں فالو کریں اور ہندوستان کی صحت اور امیونٹی کیلئے اس تحریک میں شامل ہوں۔
Published by: Mirzaghani Baig
First published: May 26, 2021 11:11 PM IST