உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained: سی او پی26کیاہے؟ عالمی موسمیاتی مذاکرات سے کیاہوگا؟ گلاسگو سربراہی اجلاس سےتوقعات

    ماحول میں گرین ہاؤس گیسوں کا کافی اخراج پہلے ہی موجود ہے اور وہ وہاں کافی دیر تک رہتے ہیں۔

    ماحول میں گرین ہاؤس گیسوں کا کافی اخراج پہلے ہی موجود ہے اور وہ وہاں کافی دیر تک رہتے ہیں۔

    اس سمٹ میں وہ ممالک شرکت کررہے ہیں، جنہوں نے اقوام متحدہ United Nations کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (UNFCCC) پر دستخط کیے تھے۔ یہ معاہدہ 1994 میں نافذ ہوا تھا۔ سی او پی 26 اسکاٹ لینڈ کے شہرگلاسگو Scotland میں 12 نومبر تک جاری رہے گی۔

    • Share this:
      رواں برس اقوام متحدہ کی موسمیاتی تبدیلی کانفرنس (2021 United Nations Climate Change Conference) 31 اکتوبر تا 12 نومبر تک اسکاٹ لینڈ کے شہرگلاسگو Scotland میں منعقد ہورہی ہے۔ چونکہ اس سے قبل یہ کانفرنس 25 بار ہوچکی ہے، اسی لیے اس کا نام COP26 یعنی فریقین کی کانفرنس Conference of the Parties ہے۔

      اس سمٹ میں وہ ممالک شرکت کررہے ہیں، جنہوں نے اقوام متحدہ United Nations کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (UNFCCC) پر دستخط کیے تھے۔ یہ معاہدہ 1994 میں نافذ ہوا تھا۔


      سی او پی 26 کے دوران عالمی رہنما اور مخلتف ممالک کے قومی مذاکرات کار اسکاٹ لینڈ میں اس بات پر گفتگو کریں گے کہ موسمیاتی تبدیلی کے بارے میں کیا کرنا ہے۔ یہ ایک پیچیدہ عمل ہے جس کا باہر سے اندازہ لگانا مشکل ہو سکتا ہے، لیکن بین الاقوامی قانون اور ادارے ان مسائل کو حل کرسکتے ہیں، جنہیں کوئی ایک ملک خود حل نہیں کر سکتا۔

      ۔COP26 کیا ہے؟
      سنہ 1992 میں کئی ممالک نے اقوام متحدہ کے فریم ورک کنونشن آن کلائمیٹ چینج (UNFCCC) کے نام سے ایک بین الاقوامی معاہدے پر اتفاق کیا، جس نے موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے عالمی تعاون کے لیے زمینی اصول اور توقعات طے کیں۔ یہ پہلا موقع تھا جب کئی ممالک کی اکثریت نے گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کو کنٹرول کرنے کی ضرورت کو باضابطہ طور پر تسلیم کیا، جو عالمی حدت global warming کا سبب بنتی ہے جو موسمیاتی تبدیلی climate change کو آگے بڑھاتی ہے۔


      اس معاہدے کو تب سے اپ ڈیٹ کیا گیا ہے۔ اس دوران سنہ 2015 میں پیرس موسمیاتی معاہدے Paris climate agreement پر دستخط کیے گئے۔ اس معاہدے کے تحت تباہ کن موسمیاتی تبدیلیوں سے بچنے کے لیے گلوبل وارمنگ کو 2 ڈگری سیلسیس (3.6 فارنائٹ) اور ترجیحاً 1.5 سینٹی گریڈ (2.7 ایف) تک محدود کرنے کا ہدف مقرر کیا گیا۔
      -COP26 کا مطلب ہے UNFCCC کے لیے پارٹیوں کی 26ویں کانفرنس۔ اس میں وہ 196 ممالک شامل ہیں جنہوں نے اس معاہدے کے علاوہ یورپی یونین کی توثیق کی۔ برطانیہ، اٹلی کے ساتھ شراکت میں کورونا Covid-19 وبا کی وجہ سے ایک سال کے التوا کے بعد 31 اکتوبر سے 12 نومبر 2021 تک گلاسگو، اسکاٹ لینڈ میں COP26 میں منعقد ہو رہا ہے۔

      عالمی رہنما موسمیاتی تبدیلی پر اتنی توجہ کیوں دے رہے ہیں؟

      اقوام متحدہ کے بین الحکومتی پینل برائے موسمیاتی تبدیلی کی تازہ ترین رپورٹ اگست 2021 میں جاری کی گئی۔ اس میں سخت ترین الفاظ میں خبردار کیا گیا ہے کہ انسانی سرگرمیوں نے واضح طور پر کرہ ارض کو بے انتہا گرم کر دیا ہے اور یہ کہ موسمیاتی تبدیلی اب وسیع، تیز اور شدت اختیار کر رہی ہے۔


      آئی پی سی سی کے سائنس دان وضاحت کرتے ہیں کہ کس طرح موسمیاتی تبدیلی انتہائی موسمی واقعات، سیلاب، شدید گرمی کی لہروں اور خشک سالی، انواع کے نقصان اور معدومیت، اور برف کی چادروں کے پگھلنے اور سطح سمندر میں اضافے کو ہوا دے رہی ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس نے اس رپورٹ کو انسانیت کے لیے تباہ کن قرار دیا ہے۔

      ماحول میں گرین ہاؤس گیسوں کا کافی اخراج پہلے ہی موجود ہے اور وہ وہاں کافی دیر تک رہتے ہیں۔ وہ اس لیے کئی ممالک اپنی تجارتی و اقتصادی سرگرمیوں کی وجہ سے گرین ہاؤس گیسوں میں اضافہ کا سبب بن رہے ہیں۔ تاہم اگر 2050 تک عالمی اخراج کو ’خالص صفر‘ تک کم کر سکتے ہیں، تو یہ 21 ویں صدی کے دوسرے نصف حصے میں گرمی کو 1.5 سینٹی گریڈ سے نیچے لا سکتا ہے۔ اس کورس کے قریب جانے کا طریقہ وہی ہے جس پر رہنما اور مذاکرات کار بحث کر رہے ہیں۔


      ۔COP26 میں کیا ہوتا ہے؟

      کانفرنس کے پہلے دنوں کے دوران تقریباً 120 سربراہان مملکت اپنی سیاسی وابستگی کا مظاہرہ کرنے کے لیے جمع ہو چکے ہیں۔ سربراہان مملکت کے جانے کے بعد ملکی وفود کی قیادت اکثر وزرائے ماحولیات کرتے ہیں۔ اپنے عہدوں کو اپنانے، نئے عہد کرنے اور نئے اقدامات میں شامل ہونے کے لیے مذاکرات، تقریبات اور تبادلوں کے دنوں میں مشغول ہوتے ہیں۔ یہ تعاملات مہینوں کی پیشگی بات چیت، پالیسی پیپرز اور ریاستوں کے گروپوں، اقوام متحدہ کے عملے اور دیگر ماہرین کی تیار کردہ تجاویز پر مبنی ہیں۔

      غیر سرکاری تنظیمیں اور کاروباری رہنما بھی کانفرنس میں شرکت کرتے ہیں اور COP26 کا ایک عوامی پہلو ہے جس میں سیشنز ایسے موضوعات پر مرکوز ہیں جیسے چھوٹے جزیروں کی ریاستوں، جنگلات یا زراعت پر موسمیاتی تبدیلی کے اثرات، نیز نمائشیں اور دیگر تقریبات شامل ہیں۔


      ۔COP26 سے کیا حاصل کرنے کی توقع ہے؟
      پیرس معاہدے کے تحت اس میں شامل ممالک کو ہر پانچ سال بعد اپنے قومی آب و ہوا کے ایکشن پلان کو اپ ڈیٹ کرنے کی ضرورت ہے۔ اس سال ان سے 2030 تک بڑے اہداف کی توقع ہے۔ یہ قومی سطح پر طے شدہ شراکت یا NDCs کے نام سے جانے جاتے ہیں۔

      پیرس معاہدے کے تحت ممالک سے اپنے NDCs کی اطلاع دینے کی ضرورت ہے، لیکن یہ انہیں یہ تعین کرنے کی اجازت دیتا ہے کہ وہ اپنی گرین ہاؤس گیسوں کے اخراج کو کیسے کم کرتے ہیں۔ 2015 میں اخراج میں کمی کے اہداف کا ابتدائی سیٹ گلوبل وارمنگ کو 1.5 ڈگری سیلسیس تک محدود کرنے کے لیے بہت کمزور تھا۔ COP26 کا ایک اہم ہدف صدی کے وسط تک خالص صفر کاربن کے اخراج تک پہنچنے کے لیے ان اہداف کو بڑھانا ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: