உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Explained: ایئر انڈیا کو ٹاٹا گروپ کو سونپے جانے کے بعد کیا تبدیلی ہوں گی؟

    ایئر انڈیا کو ٹاٹا گروپ کو سونپے جانے کے بعد کیا تبدیلی ہوں گی؟

    ایئر انڈیا کو ٹاٹا گروپ کو سونپے جانے کے بعد کیا تبدیلی ہوں گی؟

    ٹاٹا گروپ نے مسابقتی بولی کے عمل کے بعد 8 اکتوبر، 2021 کو حکومت سے 18,000 کروڑ روپے میں ایئر انڈیا کو دوبارہ حاصل کیا۔ اس کے عبد 11 اکتوبر کو ٹاٹا گروپ کو ایک Letter of Intent (LOI) جاری کیا گیا تھا، جس مین ایئرلائن میں اپنی 100 فیصد حصہ داری بیچنے کی حکومت کی خواہش کی تصدیق کی گئی تھی۔

    • Share this:
      نئی دہلی: Air India | Tata Group:مرکزی حکومت 27 جنوری کو ایئر انڈیا (Air India) کو ٹاٹا گروپ (Tata Group) کو سونپنے کے لئے اب پوری طرح سے تیار ہے۔ بیچنے کی تصدیق ہونے کے مہینوں بعد ٹرانسفر کے بعد ڈِس انوسٹمنٹ کا عمل (Disinvestment Process) کا خاتمہ ہوگا۔ 20 جنوری تک ایئر انڈیا(Air India) کی کلوزنگ بیلینس شیٹ (Closing Balance Sheet) پہلے ہی ٹاٹا گروپ (Tata Group) کو جائزہ کے لئے سونپ دی گئی ہے اور کل یعنی بدھ تک اگر کوئی بھی تبدیلی کی جانی ہے، تو ہوسکتا ہے۔ اس عمل کے بعد، یوم جمہوریہ (Republic Day) کے ٹھیک بعد ایئرلائن کے ٹرانسفر کا کام پورا ہوجائے گا۔بتادیں، ایئر انڈیا کا 100 فیصد ٹیلیس پرائیوٹ لمیٹیڈ کو ٹرانسفر کیا جائے گا، جو ٹاٹا سنس کی مکمل ملکیت والی معاون کمپنی ہے۔

      ٹاٹا گروپ کو ٹرانسفر کے بعد کیا ہوگا؟
      حکومت سے ٹاٹا گروپ میں ایئر انڈیا کے ٹرانسفر سے کم سے کم پہلے کچھ مہینوں کے لئے آپریشنز پر بہت زیادہ اثر پڑنے کا امکان نہیں ہے۔ حالانکہ، کچھ معمولی تبدیلی ہوسکتی ہے، کچھ مہینوں کے لئے کوئی بڑا شیک اپ ہونے کا امکان نہیں ہے۔ اس میں ملازمین یا فلائٹ آپریشنز میں تبدیلیاں بھی شامل ہیں۔ گاہکوں کے بھی متاثر ہونے کا امکان نہیں ہے کیونکہ ٹرانزکشن کے بعد فلائٹ آپریشنز میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی۔ اڑان بھرنے والوں کو صرف وہی تبدیلی دیکھنے کو ملیں گی جو جہاز کے اندر اور باہر برانڈنگ سے متعلق ہوں گے۔

      حالانکہ، طویل عرصے سے، ٹاٹا کی جانب سے ایئرلائن کو چلانے کا فیصلہ لینے کے طریقے میں کچھ تبدیلی سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے۔ پہلے کی رپورٹوں نے تجویز دی تھی کہ ٹاٹا گروپ اپنے سبھی ایئر لائن کاروبار کو ایک ہی ادارے کے تحت ضم کرنا چاہتی ہے۔

      سودے کے حصے کے طور پر ٹاٹا گروپ کو ایئر انڈیا اور ایئر انڈیا ایکسپریس کی مکمل ملکیت سونپ دی جائے گی، اس کے بعد پہلے سے ہی ایئر ایشیا اور وستارا میں بڑی حصہ داری ہے۔

      ایسے امکانات ہیں کہ گروپ اپنے سبھی ایئرلائن بزنس کا انضمام کرنے پر غور کرسکتا ہے، جس سے یہ اضافی اخراجات اور عام طور پر زیادہ منافع کو ختم کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ ہینڈ اوور کے بعد ایئرلائن کے نئے مینجمنٹ سے اس پر اور وضاحت کی امید کی جاسکتی ہے۔

      ایئر انڈیا کی فروختگی سے ہوگی بہتری
      ٹاٹا کو ایئر انڈیا کی فروختگی کی تصدیق کو اعلیٰ سیاسی قائدین اور ماہرین نے ایک تاریخی لمحہ قرار دیا ہے۔ کئی ماہرین کا ماننا ہے کہ خسارے میں جارہی ایئرلائن کے لئے فروختگی سے بہتری کا راستہ کھلے گا۔

      ٹاٹا گروپ نے مسابقتی بولی کے عمل کے بعد 8 اکتوبر، 2021 کو حکومت سے 18,000 کروڑ روپے میں ایئر انڈیا کو دوبارہ حاصل کیا۔ اس کے عبد 11 اکتوبر کو ٹاٹا گروپ کو ایک Letter of Intent (LOI) جاری کیا گیا تھا، جس مین ایئرلائن میں اپنی 100 فیصد حصہ داری بیچنے کی حکومت کی خواہش کی تصدیق کی گئی تھی۔

      حکومت نے 25 اکتوبر کو ڈیل کے لئے شیئر خرید سمجھوتے (SPA) پر دستخط کیے۔ حالانکہ، اس عمل کو پورا کرنے میں کچھ دیری ہورہی تھی، اعلیٰ عہدیداروں نے اب تصدیق کردی ہے کہ ایئرلائن کو اس ہفتہ کے آخر تک ٹاٹا گروپ کو سونپ دیا جائے گا۔
      Published by:Shaik Khaleel Farhaad
      First published: