உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    President of India: صدر جمہوریہ ہند کی زندگی کیسی ہوتی ہے؟ کونسی ملتی ہیں سہولیات، جانیے مکمل تفصیلات 

    صدارتی دفتر

    صدارتی دفتر

    صدر کا باڈی گارڈ (PBG) ہندوستان کے صدر کو سیکورٹی فراہم کرتا ہے۔ صدر کا باڈی گارڈ نہ صرف سب سے سینئر بلکہ ہندوستانی مسلح افواج میں سب سے قدیم یونٹ بھی ہے۔ یہ دنیا کی واحد گھڑ سواری فوجی یونٹ بھی ہے۔

    • Share this:
      ہندوستان کے صدر کے طور پر آپ کی زندگی کیسے ہوگی؟ نیوز 18 ہندوستان کے پہلے شہری یعنی صدر جمہوریہ ہند کی تنخواہ، رہائش، سفر کی وضاحت کرتا ہے۔

      صدارتی انتخابات سر پر ہیں۔ جیسا کہ صدر رام ناتھ کووند (Ram Nath Kovind) کی مدت ختم ہونے کے قریب ہے۔ سیاسی حلقے اس بات پر باتوں اور قیاس آرائیوں سے بھرے ہوے ہیں کہ ملک کا اگلا نامزد سربراہ یا صدر کون ہوگا؟ پارٹیوں کے طور پر حکمران اور اپوزیشن دونوں امیدواروں پر اپنا اتفاق رائے پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ متوقع انتخابات سے پہلے ہم سوچتے ہیں کہ ہندوستان کے صدر کے طور پر ہماری زندگی کیسی ہوگی؟

      صدر ہونے کے اونچے اور بوجھل فرائض کے علاوہ ہمیں کیا تنخواہ ملے گی؟ ہم چھٹی کہاں ابور کیسے گزاریں کریں گے؟ اور سب سے پہلے یہ کہ کیا ہم کبھی بھی ہندوستان کے صدر بننے کے اہل ہو سکتے ہیں؟

      ان تمام سوالات کے سلسلے میں نیوز19 ڈاٹ کام صدر کی زندگی کے بارے میں آپ کے تمام تجسس آمیز سوالات کی وضاحت کرتا ہے:

      اہلیت

      ہندوستان کے آئین کے مطابق اس عظیم عہدے کے لیے اہل ہونے کے لیے کچھ شرائط طے کی گئی ہیں جن کو پورا کرنا ضروری ہے:

      1) کوئی بھی شخص بطور صدر منتخب ہونے کا اہل نہیں ہوگا جب تک کہ وہ:

      (a) ہندوستان کا شہری ہو

      (b) پینتیس سال کی عمر مکمل کر لی ہے اور

      (c) عوام کے ایوان (لوک سبھا) کے رکن کے طور پر انتخاب کے لیے اہل ہو۔

      2) کوئی شخص صدر کے طور پر انتخاب کا اہل نہیں ہوگا اگر وہ حکومت ہند یا کسی ریاست کی حکومت کے تحت یا مذکورہ حکومتوں میں سے کسی کے کنٹرول کے تحت کسی مقامی یا دیگر اتھارٹی کے تحت منافع کا کوئی عہدہ رکھتا ہے۔

      اگر آپ مندرجہ بالا تمام ضروریات کو پورا کرتے ہیں، تو پھر آپ کی نامزدگی درست ہوگی۔ یہ ایک پیچیدہ عمل ہے، لیکن ہم نے آپ کو اس کی بھی وضاحت کرنے کی کوشش کی ہے۔

      اب وقت کی ایک چھلانگ (اور تخیل) سے کہتے ہیں کہ آپ ہندوستان کے صدر بن گئے ہیں۔ تو اب آپ کی زندگی کیسی ہوگی؟

      آپ کی تنخواہ کتنی ہوگی؟
      سب سے پہلے آپ تقریباً 5 لاکھ روپے/ماہ کی تنخواہ لے رہے ہوں گے۔

      ہندوستانی صدر کی تنخواہ کا تعین اس قانون کے ذریعہ کیا جاتا ہے جسے 1951 کے صدر کے حصول اور پنشن ایکٹ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ مزید برآں ہندوستان کے صدر ملک میں سب سے زیادہ تنخواہ پانے والے سرکاری اہلکار ہیں۔ 2018 میں صدر کی تنخواہ میں اضافہ کر کے 1,50,000 سے روپے 5,00,000 فی مہینہ کردی گئی ہے۔

      ہندوستانی آئین کے دوسرے شیڈول کے مطابق اصل میں ہندوستان کے صدر کو ماہانہ 10,000 روپے (100 امریکی ڈالر) ادا کیے جاتے تھے۔ 1998 میں رقم بڑھا کر 50,000 کر دی گئی تھی۔

      اپنی ماہانہ تنخواہ کے علاوہ ہندوستان کے صدر کو کئی الاؤنسز بھی ملتے ہیں۔

      آپ کہاں رہیں گے؟
      دنیا میں کسی بھی سربراہ مملکت کی سب سے بڑی رہائش گاہ کی طرح آپ بھی حکومتی رہائش گاہ میں قیام کریں گے۔ اس کا پتہ اس طرح ہے: راشٹرپتی بھون، پریذیڈنٹ اسٹیٹ، نئی دہلی، دہلی 110004۔

      اصل میں ہندوستان کی رہائش گاہ کے وائسرائے کے طور پر بنایا گیا، وائسرائے ہاؤس، جیسا کہ اس وقت جانا جاتا تھا، جو آج کے راشٹرپتی بھون میں تبدیل ہوا ہے۔

      راشٹرپتی بھون 340 کمروں والی مرکزی عمارت ہے جس میں صدر کی سرکاری رہائش گاہ ہے، وہیں استقبالیہ ہال، مہمان خانے اور دفاتر یہاں موجود ہیں۔ لیکن یہ پورے 130-ہیکٹر (320-ایکڑ) صدارتی اسٹیٹ کا بھی حوالہ دے سکتا ہے، جس میں صدارتی باغات، بڑی کھلی جگہیں، محافظ اور عملے کی رہائش گاہیں، اصطبل، دیگر دفاتر، اور اس کی دیواروں کے اندر موجود سہولیات شامل ہیں۔ لیکن یہ خوبصورتی صرف صدر اور ان کے خاندان تک محدود نہیں ہے۔ یہاں تک کہ عوام منتخب دنوں پر اسٹیٹ کا دورہ کر سکتے ہیں۔ آپ آن لائن اسٹیٹ کا دورہ بھی کر سکتے ہیں - اس کے باغات کو اس کے میوزیم میں دیکھ سکتے ہیں - راشٹرپتی بھون کی سرکاری ویب سائٹ پر اس طرح کی سہولت دستیاب ہے۔

       

      آپ کیسے سفر کریں گے؟
      جب کہ ہندوستانی صدور کی کاریں وقت اور ٹیکنالوجی کے مطابق اپ ڈیٹ ہوجاتی ہیں، وزارت داخلہ واضح طور پر کہتی ہے کہ ہندوستانی صدر کی کاروں کے میک، ماڈل اور رجسٹریشن نمبر ریاستی راز ہیں، اور ایسی معلومات افشا کرنے سے پہلے شہری کی سلامتی خطرے میں پڑ سکتی ہے۔

      ایک اور دلچسپ حقیقت یہ ہے کہ ان کاروں میں لائسنس پلیٹ کی کمی ہے اور اس کی بجائے قومی نشان اشوکا ستون کو ظاہر کیا گیا ہے۔

      صدر کووند کو جنوری 2021 میں ایک نئی کار ملنی تھی، لیکن وبائی بیماری کی وجہ سے تاخیر ہوئی، اور انہیں صرف 15 اگست کو یوم آزادی سے قبل نئی گاڑی ایک مرسڈیز مے باچ ایس 600 پل مین گارڈ موصول ہوئی۔

      یہ بھی پڑھیں: مذہبی عبادت گاہوں سے متعلق قانون سے چھیڑچھاڑ انتہائی خطرناک: مولانا ارشد مدنی

      صدر کے قافلے میں ان کی کالی مرسڈیز مے بیچ کے علاوہ کئی دوسری گاڑیاں بھی شامل ہیں۔ سابق صدارتی کار، ایک سیاہ مرسڈیز بینز بکتر بند لیموزین جو بیک اپ گاڑی کے طور پر کام کر سکتی ہے، یہ اس قافلے میں شامل گاڑیوں میں سے ایک ہے۔ ہندوستان کے سابق صدور نے بھی Cadillacs، Rolls Royce اور بہت کچھ استعمال کیا ہے۔
      یہ بھی پڑھیں: کیاآپ ہندوستانی فضاؤں میں اڑناچاہتےہیں؟ ہوائی اڈے پرپہنچنےسےپہلےایئرسوودھابھرنامت بھولیں!

      آپ کی سیکیورٹی:

      صدر کا باڈی گارڈ (PBG) ہندوستان کے صدر کو سیکورٹی فراہم کرتا ہے۔ صدر کا باڈی گارڈ نہ صرف سب سے سینئر بلکہ ہندوستانی مسلح افواج میں سب سے قدیم یونٹ بھی ہے۔ یہ دنیا کی واحد گھڑ سواری فوجی یونٹ بھی ہے۔ صدر کا باڈی گارڈ امن کے وقت میں ایک رسمی یونٹ کے طور پر کام کرتا ہے لیکن اسے جنگ کے وقت بھی تعینات کیا جا سکتا ہے کیونکہ وہ تربیت یافتہ پیرا ٹروپرز ہوتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: