زہریلے سانپ کو پالنے والی خاتون کا دعویٰ، اپنی کوکھ سے دیا 3 سانپوں کو جنم

خاتون کا یہ دعویٰ کہ اس نے سانپ کے تین بچوں کو جنم دیا ہے۔ اس پر شاید ہی کوئی یقین کر سکے۔ لیکن گاؤں والے بھی اس واقعے کو سچ مان کر اس سانپ اور خاتون کے پیار کو دیکھنے اس کے گھر جایا کرتے ہیں۔ گاؤں کے لوگوں نے کہا کہ جب انہوں نے یہ سنا کہ خاتون نے سانپ کے بچوں کو جنم دیا تو انہوں نے اس بات پر یقین نہیں کیا لیکن جب زہریلے سانب کے چھوٹے بچے کو خاتون کی گود میں ایک بچے کی طرح کھیلتا دیکھا انہوں نے اس بات پر یقین کرلیا۔

Aug 30, 2019 01:33 PM IST | Updated on: Aug 30, 2019 01:33 PM IST
زہریلے سانپ کو پالنے والی خاتون کا دعویٰ، اپنی کوکھ سے دیا 3 سانپوں کو جنم

خاتون کے ہاتھ میں سانپ کا بچہ۔(تصویر:نیوز18ہندی)۔

دنیا  بھر میں ایسےعجیب وغریب لوگ دیکھنے کو ملتے ہیں جنہیں دیکھتے ہی آپ حیران رہ جاتے ہیں۔ ایسے  میں کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جو کتے، بلی یا دیگر پالتو جانور کو اپنے بچے مان کر اس کو پالتے۔پوستے ہیں لیکن بہار کے مونگیر سے ایک چونکانے والی خبر سامنے آئی ہے۔ جہاں ایک خاتون نے زیریلے سانپ کو ہی اپنا بیٹا مان لیا ہے۔ یہی نہیں خاتون کے ساتھ رہ رہا سانپ بھی ایک بیٹے کی طرح خاتون کی ہر بات مانتا ہے۔ خاتون اور سانپ  کے درمیان ماں۔ بیٹے کے اس رشتے کو دیکھ کر لوگ دانتوں تلے انگلی دبا لیتے ہیں۔

مونگیر ہیڈکواٹر سے محض 4 کلو میٹر کی دوری پر قاسم بازار کے اندر ہیرو دیارا کے ڈکرا گاؤں میں پیشے سے مزدور کرشنا یادو کی اہلیہ مینا دیوی ایک زیریلے سانپ کو اپنا بیٹا مان کر اس کا اچھے سے خیال رکھ رہی ہیں۔ اس سانپ کو لیکر وہ گھر کا ہر کام کرتی ہے اور سانپ بھی ایک فرمانبردار بچے کی طرح مینا دیوی کی ہر بات مانتا ہے اوراس کے کہے مطابق کام کرتا ہے۔ مینا دیوی کا ماننا ہے کہ اس سانپ نے اس کی کوکھ سے جنم لیا ہے۔ ساتھ ہی وہ یہ بھی کہتی ہے کہ میری کوکھ سے تین سانپ کے بچوں نے جنم لیا تھا۔ دو بیٹے اور ایک بیٹی کو میں اپنے بچے کی طرح پرورش کر رہی تھی۔

مینا دیوی نے بتایا کہ اپنے تینوں بچوں کے نام انہوں نے آندھی، طوفان اور میل رکھا تھا۔ جس میں سے آندھی اور طوفان کی تو موت ہوگئی لیکن میل نہیں مرے گا۔ اب یہ ہمیشہ میرے ساتھ رہے گا۔ مینا دیوی کی باتوں کو سن کر اور سانپ کو دیکھ کر گاؤں والے بھی حیران ہیں۔ گھر میں سانپ دیکھنے والوں کا دن بھر ہجوم لگا رہتا ہے۔ وہیں مینا دیوی نے بتایا کہ اس کے پہلے سے دو بچے ہیں ایک لڑکا اور ایک لڑکی۔

حالانکہ سائنس میں ان باتوں کو نہیں ماننا جاتاہے۔ اس خاتون کا یہ دعویٰ کہ اس نے سانپ کے  تین بچوں کو جنم دیا ہے۔ اس پر شاید ہی کوئی یقین کر سکے۔ لیکن گاؤں والے بھی اس واقعے کو سچ مان کر اس سانپ اور خاتون کے پیار کو دیکھنے اس کے گھر جایا کرتے ہیں۔ گاؤں کے لوگوں نے کہا کہ جب انہوں نے یہ سنا کہ خاتون نے سانپ کے بچوں کو جنم دیا تو انہوں نے اس بات پر یقین نہیں کیا لیکن جب زہریلے سانب کے چھوٹے بچے کو خاتون کی گود میں  ایک بچے کی طرح کھیلتا دیکھا انہوں نے اس بات پر یقین کرلیا۔

Loading...

گاؤں والوں نے کہا کہ ایک چھوٹا سا سانپ خاتون کی ہر بات مانتا ہے۔ جب وہ پاس بلاتی ہے تو وہ آجاتا ہے دودھ پینے کو بولتی ہے تو دوھ پینے لگتا ہے۔ سانپ خاتون کے ساتھ بچے کی طرح برتاؤ کرتا ہے۔

Loading...