ایک ایسا کنبہ جہاں عمر بڑھنے کے ساتھ موٹے اور اندھے ہو جاتے ہیں بچے

امرت پورگاوں کے ایک گھر میں بچے صحت مند حالت میں پیدا ہوتے ہیں۔ صحیح طریقہ سے بڑھتے ہیں، لیکن آٹھ سال کے ہوتے ہی ان کے جسم میں تبدیلی آنے لگتی ہے

Jun 25, 2015 11:58 AM IST | Updated on: Jun 25, 2015 11:58 AM IST
ایک ایسا کنبہ جہاں عمر بڑھنے کے ساتھ موٹے اور اندھے ہو جاتے ہیں بچے

امرت پورگاوں کے ایک گھر میں بچے صحت مند حالت میں پیدا ہوتے ہیں۔ صحیح طریقہ سے بڑھتے ہیں، لیکن آٹھ سال کے ہوتے ہی ان کے جسم میں تبدیلی آنے لگتی ہے۔ آٹھ سال کے ہوتے ہی اس گھر کے بچے موٹے ہونے لگتے ہیں اور آنکھوں کی روشنی بھی کم ہونا شروع ہوجاتی ہے۔ اٹھارہ سال کے ہوتے ہی اس کنبہ کے بچے نابینا ہو جاتے ہیں ساتھ ہی دماغ بھی کام کرنا کم کر دیتا ہے۔

ضلع صدر دفتر سے قریب ۸۰ کلومیٹر دور امرت پور گرام پنچایت اگاوں میں رہنے والے پون کا پورا کنبہ اس عجیب وغریب بیماری سے پریشان ہے۔ اس کنبہ میں تین بیٹیاں ہیں اور ایک لڑکا۔ سب سے پہلے بڑی بیٹی کو یہ بیماری شروع ہوئی۔ ۱۸ سال کے ہوتے ہوتے اس کی آنکھوں سے کچھ بھی نظر آنا بند ہو گیا۔ اب دوسری بیٹی سشیلا ۱۳ سال کی ہے۔ اسے بھی یہ بیماری شروع ہو گئی ہے۔ اکلوتے بیٹے ہیرا سنگھ کی عمر ابھی آٹھ سال ہے۔ لیکن اس کا بھی موٹاپا آنا شروع ہو گیا ہے اور آنکھوں سے روشنی جانے لگی ہے۔ علاقہ کے ڈاکٹر بھی یہ سمجھنے سے قاصر ہیں کہ آخر ایسا کیوں ہو رہا ہے۔ پون سنگھ نے اپنی حیثیت کے مطابق، ڈاکٹروں سے صلاح ومشورہ کیا۔ صحت میلہ میں اپنے پریوار کو لے گئے۔لیکن بیماری کا پتہ نہیں چل پا رہا ہے۔ اب اسے دوسرے بچوں کی فکر ستانے لگی ہے۔ پون ایک بار بچوں کو لے کر ضلع اسپتال جا چکے ہیں۔ ڈاکٹروں نے پایا کہ بڑی بیٹی کی روشنی ہمیشہ کے لئے ختم ہو چکی ہے۔ دونوں باقی بچوں کا ویژن چشمہ استعمال کرنے پر بھی نہیں بڑھ رہا ہے۔

Loading...

Loading...